Aaj News

اتوار, جولائ 14, 2024  
08 Muharram 1446  

لاہور میں اسپتال کے برطرف ملازمین کی صوبائی وزیرِ صحت سے تلخ کلامی

عمران نذیر نے کہا ہم احتجاج کرنے والوں کو دیکھ لیں گے، ساہیوال میں ڈاکٹرز اور خانیول میں نرس کی گرفتاری پر بھی احتجاج
شائع 15 جون 2024 04:35pm

لاہور کے مزنگ ٹیچنگ اسپتال میں وزیر صحت کے دورے کے دوران برطرف ملازمین نے احتجاج کیا۔ احتجاج کرنے والے ملازمین سے صوبائی وزیرِ صحت عمران نذیر کی تلخ کلامی ہوئی۔ صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ احتجاج کرنے والے ملازمین کو ہم دیکھ لیں گے۔

مزنگ ٹیچنگ اسپتال لاہور میں ذیابطیس کلینک کے افتتاح کیلئے وزیر صحت خواجہ عمران نذیر کو مدعو کیا گیا تھا۔ وزیر صحت کی آمد پر اسپتال سے برطرف کئے گئے طبی عملے نے اہل خانہ کے ساتھ احتجاج کیا۔ خواجہ عمران نذیر نے احتجاج پر برہمی کا اظہار کیا۔

ملازمین کا کہنا تھا کہ بے بنیاد الزامات عائد کرکے برطرف کیا گیا۔ اسپتال انتظامیہ کے مطابق ملازمین پر کرپشن کا الزام ہے اور یہ کہ ثبوتوں کی بنیاد پر فارغ کیا گیا ہے۔

ہفتے کو ساہیوال ٹیچنگ ہسپتال میں ڈاکٹرز اور خانیوال میں نرس کی گرفتاری کے خلاف لاہور کے سرکاری اسپتالوں میں ینگ ڈاکٹرز نے ہڑتال کردی۔ میو، سروسز، جناح اور جنرل اسپتال کی اوپی ڈی میں کام بند ہونے سے مریضوں کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا۔ ینگ ڈاکٹرز نے وزیر اعلی مریم نواز سے ڈاکٹرز کی بے عزتی پر معافی مانگنے کا مطالبہ کردیا۔

خانیوال اسپتال میں اسٹاف نرس اقصٰی کی گرفتاری کے خلاف لاہور کے تمام اسپتالوں میں نرسیں بھی سراپا احتجاج ہیں۔ سرکاری اسپتالوں کی او پی ڈی میں کام بند کرنے والی نرسوں نے سی ای او خانیوال کی معطلی تک احتجاج جاری رکھنے کی دھمکی دی ہے۔ محکمہ صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ ڈاکٹرز اور نرسیں احتجاج ختم کرکے فرائض اداکریں تو مذاکرات کیے جائیں گے۔

Imran Nazir

CLASH WIH PROTESTORS

YOUNG DOCTORS ON STRIKE