Aaj TV News

BR100 4,979 Decreased By ▼ -47 (-0.94%)
BR30 24,460 Decreased By ▼ -313 (-1.26%)
KSE100 46,636 Decreased By ▼ -284 (-0.61%)
KSE30 18,480 Decreased By ▼ -178 (-0.95%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,218,749 2,928
DEATHS 27,072 68
Sindh 448,658 Cases
Punjab 419,423 Cases
Balochistan 32,707 Cases
Islamabad 103,720 Cases
KP 170,391 Cases

گندم کی ترسیل میں رکاوٹ نے آٹا مہنگا کردیا ،سرکاری گوداموں میں 37 لاکھ ٹن موجود ہے تاہم حکومت مہنگے داموں درآمد کی جانی والی گندم پر انحصار کررہی ۔

مل مالکان بحران کی وجہ حکومتی فیصلہ سازی میں تاخیر کو قراردے رہے ہیں جبکہ پارلیمنٹرین کہتے ہیں مفاد عامہ حکومت کی ترجیح ہی نہیں ۔

زرعی ملک ہونے کے باوجود ملک گندم کے بحران کا ذمے دار ہے اور حکومتی فیصلہ سازی میں سست روی سے طلب اوررسد کےدھندے کولیکرمافیا نےاپنا کام دیکھا دیا ہے۔

فلورملزمالکان کہتے ہیں کہ حکومت ذخیرہ کی گئی37 لاکھ ٹن گندم فراہم نہیں کررہی،270 ڈالرکےبجائے ساڑھے تین سو ڈالرفی ٹن گندم خریدی گئی ، تاخیرسے فیصلہ سازی کا خمیازہ عوام بھگت رہے۔

حکومت گندم کی ریکارڈ پیدوارکا دعویٰ کررہی تاہم حکومت نے قیمتوں میں اضافے کو تسلیم کرتے ہوئے نیا لالی پاپ بھی تھما دیا۔

وہ کہتے ہیں فائدہ کسان کو پہنچا ہے،عوام کو ریلیف جلد سبسڈی کارڈ کے ذریعے دئینگے۔

بلند قیمت کے ساتھ بھی مارکیٹ سے گندم کی عدم دستیابی کا فائدہ مافیا اٹھا رہا ، جبکہ اس کاروبارسے وابسطہ افراد اور صارفین حکومت سے بر وقت فیصلے اور ریلیف کا مطالبہ کر رہے ہیں۔