Aaj TV News

BR100 4,519 Increased By ▲ 22 (0.49%)
BR30 18,277 Decreased By ▼ -62 (-0.34%)
KSE100 44,114 Increased By ▲ 178 (0.41%)
KSE30 17,034 Increased By ▲ 95 (0.56%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,283,886 411
DEATHS 28,704 7
Sindh 475,097 Cases
Punjab 442,876 Cases
Balochistan 33,471 Cases
Islamabad 107,601 Cases
KP 179,888 Cases

امریکا کی مرکزی تحقیقاتی ایجنسی فیڈرل بیورو آف انویسٹی گیشن (FBI) نے حال ہی میں امریکی کمپنیوں کو ارسال کردہ ایک رپورٹ میں ایرانی ہیکرز سے خبردار کیا ہے۔

ان ہیکرزں نے "ڈارک ویب" کی سائٹس میں حساس معلومات تلاش کیں جو امریکی اور غیر ملکی تنظیموں سے چُرائی گئی تھیں۔ یہ معلومات مستقبل میں مذکورہ تنظیموں میں دراندازی کی کوششوں میں مفید ثابت ہو سکتی ہیں۔

امریکی چینل سی این این کے مطابق چند روز قبل جاری اس رپورٹ میں واضح کیا گیا ہے کہ ایرانی ہیکرز نے ڈارک ویب کے مختلف فورمز پر بھرپور دلچسپی کا مظاہرہ کیا۔ ان فورمز پر مختلف نوعیت کی معلومات مثلاً ای میلز اور پتے وغیرہ افشاں کی جاتی ہیں۔

ایف بی آئی نے تشویش ظاہر کی ہے کہ ایرانی ہیکرز کا گروپ ان معلومات کو مستقبل میں امریکی کمپنیوں کے نیٹ ورک میں دراندازی کے لیے استعمال کر سکتا ہے۔

تاہم ایف بی آئی نے اس شرپسند سرگرمی کے پیچھے موجود ہیکرز کی شناخت واضح نہیں کی۔ اسی طرح ہیکرز کے ناموں کا تعین نہیں کیا۔ یہ بھی نہیں بتایا گیا کہ آیا ان ہیکرز کا ایرانی حکومت کے ساتھ کوئی تعلق ہے یا نہیں۔

امریکی سیکیورٹی کمپنی "کراؤڈ اسٹرائک" میں انٹیلی جنس سربراہ کے فرسٹ ڈپٹی ایڈم مائرز کے مطابق ایرانی حکومت کے ساتھ تعلق رکھنے والے ہیکرز کی جانب سے گذشتہ برسوں کے دوران میں سائبر جرائم کی سرگرمیوں کے ارتکاب میں اضافہ ہوا ہے۔

یاد رہے کہ امریکی انتظامیہ ماضی میں کئی بار اعلان کر چکی ہے کہ ایرانی ہیکرز نے انٹرنیٹ کے ذریعے مشکوک کارروائیاں انجام دیں۔ ان کاررائیوں کا مقصد امریکی کمپنیوں اور اداروں کو نشانہ بنانا تھا۔