Aaj News

پیر, جولائ 22, 2024  
15 Muharram 1446  

3 کشمیریوں کو تشدد سے قتل کرنیوالے بھارتی فوجیوں کو بچانے کی کوششیں

ضلع پونچھ کے علاقے سے اٹھائے گئے 8 شہریوں پر بے رحمانہ تشدد کیا گیا تھا
اپ ڈیٹ 05 اپريل 2024 05:08pm

بھارتی سرکار نے تین کشمیریوں کو تشدد سے شہید کرنے والے 2 فوجیوں کو بچانے کے لیے اعلیٰ ترین سطح پر کوششیں شروع کردی ہیں۔

قتل کے واقعے کے خلاف مقبوضہ کشمیر میں مظاہرے ہو رہے ہیں۔ اور اب بھارتی وزیر دفاع نے مقتولین کے اہلخانہ پر دباؤ ڈالنے کے لیے ان سے ملاقات کی ہے۔

دسمبر 2023 میں مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج پر حملے کے الزام میں بھارتی فوجی نے ضلع پونچھ کے علاقے سے 8 شہریوں کو اٹھایا تھا، جہاں ان پر بے رحمانہ تشدد کیا گیا۔

شدید زخموں کے باعث 3 کشمیری جاںبحق ہو گئے تھے، بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق آپریشن کے دوران کئی سنجیدہ غلطیاں بھارتی فوج کی جانب سے کی گئی ہیں۔

شہریوں کی موت کی خبر کے بعد ضلع بھر میں احتجاج کا سلسلہ شروع ہوگیا، اس حوالے سے کشمیریوں کے احتجاج کو روکنے کے لیے کٹ پتھلی حکومت کی جانب سے واقعے کا نوٹس لینے کا سیاسی بیان بھی دیا گیا ہے، تاہم کشمیریوں کی جانب سے شدید احتجاج کیا جا رہا ہے۔

دوسری جانب لواحقین، اہلخانہ اور مظاہرین کی جانب سے بھارتی فوج سے مطالبہ کیا جا رہا ہے کہ قتل کیے گئے تمام ناحق کشمریوں کے خلاف دہشتگردی کے ثبوت پیش کیے جائیں۔

جبکہ بھارتی کے 2 سینئر افسران کے خلاف ڈسپلنری اور ایڈمنسٹریٹو ایکشن کی تجاویز دی گئی ہیں۔ تاہم کشمیریوں کی جانب سے اسے سیاسی ڈرامہ بازی قرار دیا جا رہا ہے۔

ابتدائی تحقیقات میں ایڈمنسٹریٹو خرابیاں اور راشٹریا رائفلز کے سیکٹر 13 کے بریگیڈ کمانڈر اور کمانڈنگ افسر کی جانب سے کوتاہیاں سامنے آئی ہیں۔

لیکن بھارتی حکام کا کہنا ہے کہ دونوں افسران براہ راست ملوث نہیں تھے، کیونکہ بریگیڈ کمانڈر وہاں موجود نہیں تھے جبکہ کمانڈنگ افسر چھٹیوں پر تھے۔

دوسری جانب کشمیریوں سے کیے جانے والے سلوک پربھی بھارتی فوج کا چہرا کھل کر سامنے آ گیا ہے۔ تاہم بھارتی فوج اس سب میں معاملے کو ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرانے کی ذمہ داری قرار دے رہا ہے، اس سے دونوں افسران کو سخت سزائیں نہیں مل سکیں گی۔

دونوں افسران کے خلاف سوٹ ایبل ڈسپلنری ایکشن کی تجاویز زیر غور ہیں۔

جبکہ بھارتی میڈیا کے مطابق انکوائری آخری مرحلے میں داخل ہو چکی ہے، جہاں آرمی رول 180 کو مدنظر رکھا گیا ہے۔

احتجاج پر قابو پانے میں ناکامی کے بعد وزیر دفاع راجناتھ سنگھ اور آرمی چیف منوج پانڈے نے 3 جاں بحق افراد کے اہلخانہ سے ملاقات بھی کی ہے۔

india

Indian occupied Kashmir

Indian Army

Army Officer

Died

civilians killed