Aaj News

منگل, مئ 28, 2024  
19 Dhul-Qadah 1445  

درخشاں تھانے میں زیر حراست ملزم کی ہلاکت، ملوث اہلکاروں کا ریمانڈ منظور، ایس پی کلفٹن مفرور

ایس پی کلفٹن نے ملزم کو پرائیویٹ جگہ پرتشدد کا نشانہ بنایا، تشدد کے بعد ملزم کو تھانے میں لاکر ایس ایچ او پر الزام لگا دیا گیا، وکیل ملزم
اپ ڈیٹ 17 اپريل 2024 11:34pm

درخشاں تھانے میں زیر حراست ملزم کی ہلاکت کے معاملے پر جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی نے درخشاں تھانے میں مقدمے میں ملوث ملزمان سابق ایس ایچ او درخشاں علی رضا اور ہیڈ محرر فیصل لغاری کو پیش کیا ۔

کراچی سٹی کورٹ میں جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی نے گرفتار ملزمان کا 3 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے پولیس کے حوالے کردیا۔

تفتیشی افسر نے ملزمان کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان سے سی سی ٹی وی فوٹیج نکلوانی ہے۔

ملزم کے وکیل صلاح الدین پہنور ایڈووکیٹ نے موقف دیا کہ مقتول کسٹڈی میں ہلاک نہیں ہوا، ملزم کو تھانے میں تشدد کا نشانہ نہیں بنایا گیا۔ ملزم کو ایس آئی پی ثنا اللہ نے مقتول کو گرفتار کیا تھا۔

وکیل نے کہا کہ ایس پی کلفٹن نیئرالحق ملزم کو پرائیویٹ جگہ پر لے گئے جہاں اُسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا، بعد میں ملزم کو تھانے میں لاکر ایس ایچ او پر الزام لگا دیا گیا، مقتول کو تھانے میں تشدد کا نشانہ نہیں بنایا گیا، ایس ایچ او درخشاں پر بے بنیاد الزام لگایا گیا ہے۔

پولیس کے مطابق مقتول معيز پر عدالت میں پہلے ہی مقدمات زیرِ سماعت تھے، مقتول کا بیٹا بھی جیل میں ہے، واقعہ کا مقدمہ تھانہ ساحل میں سرکار کی مدعیت میں درج کیا گیا ہے۔

عدالت نے آئندہ سماعت پر تفتیشی افسر سے پیشرفت رپورٹ طلب کرلی۔ تفتیشی افسر نے ملزمان کے 14 روزہ ریمانڈ دینے کی استدعا کی تھی لیکن عدالت نے 3 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے ملزمان کو پولیس کے حوالے کردیا۔

karachi

Karachi Police

Karachi Street Crimes

Died