Aaj News

پیر, جون 24, 2024  
17 Dhul-Hijjah 1445  

شریف فیملی شوگر ملز کیخلاف کیس واپس لینے پر سپریم کورٹ پنجاب حکومت پر برہم

آپ کیس کیوں واپس لینا چاہتے ہیں؟ عدالت کا سوال
شائع 10 فروری 2023 02:22pm
سپریم کورٹ آف پاکستان
سپریم کورٹ آف پاکستان

سپریم کورٹ نے شریف فیملی شوگر ملز کیخلاف کیس واپس لینے پر پنجاب حکومت پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔

جسٹس اعجاز الاحسن کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے شریف فیملی شوگر ملوں کی کپاس کے علاقوں میں منتقلی کے خلاف دائر درخواستوں پر سماعت کی۔

پنجاب حکومت نے سپریم کورٹ میں دائر درخواستیں واپس لینے کی استدعا کی جس پر سپریم کورٹ برہم ہوگئی۔

جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے پوچھا کہ آپ کیس کیوں واپس لینا چاہتے ہیں؟۔

نمائندہ پنجاب انڈسٹریز اینڈ کامرس ڈیپارٹمنٹ نے جواب کہاکہ شوگر ملوں کی منتقلی کا مسئلہ حل ہو چکا ہے، ملوں کو اجازت دے دی گئی ہے۔

جسٹس مظاہر علی اکبر نے کہا کیا عدالتیں پنجاب حکومت چلاتی ہے، زیر التواء مقدمہ پر پنجاب حکومت کیسے خط لکھ کر واپس لے سکتی ہے، فوری اس خط کو واپس لیں۔

وکیل اشرف شوگر مل امتیاز صدیقی نے کہا کہ شوگر ملوں نے کرشنگ شروع کردی ہے جس کے خلاف توہین عدالت کی درخواستیں بھی زیر التواء ہیں۔

وکیل طارق رحیم جے ڈی ڈبلیو شوگر مل نے کہا میں نے کیس میں کچھ دستاویزات لگائی ہیں مجھے نئی درخواست کے جائزہ کی اجازت دی جائے۔

سپریم کورٹ نے وکیل طارق رحیم کی استدعا پر کیس کی مزید سماعت 28 فروری تک ملتوی کردی۔

Supreme Court

sugar mills

اسلام آباد

Justice Ijaz ul Ahsan

Sharif Family