Aaj News

اتوار, اپريل 14, 2024  
05 Shawwal 1445  

نرخ بڑھنے پر صنعتوں نے بجلی کے استعمال میں بڑی کمی کردی، حکومت پریشان

کٹوتی 50 فیصد تک جاسکتی ہے، نیپرا کی سماعت میں این ٹی ڈی سی 42 ارب روکنے کا عندیہ
شائع 01 فروری 2024 11:15am

بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے لیے ٹیرف میں 5 روپے 62 پیسے فی یونٹ کی مثبت ایڈجسٹمنٹ کی تجویز پر عوامی سماعت منعقد ہوئی۔

نیشنل الیکٹرک پاور ریگیولیٹری اتھارٹی کی سماعت کے دوران طے پایا کہ مثبت ایڈجسٹمنٹ (اضافہ) فروری 2024 کے بلوں میں وصول کیا جائے گی۔

چیئرمین نیپرا وسیم مختار، ممبر (ٹیکنیکل) سندھ رفیق احمد شیخ، ممبر (ٹیرف اینڈ فائنانس) مطہر نیاز رانا اور ممبر کے پی کے مقصود انور خان نے سماعت میں شرکت کی۔ نیپرا نے سی پی پی- جی کے پیش کردہ اعداد و شمار کو چیلنج نہیں کیا جن کے تحت صارفین سے اضافی طور پر 41 ارب 69 کروڑ روپے وصول کیے جائیں گے۔

سی پی پی اے کے – جی کے سی ای او ریحان اختر نے کہا کہ نومبر کا 4 روپے 13 پیسے کا ایف سی اے دسمبر 2023 کے 5 روپے 62 پیسے کے نرخ سے بدلا جائے گا جس کے نتیجے میں صارفین پر پڑنے والا خالص بوجھ ایک روپے 49 پیسے فی یونٹ ہوگا۔

ریحان اختر نے بتایا کہ دسمبر 2023 میں صنعتوں کی طرف سے استعمال میں کمی کے باعث بجلی کا استعمال 10 فیصد کم ہوا ہے۔ صنعتوں کو توقع تھی کہ سردیوں میں کوئی پیکیج دیا جائے گا اس لیے انہوں نے پروڈکشن کم کردی تاہم کوئی پیکیج پیش نہیں کیا گیا۔

ممبر کے پی کے مقصود انور خان نے بتایا کہ آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کے وفد نے ان سے 30 جنوری کو ملاقات کی اور بتایا کہ انہوں نے بلند نرخوں کے باعث دسمبر 2023 میں بجلی کا استعمال 31 فیصد تک گھٹادیا۔ جنوری 2024 میں صنعتی اداروں میں بجلی کے استعمال میں مجموعی طور پر 50 فیصد تک کمی کا امکان ہے۔

ممبر (فائنانس اینڈ ٹیرف) مطہر نیاز رانا نےبھی صنعتی اداروں کی طرف سے بجلی کے استعمال میں کمی پر تشویش کا اظہار کیا۔ انہوں نے اس حوالے سے بات چیت پر زور دیا۔ ممبر سندھ رفیق احمد شیخ نے کہا کہ جب تک سرمایہ کاری کا منصوبہ پیش نہیں کیا جاتا تب تک این ٹی ڈی سی کو 42 ارب روپے کی ادائیگی روکی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:

بجلی کمپنیوں کا خفیہ کھیل کیا تھا، نیپرا کی رپورٹ میں سب کچھ کھل گیا

نیپرا نے کراچی صارفین کیلئے فی یونٹ بجلی مزید مہنگی کردی 14

نیشنل پاور کنٹرول سینٹر کے نمائندے واجد چٹھہ نے کہا کہ آر ایل این جی کے ایک حصے کو ریفرنس فیوئل پروجیکشنز کا حصہ بنایا جانا چاہیے۔

این ٹی ڈی سی کی قانونی مشیر ماریہ رفیق نے بتایا کہ این ٹی ڈی سی نے اپنے 42 ارب روپے کی ریلیز کے لیے پٹیشن دائر کی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ این ٹی ڈی سی کا پلان تیار ہے۔

nepra

industries

ntdc

TARIFFS

PAYMENTS HELD

LESS CONSUMPTION

Comments are closed on this story.

تبصرے

تبولا

Taboola ads will show in this div