Aaj News

جمعرات, جون 13, 2024  
06 Dhul-Hijjah 1445  

بھارت میں ’سابق مسلمان یوٹیوبر‘ کی قرآن پاک کی بے حرمتی، مسلمان مشتعل

ملعون یوٹیوبر کی گرفتاری کا مطالبہ، پولیس کے حیلے بہانے
اپ ڈیٹ 28 مئ 2024 08:27pm

اسلام مخالف بھارتی یوٹیوبر کی جانب سے کی گئی قرآن پاک کی بے حرمتی کی ویڈیو نے سوشل میڈیا پر ہنگامہ کھڑا کردیا ہے، بھارت سمیت دنیا بھر کے مسلمانوں کی جانب سے اس ملعون یوٹیوبر کی گرفتاری کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔

سمیر نامی اس شخص کا تعلق بھارت سے ہے جو پہلے مسلمان تھا اور پھر ہندو مذہب اختیار کرلیا۔

اس متنازع یوٹیوبر کی مبینہ وائرل ویڈیو میں اسے قرآن پاک کے صفحات نذر آتش کرتے اور ان کی بے حرمتی کرتے دیکھا گیا۔

لیکن بھارتی پولیس گرفتاری کے بجائے حیلے بہانوں سے کام لے رہی ہے، اتراکھنڈ اور ہریدوار کی پولیس کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ ان کے حدود میں پیش نہیں آیا اور مذکورہ شخص وہاں نہیں رہتا۔

ویڈیو وائرل ہونے کے بعد سوشل میڈیا صارفین نے اتراکھنڈ پولیس سے یوٹیوبر کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا کیونکہ ان کا خیال تھا کہ وہ اسی گاؤں میں موجود ہے۔

ہریدوار پولیس نے ”ایکس“ پر پوسٹ شئیر کی اور دعویٰ کیا کہ سمیر گزشتہ تین سالوں سے ’پڈلی گرجر‘ نامی جگہ پر رہائش پزیر نہیں، اور ہریدوار ضلع میں کہیں بھی قرآن پاک کی بے حرمتی کا کوئی واقعہ سامنے نہیں آیا۔ تاہم بغیر معلومات اس کیس پر بات نہ کی جائے، ورنہ آپ کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گئی۔

ملعون سمیر کون ہے؟

یہ شخص خود کو سابق مسلمان بتاتا ہے جس کے یوٹیوب پر 2,08,000 سے زائد سبسکرائبرز ہیں۔

رپورٹ کے مطابق سمیر نے اپنا نام بدل کر ہندو نام سدھارتھ چترویدی رکھ لیا ہے۔

Desecration of Quran

Ex Muslim Sameer

Indian Youtuber