Aaj News

اتوار, اپريل 14, 2024  
05 Shawwal 1445  

عمران خان کو ویڈیو لنک کے ذریعے حاضری کی اجازت دینے کی درخواست نمٹادی گئی

لاہور ہائیکورٹ نے متعلقہ فورمز سے رجوع کرنے کی ہدایت کردی
اپ ڈیٹ 27 مارچ 2023 10:53am

لاہور ہائیکورٹ نے عمران خان کو ویڈیو لنک کے ذریعے حاضری کی اجازت دینے کی درخواست نمٹاتے ہوئے متعلقہ فورمز سے رجوع کرنے کی ہدائت کردی، عدالت نے عمران خان کی سیکیورٹی فراہمی کے لئے حکومت پنجاب کو فوکل پرسن مقرر کرنے کا حکم دے دیا۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ نے عمران خان کی تقاریر کی نشریات پر پابندی کی درخواست پر سماعت کی۔

عدالت کو بتایا گیا کہ عدالتی حکم پر ایس پی کے ہمراہ سیکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیا گیا ہے،عمران خان اسلام آباد جارہے ہیں مگر انہیں ایمبولینس اور دیگرسیکیورٹی وہیکلز فراہم نہیں کیے گئے۔

عدالت نے سرکاری وکیل کو عمران خان کی سیکیورٹی معاملات کا جائزہ لینے کے لئے پولیس کی جانب سے فوکل پرسن کا نام عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیا۔

ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے بتایا کہ ایس پی افضل کو فوکل پرسن مقرر کیا گیا ہے۔

اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے بتایا کہ ایس پی تو سیکیورٹی کے معاملے کا فیصلے کرنے کا مجاز نہیں ہے۔

عدالت نے ریمارکس دئیے کہ سیکیورٹی کی فراہمی اور آپ کے تحفظات کو تو حکومت پنجاب ہی دیکھے گی،حکومت عمران خان کو سابق وزیراعظم کی حیثیت سے سیکیورٹی فراہم کرنے کے لئے آمادہ ہے،صرف دیکھنا یہ ہے کہ آپ کے کیا تحفظات ہیں اور ان کو کیسے ختم کیا جائے گا،اگر تحفظات دور نہ ہوئے تو دوبارہ عدالت سے رجوع کیا جائے۔

عدالت نےعمران خان کو ویڈیو لنک کے ذریعے عدالتوں میں پیش ہونے کی درخواست نمٹاتے ہوئے متعلقہ فورمز سے رجوع کرنے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے کہا کہ پہلے آپ متعلقہ فورم سے رجوع کریں پھر عدالت جائزہ لے گی، اگر اس کیس کو اہمیت آپ دیں گے تو عدالت بھی دے گی۔

pti

imran khan

Lahore High Court

speach ban

justice abid aziz sheikh

Politics March 27 2023

Comments are closed on this story.

تبصرے

تبولا

Taboola ads will show in this div