Aaj News

قرآن پاک کی بے حرمتی کے خلاف پاکستان میں مظاہرے، وکلا کل یوم سیاہ منائیں گے

سویڈن اسلامی فوبیا کو سختی سے رد کرتا ہے، سویڈن ایمبیسی
اپ ڈیٹ 02 جولائ 2023 08:24pm
فوٹو:ٹویٹر
فوٹو:ٹویٹر

سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کے خلاف مجلس وحدت المسلمین اور جمعیت علمائے اسلام کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔

کراچی پریس کلب کے باہر مجلس وحدت مسلمین نے سویڈن میں قرآن مجید کی بے حرمتی کے خلاف مظاہرہ کیا، جس میں شیعہ علمائے کرام اور ایم ڈبلیو ایم کارکنان کی بڑی تعداد موجود تھی۔

مظاہرین کی جانب سے واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اور قرآن مجیدکی بےحرمتی کرنے والے کو سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ کیا گیا۔

رہنما ایم ڈبلیو ایم علامہ مبشر حسن نے حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ سویڈن میں توہین قرآن کا یہ پہلا واقعہ نہیں، حکومت پاکستان سویڈن کے سفیر کو فوری ملک سے نکالے، جب کہ تمام عالم اسلام سویڈن حکومت سے سفارتی تعلقات ختم کرے۔

ڈاکٹرصابرابومریم کا کہنا تھا کہسویڈن حکومت نے فریڈم آف ایکسپریشن کے کالے قانون کو لاگو کیا، عالمی استعمار امریکا و اسرائیل ایسے تمام کالے قوانین اور بے حرمتیوں کے پیچھے ہیں، سویڈن کے سفیر کو ملک سے بے دخل اور حکومتی سطح پر احتجاج کیا جائے۔

جمیعت علمائے اسلام کا احتجاج

سویڈن میں قرآن مجید کی بے حرمتی کرنے والے شیطان صفت افراد کے خلاف جمیعت علماء السلام ف کی ضلعی قیادت نے کوہاٹ پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا۔ جس میں سینکڑوں کارکنوں نے شرکت کی۔

احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے گوہر خان سیف اللہ نے کہا کہ سویڈن میں قرآن پاک کی بے حرمتی کرنے والے شیطان صفت افراد کو سویڈن حکومت سخت سے سخت سزا دے۔

ضلعی صدر مولانا عبدالحئی نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سویڈن میں ہونے والے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہیں، اس سے تمام عالم السلام کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔

قرآن کی بے حرمتی پر سکھ برادری کا احتجاج

مسلمان تو مسلمان سکھ برادری کی بھی سویڈن میں قرآن مجید کی بےحرمتی کی شدید الفاظ میں مذمت کررہی ہے، اور ذمہ دران کو کڑی سے کڑی سزا دینے کا مطالبہ کررہی ہے۔

ننکانہ صاحب میں احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے سکھ رہنما اور پنجابی سکھ سنگت پاکستان کے چٸیرمین سردار گوپال سنگھ چاولہ کا کہنا تھا کہ دنیا کے تمام مذاہب نے دوسرے مذاہب کی عبادت گاہوں، مقدس ہستیوں اور مذہبی کتابوں کے احترام کا درس دیا ہے۔

گوپال سنگھ چاولہ کا کہنا تھا کہ سویڈن میں مسلمانوں کی مقدس کتاب قرآن مجید کی بےحرمتی قابل مذمت ہے، ایسے واقعات دنیا کے امن کے لٸے بہت خطرناک ثابت ہو سکتے ہیں، اس لٸے عالمی طاقتوں کو چاہٸے کہ وہ ایسے واقعات کی روک تھام کے لٸے اپنا کردار ادا کرے۔

خیبرپختونخوا بار کونسل کا کل یوم سیاہ منانے کا فیصلہ

سویڈن میں قرآنِ پاک کی بے حرمتی کے خلاف خیبرپختونخوا بار کونسل نے کل یوم سیاہ منانے کا فیصلہ کیا ہے۔ بار کونسل کے رہنماؤں کا کہنا ہے کہ صوبہ بھر کے وکلاء کل پرامن احتجاج کریں گے اور کالی پٹیاں باندھ کر عدالتوں میں پیش ہوں گے۔

بار کونسل نے اپنے بیان میں نفرت انگیز اقدام کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ نفرت و تعصّب پر مبنی حرکت نے مسلمانوں کو گہری چوٹ پہنچائی، نفرت انگیز حرکت کا مسلمانوں میں غصّہ و اشتعال دلوانے کے علاوہ کوئی مقصد نہیں، حکومت اقوام متحدہ کے ذریعے پروپیگنڈا روکنے کیلئے اقدامات کرے۔

انجمن تاجران کا سویڈش سفیر کو ملک بدر کرنے کا مطالبہ

صدر آل پاکستان انجمن تاجران اجمل بلوچ کا کہنا تھا کہ سویڈن میں عدالتی سرپرستی میں قرآن مجید کی بے حرمتی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں، قرآن مجید کی بے حرمتی کرنے والوں کے ساتھ سفارتی تعلقات ختم کئے جائیں، سویڈن کے سفیر کو فل فور ملک بدر کیا جائے اور پاکستانی سفیرکو سویڈن سے واپس بلایا جائے۔

اجمل بلوچ کا کہنا تھا کہ سویڈن کی مصنوعات کا مکمل بائیکاٹ کا کیا جائے گا اور کل سے پاکستانی تاجر سویڈن کی مصنوعات کی خریدوفروخت نہیں کریں گے۔ دنیا بھرکے مسلمانوں سے سویڈن کی مصنوعات کے بائیکاٹ کی اپیل کرتا ہوں۔

تاجر رہنما نے مزید کہا کہ دنیا کبھی کبھی ایسی ناپاک جسارت کرکے ہمیں آزماتی ہے، اور ہم جس حال میں ہوں ناپاک جسارت کرنے والے کوچھوڑتے نہیں، دنیا اس بات کو سمجھے کہ قرآن مجید تمام جہان کے انسانوں کے لئے نصیحت ہے۔

سویڈن اسلامی فوبیا کو سختی سے رد کرتا ہے

دوسری جانب پاکستان میں واقع سویڈن ایمبیسی کی جانب سے ٹویٹر اکاؤنٹ پر بیان جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سویڈن اسلامی فوبیا کو سختی سے رد کرتا ہے۔

سویڈن ایمبیسی نے اپنے بیان کو دہراتے ہوئے کہا کہ قرآن پاک کی بے حرمتی انفرادی واقعہ ہے، جس کا حکومت سے کوئی تعلق نہیں۔

اس سے پہلے سویڈن کے وزیر اعظم کی جانب سے قرآن پاک کی بے حرمتی کو نامناسب کہا گیا تھا۔

Holy Quran

DESECRATION OF THE HOLY QURAN IN SWEDEN

Comments are closed on this story.

تبصرے

تبولا

Taboola ads will show in this div