Aaj News

اتوار, جولائ 14, 2024  
08 Muharram 1446  

اقتصادی رابطہ کمیٹی نے فاضل چینی کی برآمد کی مشروط اجازت دے دی

پی ایس او سمیت آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے واجبات کی ادائیگی کیلئے 9 ارب روپے جاری کرنے کی بھی منظوری
شائع 13 جون 2024 10:19pm

وفاقی کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے 0.15 ملین میٹرک ٹن فاضل چینی کی برآمد کی مشروط منظوری دیدی ہے، ای سی سی نے پی ایس او سمیت آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے واجبات کی ادائیگی کیلئے 9 ارب روپے جاری کرنے کی تجویز کی منظوری بھی دی، اس کے علاوہ مختلف وزارتوں اور ڈویژنز کیلئے تکنیکی ضمنی گرانٹس کی منظوری بھی دی گئی۔

وفاقی کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس جمعرات کو وفاقی وزیر خزانہ و محصولات سینیٹر محمد اورنگزیب کی زیرصدارت منعقد ہوا۔

اجلاس میں وفاقی وزیر صنعت و پیداور رانا تنویر حسین، وزیر پٹرولیم مصدق مسعود ملک، وزیر بجلی سردار اویس احمد خان لغاری، وزیر مملکت برائے خزانہ علی پرویز ملک، وفاقی سیکرٹریز اور متعلقہ وزارتوں کے سینئر حکام نے شرکت کی۔

اجلاس میں کابینہ ڈویژن کے کسٹم ڈیوٹیز اور ٹیکسوں کی ادائیگی کیلئے 126.848 ملین روپے، ملازمین کے اخراجات کی ادائیگی کے ضمن میں صدارتی سیکرٹریٹ کیلئے 29 ملین روپے، وفاقی ڈائریکٹوریٹ آف امیونائزیشن کیلئے وزارت قومی صحت خدمات کیلئے 5400 ملین روپے، گلگت بلتستان میں تنخواہوں، الاؤنسز، فیملی اسسٹنس پیکجز اور صحت وتعلیم کے مختلف منصوبوں کے ضمن میں وزارت امور کشمیر وگلگت بلتستان کیلئے 4.92 ارب روپے، پاسکو کے زیر التوا واجبات کی ادائیگی کیلئے 6596 ملین روپے کی منظوری دی گئی۔

اس کے علاوہ وزارت ہاؤسنگ اینڈ ورکس کیلئے 370 ملین روپے، نادرا کی جانب سے صومالی آئیڈینٹیفیکیشن سسٹم کے ضمن میں وزارت اقتصادی امور کیلئے 332 ملین روپے، خواتین کی مالی شمولیت کے منصوبہ کی تکمیل کے ضمن میں وزارت خزانہ کیلئے 14250 ملین روپے، آڈٹ مینجمنٹ انفارمیشن سسٹم کے نفاذ کے ضمن میں وزارت خزانہ کیلئے 96.9 ارب روپے، گرین ٹورازم پاکستان پراجیکٹ کے ضمن میں دفاع ڈویژن کیلئے 5 ارب روپے، جاری مالی سال میں شارٹ فال کے ضمن میں وزارت دفاع کیلئے 23.945 ارب روپے، فرنٹیئر کور ہیڈکوارٹرز اور گلگت بلتستان سکاؤٹس ہیڈکوارٹرز کے زیر التوا راشن کے واجبات کی ادائیگی کے ضمن میں وزارت داخلہ کیلئے 10 ارب روپے، تین اضافی کور ہیڈکوارٹرز بنانے کے ضمن میں وزارت داخلہ کیلئے 600 ملین روپے کی منظوری بھی دی گئی۔

وزارت داخلہ کے اضافی فنڈز ضروریات کیلئے 5.986 ملین روپے، پرزن ایڈمنسٹریشن کیلئے نیشنل اکیڈیمی کے قیام کے ضمن میں وزارت داخلہ کیلئے 9.576 ملین روپے، فرنٹیئر کور ہیڈکوارٹرز خیبرپختونخوا کیلئے 87 ملین روپے، سول آرمڈ فورسز کے آپریشنل اور راشن کے زیر التوا واجبات کی ادائیگی کیلئے 4637 ملین روپے اور جاری مالی سال کے نظرثانی بجٹ تخمینہ کے ضمن میں وزارت اقتصادی امور کیلئے 168.83 ارب روپے کی تکنیکی ضمنی گرانٹس کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں وزارت قومی تعلیم کی تجویز پر ہائیر ایجوکیشن کمیشن کو خود مختار اداروں سے بیرونی قرضوں و کریڈٹ کی ری لینڈنگ پالیسی سے مستثنیٰ قرار دینے کی تجویز کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں پٹرولیم ڈویژن کی تجویز پر قیمتوں میں فرق کے تناظرمیں پی ایس اوسمیت آئل مارکیٹنگ کمپنیوں کے واجبات کی ادائیگی کیلئے 9 ارب روپے جاری کرنے کی تجویز کی منظوری دیدی گئی۔

اجلاس میں وزارت صنعت وپیداوار کی تجویز پر 0.15 ملین میٹرک ٹن فاضل چینی کی برآمد کی مشروط منظوری دی گئی۔

ای سی سی نے چینی کی برآمد کو قیمتوں میں اضافہ سے مشروط کردیا ہے، قیمتوں میں اضافہ کی صورت میں چینی کی برآمد کی اجازت واپس لی جائے گی۔

علاوہ ازیں ای سی سی نے ہدایت کی برآمدات سے حاصل ہونے والی رقم کسانوں کے ملوں کے ذمہ واجبات کی ادائیگی کیلئے استعمال میں لائے جانے کی یقینی بنایا جائے۔

اجلاس میں پاورڈویژن کی سمری پر او جی ڈی سی ایل کی جانب سے پاکستان ہولڈنگز کمپنی کو 82 ارب روپے کی مالیاتی سہولت کی ادائیگی کی تجویز کی منظوری دی گئی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اوجی ڈی سی ایل اس انتظام کے ذریعہ حکومت پاکستان کے واجبات کو کلیئر کرے گا۔

Economic coordination committee (ECC)