Aaj News

منگل, مئ 28, 2024  
19 Dhul-Qadah 1445  

90 روز میں انتخابات سے متعلق جواب وزارت قانون دے گی، نگراں وزیر اطلاعات

نوازشریف سے متعلق فیصلہ عدالتوں نے کرنا ہے، مرتضیٰ سولنگی
شائع 20 اکتوبر 2023 08:47pm
فوٹو۔۔۔۔۔۔۔ اسکرین گریب
فوٹو۔۔۔۔۔۔۔ اسکرین گریب

نگراں وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات مرتضی سولنگی نے کہا ہے کہ 90 روز میں انتخابات سے متعلق جواب وزارت قانون دے گی، شفاف انتخابات کرانے کی ذمہ داری الیکشن کمیشن کی ہے، نوازشریف سے متعلق فیصلہ عدالتوں نے کرنا ہے، نیب آزاد اور خود مختار ادارہ ہے۔

آج نیوز کے پروگرام ”روبرو“ میں گفتگو کرتے ہوئے نگراں وفاقی وزیر مرتضیٰ سولنگی نے کہا کہ 90 روز میں انتخابات سے متعلق جواب وزارت قانون دے گی، انتخابات کروانے کا فیصلہ الیکشن کمیشن نے کیا، شفاف انتخابات کرانے کی ذمہ داری الیکشن کمیشن کی ہے۔

مرتضی سولنگی نے کہا کہ میں محدود مدت اور محدود اختیارات کا وزیر ہوں، وزارت قانون الیکشن کمیشن سے مشاورت کے بعد مؤقف دے گی، وزارت قانون نے الیکشن کمشین سے مشورا کیا ہے، وزارت قانون حتمی مؤقف سپریم کورٹ میں پیش کرے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ سپریم کورٹ میں اٹارنی جنرل بھی مؤقف دیں گے، سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد معاملات کو دیکھیں گے، قتل کرنے والے کو بھی قانونی دفاع کا حق ہوتا ہے، آئین کے مطابق ہر شخص کو دفاع کا حق حاصل ہے۔

نگراں وفاقی وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ عدالت نے آئین و قانون کو دیکھ کرفیصلہ کرنا ہوتا ہے، نوازشریف سے متعلق فیصلہ عدالتوں نے کرنا ہے، عدالت کو بتایا گیا کہ وہ پیش ہونا چاہتےہیں، نیب آزاد اور خود مختار ادارہ ہے، شکایت اور شور کرنا جمہوریت کا حسن ہے، درست سمت میں چلتے تو جمہوریت کی ٹانگیں کمزورنہ ہوتیں۔

نواز شریف کی واپسی سے متعلق مرتضیٰ سولنگی نے کہا کہ نوازشریف کو مکمل سیکیورٹی فراہم کریں گے، نوازشریف پاکستان کے شہری اور 3 بار کے منتخب وزیراعظم ہیں، ہماری ذمہ داری ہے کہ نوازشریف کی واپسی پرامن وامان کا مسئلہ نہ ہو۔

ان کا کہنا تھا کہ شہزاد اکبر کی چڑیا کہاں کہاں اڑتی ہے مجھے کیا پتا، شیخ رشید کی جرات مند ہیں، جسی جبر پر بات نہیں کریں گے، شیخ رشید کہاں ہیں؟ میرے علم میں نہیں۔

نگراں وفاقی وزیر مرتضی سولنگی نے بتایا کہ شفقت محمود سے ایک گھنٹہ ملاقات جاری رہی، شفقت محمود پرانے دوست ہیں، نجی ملاقات تھی، میں کسی ایجنڈے یا مشن پر نہیں تھا۔

Nawaz Sharif

AAJ NEWS

ECP

rubaroo

Shaukat Paracha

general elections 2023