Aaj TV News

BR100 4,607 Decreased By ▼ -61 (-1.3%)
BR30 20,274 Decreased By ▼ -618 (-2.96%)
KSE100 44,629 Decreased By ▼ -192 (-0.43%)
KSE30 17,456 Decreased By ▼ -66 (-0.38%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,265,650 603
DEATHS 28,300 20
Sindh 466,154 Cases
Punjab 438,133 Cases
Balochistan 33,133 Cases
Islamabad 106,504 Cases
KP 176,950 Cases

مائیکرو سافٹ کا نیا آپریٹنگ سسٹم "ونڈوز 11" ریلیز سے قبل ہی ہیکرز اور وائرسز کا شکار بن گیا ہے۔

انٹرنیٹ سکیورٹی فرم ’’کیسپرسکائی‘‘ نے اس حوالے سے جاری وارننگ میں کہا ہے کہ چوری شدہ (پائریٹڈ) سافٹ ویئر مفت میں فراہم کرنے والی مختلف ویب سائٹس پر "ونڈوز 11" کی انسٹالیشن فائلز موجود ہیں، جنہیں نئی ونڈوز انسٹال کرنے کے علاوہ موجودہ ونڈوز کو اپ گریڈ کرنے میں بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

کیسپرسکائی نے خبردار کیا ہے کہ یہ تمام انسٹالیشن فائلز مشکوک ہیں، مگر ان میں سے ایک خاص فائل، جو 86307_windows 11 build 21996.1 x64 + activator.exe کے نام سے ہے اور جس کا سائز 1.75 گیگابائٹس ہے، کئی طرح کے وائرسز (میل ویئر اور ایڈویئر) سے آلودہ ہے۔

KasperSky
KasperSky

بظاہر ونڈوز 11 دکھنے والی اس فائل کے انسٹال ہوتے ہی صارف کا کمپیوٹر سست پڑ جاتا ہے اور اسکرین پر درجنوں اشتہارات کی بھرمار ہوجاتی ہے۔

مذکورہ جعلی ونڈوز 11 کے بعض ورژنز میں صارف کے کمپیوٹر کی جاسوسی کرنے والے سافٹ ویئر (اسپائی ویئر) اور "کی لاگرز" تک موجود ہیں جن کے ذریعے نامعلوم ہیکرز یہ تک جان سکتے ہیں کہ آپ نے اپنے کمپیوٹر کون کونسے بٹن کب اور کس ترتیب سے دبائے۔

KasperSky
KasperSky

ان ہی معلومات سے فائدہ اٹھاتے ہوئے کوئی ہیکر آپ کے ای میل پاس ورڈ سے لے کر بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات تک، تقریباً ہر چیز سے واقف ہو کر آپ کو ناقابلِ تلافی نقصان بھی پہنچا سکتا ہے۔

کیسپرسکائی نے اپنی آفیشل ویب سائٹ پر ایک حالیہ بلاگ میں خبردار کیا ہے کہ صارفین کسی بھی نامعلوم ذریعے سے ونڈوز 11 ڈاؤن لوڈ ہر گز نہ کریں، کیونکہ صرف مائیکروسافٹ "ونڈوز انسائیڈر" پروگرام میں شرکت کرنے والے ہی ونڈوز 11 کو آزمائشی طور پر ڈاؤن لوڈ کرکے استعمال کرسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ مائیکروسافٹ کی جانب سے اب تک ونڈوز 11 کے اجراء کی کسی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا ہے۔ البتہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی دنیا پر گہری نظر رکھنے والے معتبر ذرائع کا کہنا ہے کہ ونڈوز 11 اس سال اکتوبر کے تیسرے ہفتے میں عوامی استعمال کے لیے جاری کردی جائے گی۔