Aaj News

بدھ, جولائ 24, 2024  
17 Muharram 1446  

کیپٹل کالنگ کی غیر قانونی تجارت کی مذمت، تمباکو پر ٹیکس بڑھانے کا مطالبہ

سیگریٹ پر یکساں ٹیکس کی آئی ایم ایف کی تجویز معقول ہے، ڈاکٹر شہزاد
شائع 29 مئ 2024 08:14pm

اسلام آباد میں قائم تھنک ٹینک کیپٹل کالنگ نے بین الاقوامی مانیٹری فنڈ (آئی ایم ایف) کی تمباکو مصنوعات چاہے وہ کسی بھی قومی یا غیر ملکی برانڈنگ سے تعلق رکھتی ہوں، ان پر یکساں ٹیکس لگانے کی سفارشات والی رپورٹس کو سراہا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تمباکو کی مصنوعات پر ٹیکس میں 20 فیصد سے زائد اضافے کی سفارش کی اطلاعات حوصلہ افزا ہیں۔

انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی کے ڈاکٹر حسن شہزاد کا کہنا ہے کہ اندازوں سے ظاہر ہوتا ہے کہ آئندہ بجٹ میں تمباکو کی صنعت ٹیکس میں 40 فیصد اضافے سے اچھا کام کر سکتی ہے۔

ڈاکٹر شہزاد کا کہنا ہے کہ متعدد تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اگر سگریٹ کی قیمت میں اضافہ ہوتا ہے تو اس کی طلب کم ہو جاتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کے بڑے شہروں کے سروے کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ تمباکو نوشی کرنے والے ہر 94 میں سے ایک شخص نے اس کی قیمتوں میں اضافے کے بعد تمباکو نوشی ترک کر دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ غیر قانونی تجارت میں اضافہ تشویش کا ایک اور سبب ہے۔

ڈاکٹر شہزاد نے عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے نتائج پر حیرت کا اظہار کیا جس میں کہا گیا ہے کہ ’پاکستان میں (تمباکو مصنوعات کی) غیر قانونی تجارت کی مارکیٹ، کل سگریٹ مارکیٹ کا 9 سے 17 فیصد ہے۔

اس مطالعے کا عنوان ”پاکستان میں سگریٹ کی غیر قانونی تجارت کے واقعات پر مطالعہ: اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری کے لئے ایک کیس اسٹڈی“ ہے۔

اگرچہ تحقیق کے پریشان کن نتائج یہ ہیں کہ ’مجموعی طور پر پاکستان میں سگریٹ کی غیر قانونی تجارت کل تجارت کا 23.1 فیصد ہے۔ ٹیکس اتھارٹی کی مہر کے بغیر مقامی طور پر تیار کردہ سگریٹ کو غیر قانونی مصنوعات سمجھا جاتا ہے اور یہ کل پیکوں کی تعداد کا 10.4 فیصد ہے۔

قائد اعظم یونیورسٹی کے زمان ریسرچ سینٹر کے سربراہ پروفیسر محمد زمان نے محققین کی گفتگو میں کہا کہ پاکستان میں غیر قانونی تجارت کا حجم عالمی اوسط سے دوگنا ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ حکومت کو اس عمل کو روکنے کے لئے اصلاحی اقدامات کرنے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں کام کرنے والی ملٹی نیشنل سگریٹ کمپنیاں دنیا کے مختلف حصوں میں بہت سی غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث پائی گئی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کہ ان میں سے ایک کمپنی کو حال ہی میں اس کے آبائی ملک میں اس طرح کے طریقوں کے لئے بھاری جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔

پروفیسر زمان نے کہا کہ غیر قانونی تجارت اور تمباکو مصنوعات پر کم ٹیکس دونوں صحت عامہ کے ساتھ کھیل رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو ان دونوں نکات پر جلد از جلد کام کرنا چاہئے۔

cigarettes

Tax on Cigarettes

cigarettes tax

Cigarette Brands

Federal Excise Duty on Cigarettes

10 stick Cigarette Pack

Cigarette quitting cause Obesity