Aaj News

پیش بندی کیلئے حکومت نے نامزد آرمی چیف کی ریٹائرمنٹ منجمد کردی

آرمی سروسزایکٹ 15 اے میں ترمیم کی منظوری
شائع 24 نومبر 2022 02:25pm

وفاقی کابینہ نے صدر مملکت کی جانب سے ممکنہ طور پر آرمی چیف کی تعیناتی کی سمری پردستخط نہ کرنے کی صورت میں بڑا فیصلہ کرلیا جس میں تحریک انصاف کی اگلی چال روکنے کیلئے پیش بندی کی گئی ہے

ذرائع کے مطابق وفاقی کابینہ نےنامزدآرمی چیف جنرل عاصم منیرکی ریٹائرمنٹ منجمد کردی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی کابینہ نے آرمی سروسزایکٹ 15 اے میں ترمیم کی منظوری دے دی ہے ۔

اس لحاظ سے ریٹائرمنٹ کی تاریخ گزرنے کے بعد بعدصدرکی جانب سے سمری واپس بھجواناغیرمؤثرہوگا۔

واضح رہے کہ وزیراعظم شہباز شریف نےجنرل عاصم منیر کو چیف آؔف آرمی اسٹاف اور جنرل مرزا کو چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف کے عہدوں پر تعینات کرنے کی سمری ایوان صدر بھجوا دی ہے۔

آئین کے آرٹیکل 243 کے تحت صدر اس سمری کو منظور کرنے کے پابند ہیں اگرچہ وہ اسے 25 دن کے لیے التوا کا شکار کرسکتے ہیں۔

وزیراعظم کی جانب سے آرمی چیف نامزد کیے جانے والے لیففٹننٹ جنرل عاصم منیر 27 نومبرکو ریٹائرہورہے ہیں۔

کیا صدر سمری روک سکتے ہیں؟

لیکن صرف سمری پردستخط کرنا صدرکا واحد آپشن نہیں ہے۔ صدر کو 10 دن کے اندر سمری کی منظوری دینی ہوتی ہے لیکن اگر انہیں کوئی مسئلہ نظرآئے تو سمری کو واپس بھیجا جا سکتا ہے۔ ایسے میں یہ مزید 15 دن تک وزیراعظم کے دفتر میں رہے گی۔

اس طرح سے سمری صدر کو بھیجے جانے کے بعد بھی تقرری کا معاملہ مجموعی طور پر 25 دن تک موخر ہوسکتا ہے۔ دیکھنا ہوگا کہ صدر اتفاق کرتے ہیں یاسمری دوبارہ غورکے لیے واپس بھجوا دیتے ہیں۔

یہ بات اہم ہے کہ صدر مملکت عارف علوی کا تعلق پاکستان تحریک انصاف سے ہے اور وہ اس معاملے پرتنازع پیدا کرسکتے ہیں۔ اگرمسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے وزیر اعظم شہباز شریف فوج کی تجاویزحاصل کیے بغیر آگے بڑھنے کا فیصلہ کرتے ہیں اور صدر سمری واپس کرنے کا فیصلہ کرتے ہیں تو یہ سارا عمل ٹھپ ہوجائے گا۔

Shehbaz Sharif

Army Chief

COAS

Lieutenant General Asim Munir

Comments are closed on this story.

مقبول ترین