Aaj TV News

BR100 4,445 Increased By ▲ 25 (0.56%)
BR30 22,731 Increased By ▲ 119 (0.53%)
KSE100 42,505 Increased By ▲ 170 (0.4%)
KSE30 18,046 Increased By ▲ 102 (0.57%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 288,047 747
DEATHS 6,162 9

اسلام آباد ہائیکورٹ نے مختلف سیکٹرز کے متاثرین کو معاوضہ دینے سے متعلق سی ڈی اے سے 18 ستمبر تک تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔چیف جسٹس اطہرمن اللہ نے ریمارکس دیےجب تک آخری متاثرہ شخص کو معاوضہ نہیں مل جاتا تب تک کسی کو کوئی پلاٹ الاٹ نہیں ہو گا۔ زمینوں پر قبضے ہو رہے ہیں اورکرائم بڑھ رہا ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے مختلف سیکٹرز کے متاثرین کو معاوضہ دینے سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیے جتنی ناانصافی اسلام آباد میں ہے اتنی شاید ہی کسی اور جگہ ہو۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی علی نواز اعوان نے بتایاہم جو بھی میٹنگ کرتے ہیں اس میں متاثرین بھی شامل ہوتے ہیں۔سی ڈی اے سے کام لےرہےہیں نادرا سے بیلیٹنگ کرائی جا رہی ہے۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نےریمارکس دیے جو ریونیو افسر متاثرین کی زمین ایکوائر کرتا ہے وہ خود وہاں پلاٹ لیتا ہے۔ وزیراعظم پاکستان اسی مفادات کے ٹکراؤ کی بات کرتے ہیں۔ مفادات کے ٹکراؤ کے علاوہ اسلام آباد میں ہے ہی کچھ نہیں۔ اگر ریونیو افسر کا اپنا کوئی مفاد نہ ہو تو وہ ٹھیک کام کرے گا۔

کیس کی مزید سماعت 18 ستمبر تک ملتوی کر دی گئی۔