Aaj News

ہر بچہ اپنی مکمل صلاحیتوں تک پہنچنے کے موقع کا مستحق ہے: ملالہ

مشترکہ امید ہے کہ ہر بچہ اسکول جا سکے، خواتین معاشرے میں مکمل طور پر حصہ لے سکیں، ملالہ
اپ ڈیٹ 29 جولائ 2022 07:03pm
<p>تصوری: ٹوئٹر/برمنگھم کامن گیمز</p>

تصوری: ٹوئٹر/برمنگھم کامن گیمز

کم عمر ترین نوبل امن انعام یافتہ نوجوان ملالہ یوسفزئی کا کامن ویلتھ گیمز 2022 کی افتتاحی تقریب میں کہنا تھا کہ ہر بچہ اپنی پوری صلاحیت تک پہنچنے اور اپنے خوابوں کو پورا کرنے کے موقع کا مستحق ہے۔

الیگزینڈر اسٹیڈیم میں تقریب کے آغاز پر اپنے خطاب میں ملالہ نے کہا کہ “آج رات، 72 ممالک کی ٹیمیں سرحد پار دوستی کا جشن منانے کے لیے برمنگھم میں ملیں گی۔”

کامن ویلتھ گیمز 2022 میں پانچ ہزار سے زائد کھلاڑی اگلے 10 دنوں میں 19 کھیلوں کے 280 مقابلوں میں حصہ لیں گے، جن میں پیرا سپورٹس پروگرام بھی شامل ہے جسے گیمز میں ضم کیا گیا ہے۔

پاکستانی خواتین کرکٹ ٹیم کی کپتان بسمہ معروف اور ریسلر انعام بٹ نے افتتاحی تقریب کے لیے 132 کھلاڑیوں کے دستے کی قیادت کی۔

برمنگھم میں مقیم 25 سالہ ملالہ نے کہا کہ حصہ لینے والے ایتھلیٹس لاکھوں لڑکیوں اور لڑکوں کی نمائندگی کرتے ہیں اور مستقبل کے لیے مشترکہ امید کہ ہر بچہ اسکول جا سکے، خواتین معاشرے میں مکمل طور پر حصہ لے سکیں اور جہاں خاندان امن اور وقار کے ساتھ رہیں۔

انہوں نے شہر میں اپنے سفر اور لوگوں کی جانب سے ان کے خاندان کی مدد کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ “برمنگھم میں خوش آمدید کہنا میرے لیے اعزاز کی بات ہے۔”

2012 میں ملالہ کو طالبان کی جانب سے سر میں گولی ماری گئی تھی، تاہم وہ حملے میں بچ گئیں۔

انہیں خواتین کی تعلیم سے انکار کرنے کی طالبان کی کوششوں کے خلاف مہم کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

اس کے بعد وہ تعلیم کی وکالت کے لئے نوبل امن انعام کی سب سے کم عمر وصول کنندہ بن گئیں۔

ملالہ یوسف زئی، جو جبر کا سامنا کرنے والی خواتین کی عالمی علامت بن چکی ہیں، نے اس موقع پر نیلے رنگ کی شلوار قمیض پہنی۔

birmingham

Commonwealth Games

Malala Yousufzai

Comments are closed on this story.

مقبول ترین