Aaj News

ہفتہ, اپريل 20, 2024  
11 Shawwal 1445  

بیجنگ میں امریکی سفیر چینی ہیکرز کے ہتھے چڑھ گئے

۔مائیکروسافٹ سسٹم میں خامیاں، اقدام نے واشنگٹن کوحیران کردیا
شائع 21 جولائ 2023 09:03am

بیجنگ میں تعینات امریکی سفیر کو چینی سائبر حملے کا نشانہ بن گئے۔مائیکروسافٹ سسٹم میں خامیوں کا فائدہ اٹھاتے ہوئے نکولس برنز کی ای میلز مبینہ طور پر ہیک کی گئیں۔

بیجنگ میں امریکی سفیر نکولس برنز مبینہ طور پر ان امریکی عہدیداروں میں سے ایک تھے جن کی ای میلز کو حالیہ چینی ہیکنگ حملے میں حاصل کیا گیا، اس سائبرحملے نے واشنگٹن کو حیران کردیا تھا۔

وال اسٹریٹ جرنل کی رپورٹ کے مطابق ایک اور ہدف مشرقی ایشیا کے لیے معاون وزیر خارجہ ڈینیئل کریٹن برنک تھے۔

گزشتہ ہفتے جب پہلی بار اس حملے کا انکشاف ہوا تھا تو انتظامیہ نے اعتراف کیا تھا کہ سیکریٹری کامرس جینا ریمنڈو کا ای میل اکاؤنٹ بھی ہیک کیا گیا تھا۔ امریکی حکام کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ یہ تینوں سب سے بڑے اہداف تھے لیکن مجموعی طور پر لاکھوں سرکاری ای میل اکاؤنٹس کی خلاف ورزی کی جا سکتی تھی۔

اس رپورٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے پوچھے جانے پر محکمہ خارجہ کے ایک ترجمان نے کہا: ”سیکورٹی وجوہات کی بنا پر، ہم اس وقت اس سائبر سیکورٹی واقعے کی نوعیت اور دائرہ کار کے بارے میں اضافی معلومات کا اشتراک نہیں کریں گے“۔

ترجمان نے کہا کہ محکمہ مسلسل ہمارے نیٹ ورکس پر تشویش کی سرگرمیوں کی نگرانی کرتا ہے اور ان کا جواب دیتا ہے۔ ہماری تحقیقات جاری ہیں اور ہم اس وقت مزید تفصیلات فراہم نہیں کر سکتے۔

یہ واضح نہیں ہے کہ امریکی حکومت کی حساس معلومات پر کتنا سمجھوتہ کیا گیا ۔

جریدے کے مطابق وزیر خارجہ انٹونی بلنکن کی ای میل کی خلاف ورزی نہیں کی گئی اور نہ ہی ان کے مشیروں کے اندرونی حلقے کی ای میل کی خلاف ورزی کی گئی۔ تاہم کریٹن برنک گزشتہ ماہ چین کے دورے کے دوران وزیر خارجہ کے ہمراہ تھے اور برنز نے اس دورے کے دوران ملک کے رہنما شی جن پنگ اور دیگر سینئر چینی حکام کے ساتھ ملاقاتوں میں بھی شرکت کی تھی۔

یہ ممکن ہے کہ ہیکرز نے ان ملاقاتوں کے لئے امریکی تیاریوں اور ان کے بارے میں داخلی مباحثوں تک رسائی حاصل کی ہو۔

کمپنی کا کہنا ہے کہ امریکی انٹیلی جنس حکام اس سائبر حملے کی چوری اور نفاست سے حیران رہ گئے جس نے مائیکروسافٹ کے کلاؤڈ کمپیوٹنگ ماحول میں ایک خامی کا فائدہ اٹھایا ،تاہم اس خامی کو بعد میں ٹھیک کردیا گیا۔

مائیکروسافٹ نے حملہ آوروں کی شناخت چینی گروپ اسٹورم 0558 کے طور پر کی ہے، جسے اس نے ”وسائل سے لیس“ اور ”جاسوسی پر مرکوز“ قرار دیا ۔

Beijing

US Ambassador

Chinese cyber attack

Nicholas Burns

Comments are closed on this story.

تبصرے

تبولا

Taboola ads will show in this div