کرکٹ کی بحالی! ملک میں خوشحالی

AdamSAADY

سعد سہیل |


کرکٹ کی بحالی! ملک میں خوشحالی

چہروں پر خوشیاں! پھر سے رونقیں بحال ہوں گئیں۔ میدان جو خوف کے سائے تلے ویران تھے اب تماشائیوں کی تالیوں اور پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونجنے لگے۔ سال 2015 میں زمبابوے کرکٹ ٹیم کا دورہ پاکستان اس بات کاثبوت تھا کہ پاکستان دہشتگردی سے پاک ملک ہے، مسلح افواج اور سیکیورٹی اداروں کی کاوشوں سے ملک کا امن بحال ہوا اور بین الاقوامی کرکٹ کی واپسی کے دروازے ایک بار پھرکُھل گئے۔

ایک نظر ماضی کے تلخ واقعے پر جب سال 2009 میں سری لنکن ٹیم پر لاہور میں حملہ اور ملک کے خراب  حالات کی وجہ سے سفارتی سطح پر رسوائی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ لیکن اس مشکل صورتحال نے قوم کو متحد کرکے رکھا۔ وہ کہتے ہے نا۔۔ کر بھلا تو ہو بھلا! ہر اندھیری رات کے بعد اجالا اپنا حسن سنوار ہی لیتا ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی کاوشیں رنگ لے آئیں جس کی بہترین مثال پاکستان سپرلیگ کا پاکستان میں مکمل انعقاد ہونا قابل تحسین ہے۔

یہ جو سلسلہ جہاں سے ختم ہوا تھا پھر وہی سے شروع ہوا۔آئی لینڈرز نے مشکل وقت میں پاکستان کا ساتھ دیکر اپنے کرکٹ بورڈکی مشاورت سے سیریز کھیلنے پر رضا مندی ظاہر کی۔ یہ بہت خوش آئندہ بات ہے کہ کم وسائل میں مکمل سیکیورٹی میں 3 ون ڈے، 3 ٹی ٹوئنٹی اور خاص طور پر 2 ٹیسٹ میچزکی سیریز کھیلنا ملک دشمن قوتوں کو یہ پیغام دینا تھا کہ پاکستان ایک پُر امن اور کرکٹ سے محبت کرنے والا ملک جہاں ہر شہری کا دل کرکٹ کے جنون سے سرشار ہے۔ میں بے حد مشکور ہوں پی سی بی کے اس اقدام کا اور خاص طور پر سری لنکن ٹیم کا جنہوں نے ہمارے پیارے ملک میں شائقین کرکٹ کے دلوں میں جگہ بنالی۔

پہلے کھیل کے دکھایا، پھر سیٹی بھی بجائی، دل سے جان بھی لگائی،کیونکہ یہ کھیل دیوانوں کا ہے، اب ہم تیار ہیں! جی ہاں پی ایس ایل 5 کی آمد قریب ہی ہےاور کرکٹ کے چاہنے والوں کو اس میگا ایوٹ کا بےصبری سے انتظار ہے  آخر کیوں نہ ہو ! اسٹیڈیم میں میچ دیکھنے کا مزہ قابل دید ہوتا ہے۔ خدا کرے کہ برسے رحمت اس پاک سرزمیں پرجس مٹی کے سائے تلے ہم ایک ہیں۔

 

نوٹ: یہ مضمون مصنف کی ذاتی رائے پر مبنی ہے، ادارے کا اس تحریر سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔


نوٹ: یہ مضمون مصنف کی ذاتی رائے پر مبنی ہے، ادارے کا مصنف یا اس تحریر سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔