Aaj TV News

BR100 4,267 Increased By ▲ 36 (0.86%)
BR30 21,570 Increased By ▲ 180 (0.84%)
KSE100 41,069 Increased By ▲ 262 (0.64%)
KSE30 17,282 Increased By ▲ 122 (0.71%)

بھارتی ریاست تامل ناڈو میں فلموں جیسا ایک واقع پیش آیا ہے جس میں دو بھائیوں نے فلم بنانے کے لیے بکریاں چرانا شروع کر دیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق 30 سالہ وی نرنجن کمار اور ان کے 32 سالہ بھائی لینن کمار بکریاں چرانے کا کام گزشتہ تین برس سے کر رہے تھے۔ ان کے والد ایک فلم بنانا چاہ رہے تھے، انہوں نے دونوں بیٹوں کو نمایاں کرداروں میں لیا تھا تاہم جب مالی بحران کے سبب فلم کی شوٹنگ میں رکاوٹ پیدا ہوئی تو انہوں نے والد کی مالی مدد کے لیے بکریاں چرانا شروع کر دیں۔

فلم بنانے کیلئے بکریاں چوری کرنے والے بھائی پولیس کی حراست میں
فلم بنانے کیلئے بکریاں چوری کرنے والے بھائی پولیس کی حراست میں

** **

مدھاوارام پولیس کا کہنا ہے کہ دونوں بھائیوں کو گرفتار کر لیا ہے۔ دونوں بھائیوں نے آٹھ ہزار روپے جمع کیے تھے، انہوں نے آٹھ سے دس بکریاں چرائیں۔ یہ بھائی تمل ناڈو کے دور دراز علاقوں کا چکر لگاتے اور کھیتوں میں چرنے والے مویشیوں کی تلاش کرتے۔

جب دونوں بھائیوں کو ریوڑ سے دور کوئی جانور ملتا تو وہ اس کو چوری کر لیتے۔ پکڑے جانے کے ڈر سے وہ ایک یا دو جانور چوری کرتے تھے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق مدھاوارام کے علاقے پلانی سے نو اکتوبر کو دونوں بھائیوں نے ایک بکری چرائی۔ تاہم ریورڑ میں چھ مویشی ہونے کی وجہ سے وہ آسانی سے پکڑے گئے۔ چرواہے نے پولیس میں شکایت درج کروائی تھی۔

علاقے کی سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے دونوں بھائیوں کو گرفتار کیا گیا۔ پولیس کی تحقیقات سے معلوم ہوا کہ مقامی افراد کی باقاعدگی سے ایک یا دو بکریاں غائب ہوتی رہی ہیں۔

پولیس نے کہا ہے کہ دونوں بھائیوں کے والد وجے شنکر فلم بنانا چاہتے تھے جس کا عنوان’نی تھان راجہ‘ تھا۔ پہلے تو یہ بھائی چرواہوں سے ملتے تھے اور ان سے تھوڑی رقم کے عوض بکریاں لینے کی کوشش کرتے۔ لیکن پھر انہوں نے اس امید کے ساتھ چوری شروع کی کہ کوئی اپنی ایک یا دو بکریاں چرانے کے بارے میں شکایت درج نہیں کرائے گا۔