Aaj News

ہفتہ, جون 15, 2024  
08 Dhul-Hijjah 1445  

روس نے کرپشن پر حاضر سروس فوجی افسر کو گرفتار کر لیا

اس سے قبل 3 فوجی افسران کو گرفتار کیا جا چکا ہے
شائع 24 مئ 2024 03:18pm
تصویر بذریعہ: روئیٹرز/ فائل فوٹو/ لیفٹیننٹ جنرل ودام شاماین
تصویر بذریعہ: روئیٹرز/ فائل فوٹو/ لیفٹیننٹ جنرل ودام شاماین

روس اگرچہ یوکرین جنگ کے باعث عالمی میڈیا کی توجہ حاصل کر رہا ہے، تاہم ان دنوں فوجی جرنیلوں کے حوالے سے بھی توجہ خوب سمیٹ رہا ہے۔

حال ہی میں روس کی جانب سے اعلیٰ فوجی افسر کی گرفتاری کی خبر سامنے آئی ہے، جس نے دیگر فوجی افسران کو بھی پریشان کر دیا ہے۔

الجزیرہ کے مطابق روسی فوج کے لیفٹیننٹ جنرل وادم شامارین کو رشوت مبینہ طور پر رشوت لینے اور کرپشن کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

واضح رہے لیفٹیننٹ جنرل ودام روسی فوج کے چوتھے جرنیل ہیں، جنہیں گرفتار کیا گیا ہے۔

روسی وزارت دفاع کے مین کمیونیکیشن ڈائریکٹوریٹ کے عہدے پر موجود فوجی افسر کو 2 ماہ کے لیے جیل کی سزا سنائی گئی ہے۔

سرکاری ایجنسی کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل شارامین کی گرفتار دیگر فوجی گرفتاریوں کا ہی تسلسل ہے، جنہیں کرپشن اور ملٹری کانٹریکٹس میں خرد برد کے الزام میں سزا سنائی گئی ہے۔

اس سے قبل رواں ماہ میجر جنرل ایوان پوپو جو کہ سابق کمانڈر برائے جارحیت یوکرین کے لیے تعینات تھے، اور لیفٹیننٹ جنرل یوری کوزنیتسو کو بھی رشوت کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

russia

Arrested

Army Officer

Bribery

CORRUPTIOIN