Aaj News

پیر, مئ 27, 2024  
18 Dhul-Qadah 1445  

برڈ فلو عالمگیر وبا بن سکتا ہے، انسانوں کے لیے خطرہ بڑھ گیا

مویشی بھی لپیٹ میں آگئے، احتیاطی تدابیر اپنائی جائیں، عالمی ادارہ صحت کے چیف سائنٹسٹ کی پریس کانفرنس
شائع 19 اپريل 2024 03:03pm

عالمی ادارہ صحت نے خبردار کیا ہے کہ دنیا بھر میں برڈ فلو کی وبا انسانوں میں بھی بہت تیزی سے پھیل سکتی ہے۔ عالمی ادارہ صحت کے چیف سائنٹسٹ جرمی فیرار نے برڈ فلو کے ویریئنٹ A(H5N1) کو ’گلوبل زونوٹک اینیمل پینڈیمک‘ سے تعبیر کیا ہے۔

برڈ فلو کے اس ویریئنٹ نے پولٹری کے شعبے میں بہت بڑے پیمانے پر ہلاکتوں کے بعد اب بہت سے ممالیہ جانوروں کو بھی متاثر کرنا شروع کردیا ہے۔ انفیکشن والے جانوروں کے نزدیک رہنے سے بیمار پڑنے والے انسانوں میں بھی ہلاکتوں کا تناسب زیادہ رہا ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے بتایا ہے کہ H5N1 کے پھیلاؤ سے انسانوں میں بھی ہلاکتوں کا تناسب بہت بلند ہے۔ اس حوالے سے غیر معمولی احتیاط لازم ہے۔

2020 میں نمودار ہونے سے اب تک یہ وائرس پولٹری کے شعبے میں بہت بڑے پیمانے پر کروڑوں اموات کا سبب بنا ہے۔ امریکا میں یہ وائرس اب گھریلو مویشیوں کو بھی نشانہ بنارہا ہے۔ اس کے نتیجے میں انسانوں کے بھی متاثر ہونے کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔

جینوا میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عالمی ادارہ صحت کے چیف سائنٹسٹ جرمی فیرار نے کہا کہ حکومتوں کو اس وائرس کا پھیلاؤ روکنے سے متعلق اقدامات کرنے چاہئیں۔ جو احتیاطی تدابیر کورونا کے سلسلے میں اختیار کی گئی تھیں وہی اختیار کی جانی چاہئیں۔ مرغیوں اور بطخوں کو نشانہ بنانے کے بعد یہ وائرس اب ممالیہ میں بھی پھیل گیا ہے۔ یہ وائرس انسانوں سے انسانوں میں بھی منتقل ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

World Health Organization

H5N1 VARIANT

WARNS CHIEF SCIENTIST

BIRD FLU

GLOBAL ZOONOTIC ANIMAL PANDEMIC