Aaj TV News

BR100 4,846 Increased By ▲ 46 (0.97%)
BR30 24,817 Increased By ▲ 124 (0.5%)
KSE100 45,175 Increased By ▲ 231 (0.51%)
KSE30 18,470 Increased By ▲ 87 (0.47%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 854,240 4109
DEATHS 18,797 120
Sindh 290,756 Cases
Punjab 316,334 Cases
Balochistan 23,186 Cases
Islamabad 77,684 Cases
KP 123,150 Cases

مدینہ منورہ میں‌ بسنے والے مسلمانوں کے لیے ماہ صیام کی آمد کے ساتھ اور ماہ مقدس کے موقعے پر ایک روٹی کی بھی خاص نسبت ہے۔ مقامی لوگ اسے 'الشریک' کا نام دیتے ہیں۔

ماہ صیام میں عصر کے بعد بالخصوص افطاری سے کچھ قبل 'الشریک' کے حصول کے لیے بیکریوں‌ پر شہریوں کا رش بڑھ جاتا ہے۔ 'الشریک' کو رمضان بالخصوص افطار کے وقت کی مرغوب اور پسندیدہ غذا قرار دیا جاتا ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے کہ 'الشریک' کے حصول کے لیے آپ مدینہ منورہ کے لوگوں کو افطاری سے قبل لائنوں میں کھڑا دیکھیں گے۔ بہت سے لوگوں کا خیال ہے کہ 'الشریک' کے بغیر افطار دسترخوان ادھورا رہتا ہے۔

مدینہ منورہ کی تاریخ پر گہری نظر رکھنے والے انجینیر حسان طاھر نے 'العربیہ ڈاٹ نیٹ' سے بات کرتے ہوئے کہا کہ 'الشریک' جیسی روٹی کی رمضان المبارک کے ساتھ خاص نسبت ہے۔ اس کی اپنی ایک خاص پہچان، ذائقہ، رونق اور تاثیر ہے جس کی وجہ سے اسے ماہ صیام میں روزہ داروں کی پسندیدہ روٹی قرار دیا جاتا ہے۔

انہوں‌ نے مزید کہا کہ الشریک نام کی روٹی دو طرح سے تیار کی جاتی ہے۔ ایک قسم کی روٹی کو مائیکرو ویو اون میں میں تیار کیا جاتا ہے۔ اس کے لیے آٹا، دودھ، ملائی اور یگر چیزیں استعمال کی جاتی ہیں جب کہ دوسری قسم کی روٹی لکڑی کے چولہے یا کوئلوں پر تیار کی جاتی ہے۔

انجینیر حسان طاھر نے کہا کہ مدینہ منورہ کے شہری زیادہ تر دودھ اور مکھن سے 'الشریک' پکاتے ہیں۔ یہ شکل میں گول ہوتی ہے اور اس کے درمیان ایک بڑا خلا ہوتا ہے۔