کورونا ڈیٹا میں ہیرا پھیری سے انکار، سائنس دان کو سزا

ویب ڈیسک |


کورونا ڈیٹا میں ہیرا پھیری سے انکار، سائنس دان کو سزا

امریکی ریاست فلوریڈا میں کورونا سے متعلق ڈیٹا پورٹل بنانے والی سائنس دان کو اعداد و شمار میں ہیرا پھیری سے انکار پر ناصرف عہدے سے ہٹایا گیا بلکہ انہیں محکمہ صحت سے بھی برطرف کر دیا گیا ہے۔

ریبیکا جونز نے امریکی نیوز نیٹ ورک کو کی گئی ای میل میں بتایا کہ انہوں نے اکیلے دو زبانوں میں الگ الگ ایپلی کیشنز تیار کیں، جن میں 6 منفرد نقشوں کے ذریعے 5 لاکھ افراد کا ڈیٹا یکجا کیا، جس کا مقصد تھا کہ فلوریڈا کے لوگوں اور تحقیق کاروں کو کورونا کی حقیقی صورتحال معلوم ہوسکے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس کیلئے انہوں نے بلا معاوضہ دو ماہ تک 16 سولہ گھنٹے کام کیا۔ ڈیٹا میں تبدیلی سے انکار پر انہیں فلوریڈا کے محکمہ صحت سے گرافک انفارمیشن سسٹم مینیجر کے عہدے سے ہٹا دیا گیا۔

ریبیکا جونز نے تحقیق کرنے والوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ ان کے پورٹل سے ڈیٹا لینے میں احتیاط کریں کیونکہ اس میں متوقع طور پر تبدیلیاں کردی جائیں گی۔