Aaj TV News

BR100 4,607 Decreased By ▼ -61 (-1.3%)
BR30 20,274 Decreased By ▼ -618 (-2.96%)
KSE100 44,629 Decreased By ▼ -192 (-0.43%)
KSE30 17,456 Decreased By ▼ -66 (-0.38%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,265,650 603
DEATHS 28,300 20
Sindh 466,154 Cases
Punjab 438,133 Cases
Balochistan 33,133 Cases
Islamabad 106,504 Cases
KP 176,950 Cases

مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے سب سے بڑا مسئلہ چیئرمین نیب کی مدت میں توسیع ہے، حکومت کی کوشش ہے، اسی چئیرمین کو استعمال کرکے اپوزیشن کو ڈرا دھمکا سکیں۔

کراچی احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا معاملہ وہی ہے نیب کے معاملات میں کیمرے لگائیں اور دکھائیں کونسی چوری ہے، سب سے بڑا مسئلہ چیئرمین نیب کی مدت میں توسیع ہے قانون واضح ہے کہ مدت میں توسیع نہیں ہوسکتی ہے ۔

انہوں نے کہا حکومت کی کوشش ہے انہی چئیرمین کو استعمال کر کے اپوزیشن کو ڈرا دھمکا سکیں، انہیں ایسا اندھا چئیرمین نیب چاہیے جس کو حکومتی اداروں کی کرپشن کی نظر نہیں آئے، اس چئیرمین نیب کے خلاف سپریم کورٹ جائیں گے۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ مہنگائی ہے، بے روز گاری ہے، غربت بڑھتی جارہی ہے، حکومت کی جانب سے ٹیکس لگانے پر کہا یہ کیسے ممکن ہے پیٹرول سمیت ہر چیز کی قیمت بڑھائیں اور پھر ٹیکس بھی لگائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان نے کبھی عوام کی بات نہیں کی، وہ صرف امریکی صدر جوبائیڈن کی بات کرتے ہیں کہ اس نے کال نہیں کی۔

حکومت پر تنقید کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا ان کی ریکوری صفر ہے،اس چیئرمین نیب کے دور میں حکومت کے آٹھ دس ارب براڈ شیٹ میں نکل گئے، افغانستان پر ملک کی پالیسی پر پارلیمان کو اعتماد میں لیا گیا ہے، ہمیں کوئی حق نہیں ہے افغانستان میں فریق بنیں وہاں کی عوام کی مدد کرنے چاہیے۔

انہوں نے کہا شوکاز نوٹس کسی کو ایسے جاری نہیں ہوتے ہیں دیکھا جاتا ہے، اختلاف رائے مسلم لیگ ن کا حسن ہے۔