Aaj TV News

BR100 5,205 Decreased By ▼ -24 (-0.45%)
BR30 26,756 Decreased By ▼ -198 (-0.74%)
KSE100 47,793 Decreased By ▼ -80 (-0.17%)
KSE30 19,161 Decreased By ▼ -32 (-0.17%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,004,694 2,819
DEATHS 23,016 45
Sindh 364,784 Cases
Punjab 352,682 Cases
Balochistan 29,494 Cases
Islamabad 85,519 Cases
KP 141,627 Cases

انڈونیشیاء کے ایک وزیر نے فورٹ نائٹ نامی گیم کو گستاخانہ قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی عائد کیے جانے کا عندیہ دے دیا۔

گیم پر پابندی عائد کرنے کے خیالات کا اظہار گیم کی ایک وائرل ہونے والی ویڈیو کے بعد کیا گیا۔

وائرل ویڈیو میں خانہ کعبہ کے مشابہ ایک عمارت کو دکھایا گیا ہے جو مسلمانوں کےلئے نہایت مقدس مقام ہے۔

سی این این انڈونیشیا کے مطابق وزیر سیاحت اور کرییٹو اکانومی سینڈیاگا اُنو کا کہنا تھا کہ انہیں بتایا گیا ہے کہ گیم میں نئے ہتھیار حاصل کرنے اور نئے لیول تک رسائی حاصل کرنے کےلئے خانہ کعبہ کےمشابہ عمارت کو تباہ کرنا لازم ہے۔

سینڈیاگا نےجاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ فورٹ نائٹ گیم براہ راست ہماری اقدار، بالخصوص مذہبی اقدار کے خلاف ہے۔ لہٰذا ٹیم کو نظرثانی کرنے اور فوری پابندی عائد کرنے کی ہدایت کردی ہے۔ ہم کچھ اور گیم بنانے والوں کو بھی خبردار کرنا چاہتے ہیں۔

سینڈیاگا کے فیصلے کے بعد مصر کی جامعہ الاظہر کی جانب سے فتویٰ جاری کیا گیا جس میں مسلمانوں کو فورٹ نائٹ کھیلنے پر خبردار کیا گیا ہے۔

تاہم فورٹ نائٹ کے بنانے والی کمپنی ایپک گیمز نے اس دعوے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس عمارت کو کھیلتے ہوئے نہیں تباہ کیا جاسکتا۔

اسٹوڈیو نے دعویٰ کیا کہ مذکورہ بالا خاکہ فورٹ نائٹ کے کرییٹو موڈ میں ایک کھلاڑی نے بنایا تھا۔ یہ موڈ کھیلنے والوں کو اپنے مرضی کے نقشے بنانے میں کی اجازت دیتا ہے۔