Aaj News

ٹویٹر کا “ایڈیٹ بٹن” متعارف کرنے کا اعلان

لیکن یہ فیچر کن ٹویٹر صارفین کیلئے قابل رسائی ہوگا؟
شائع 08 ستمبر 2022 07:04pm

ٹویٹر نے جمعرات کو اعلان کیا کہ وہ اپنی سب سے زیادہ متوقع خاصیت “ایک ایڈیٹ بٹن” کو ٹیسٹ کر رہا ہے۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ وہ ٹویٹر کے “پیڈ ورژن” ٹویٹر بلیو کے صارفین کے لیے آنے والے ہفتوں میں متعارف کرانے سے پہلے اندرونی طور پر “ٹویٹ میں ترمیم” کے فیچر کی جانچ شروع کر دے گا، جس کی قیمت امریکہ میں 4.99 ڈالر ماہانہ ہوگی۔

ٹویٹر کے ترجمان لارین الیگزینڈر کا کہنا ہے کہ “چونکہ یہ آج تک ہماری سب سے زیادہ درخواست کردہ خاصیت ہے، اس لیے ہم اس بات کو یقینی بنانا چاہتے ہیں کہ ہم اسے درست کر لیں۔”

“ٹیسٹنگ سے ہمیں امید ہے کہ یہ نئی خاصیت کس طرح لوگوں کے ٹویٹس کو پڑھنے اور لکھنے کے طریقے پر اثرانداز پورہی ہے، وہ تیزی سے سمجھ میں آ جائے گا۔”

ٹویٹر کو امید ہے کہ ایڈٹ فنکشن ٹویٹ کرنے کے دباؤ کو کم کرے گا، خاص طور پر ان صارفین کے لیے جو اکثر ٹویٹ نہیں کرتے۔

اگرچہ یہ فیچر صرف ٹویٹر بلیو سبسکرائبرز کے لیے اس کے ابتدائی رول آؤٹ میں دستیاب ہوگا، تاہم ٹویٹر کے اعلان کے مطابق، تمام ٹوئٹر صارفین دیکھ سکیں گے کہ آیا کسی ٹویٹ میں ترمیم کی گئی ہے یا نہیں۔

ٹویٹر ایڈٹ بٹن کیسے کام کرے گا

صارفین اپنی ٹویٹ کو پہلی بار پوسٹ کرنے کے بعد 30 منٹ کے نادر کئی بار ایڈٹ کر سکتے ہیں۔

ٹویٹر نے کہا کہ جن ٹویٹس میں ترمیم کی گئی ہے ان کی شناخت ایک آئیکن، ٹائم اسٹیمپ اور لیبل سے آسانی سے کی جائے گی۔

لیبل پر ٹیپ کرنے سے صارفین ٹویٹ کے پچھلے ورژن دیکھ سکیں گے۔

ٹویٹر نے کہا کہ وقت کی حد اور ورژن کی تاریخ کے اجزاء “گفتگو کی سالمیت کے تحفظ اور کہی گئی باتوں کا عوامی طور پر قابل رسائی ریکارڈ بنانے میں مدد کرنے کے لیے اہم ہیں۔”

کمپنی نے کہا کہ وہ اپنے رول آؤٹ میں اس فیچر کے کسی بھی “غلط استعمال” کو ٹریک کرے گی۔

ٹیسلا کے سی ای او ایلون مسک کے ٹویٹر کو حاصل کرنے کے برباد ہونے والے معاہدے کے درمیان ترمیم کی خاصیت میں اضافہ ہوا ہے۔ وہ ایڈیٹ فنکشن کے وکیل تھے۔

ٹویٹر نے پہلی بار اعلان کیا تھا کہ یہ فیچر اپریل میں آنے والا ہے۔

ٹویٹر

Twitter Blue

Edit Feature

Comments are closed on this story.