Aaj TV News

BR100 4,623 Increased By ▲ 6 (0.12%)
BR30 17,917 Increased By ▲ 191 (1.08%)
KSE100 45,078 Decreased By ▼ -5 (-0.01%)
KSE30 17,793 Decreased By ▼ -35 (-0.2%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,410,033 7,963
DEATHS 29,219 27
Sindh 538,196 Cases
Punjab 474,208 Cases
Balochistan 34,277 Cases
Islamabad 125,203 Cases
KP 190,578 Cases

سیالکوٹ واقعہ، ایک اور ملزم امتیاز عرف بَلی گرفتار

سیالکوٹ میں سری لنکن انجنئر پرتشدد اور لاش کی بے حرمتی میں شامل ایک اور ملزم امتیاز عرف بَلی کو گرفتار کرلیا گیا۔ گرفتار ملزمان کی تعداد ایک سو بتیس ہوگئی۔

گوجرانوالہ انسداد دہشتگردی کی عدالت نے چھبیس ملزمان کو پندرہ روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا گیا جبکہ مقتول پریانتھا کمارا کی میت سری لنکا پہنچادی گئی ۔

پولیس نے ملزم امتیاز عرف بَلی کو راولپنڈی فرار ہوتے ہوئے گرفتار کرلیا۔

گرفتار ملزمان کی تعداد ایک سو بتیس ہوگئی، مزید ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے جاری ہیں۔

سیالکوٹ میں قتل کیے گئے انجنئر پریانتھا کمارا کی میت سری لنکا پہنچادی گئی ہے۔

چھبیس ملزمان کو گوجرانوالہ کی انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت نے ملزمان کو پندرہ روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردیا۔

پولسن کا کہنا ہے کہ ویڈیوز مںک زیرحراست ملزمان کو ڈنڈے اٹھائے اورتشدد کی پلاننگ کرتے دیکھا گاز، واقعہ کا مقدمہ 900 نامعلوم افراد کخلا ف دہشت گردی سمتا دیگر دفعات کے تحت درج ہے۔

سانحہ سیالکوٹ نے ہمارا سر شرم سے جھکا دیا ملزمان کو قرار واقعی سزا یقینی بنائی جائے، وزیراعظم

دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے سانحہ سیالکوٹ کی تحقیقاتی رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سانحہ سیالکوٹ نے ہمارا سر شرم سے جھکا دیا ملزمان کو قرار واقعی سزا یقینی بنائی جائے۔

وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں ملک میں امن و مان سے متعلق اجلاس ہوا، جس میں وفاقی وزراء سمیت متعلقہ حکام نے شرکت کی۔

اجلاس میں وزیراعظم کو سانحہ سیالکوٹ کے حوالے سے صورتحال پر بریفنگ دی گئی جبکہ ملزمان کے ٹرائل کے حوالے سے مختلف پہلوؤں پر غور ہوااورسیکیورٹی خدشات کی بنیاد پر ٹرائل جیل میں کرنے تجویز پر بھی غور کیا گیا۔

سیالکوٹ واقعے اور کارروائی پر پنجاب حکومت کی پیش رفت رپورٹ وزیر اعظم عمران خان کو پیش کی گئی۔ رپورٹ کے مطابق ابتک مرکزی ملزمان سمیت 118 افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔

وزیراعظم عمراخان نے تحقیقاتی رپورٹ پر اطمینان کا اظہار کیااورکہا کہ سانحہ سیالکوٹ نے ہمارا سر شرم سے جھکا دیا ہے،واقعے میں ملوث افراد کسی رعایت کے مستحق نہیں۔

وزیراعظم نے ملوث افراد کیخلاف پراسیکیوشن سخت کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان کو قرار واقعی سزا یقینی بنائی جائے۔

یاد رہے کہ 3 دسمبر کو سیالکوٹ میں وزیر آباد روڈ پر فیکٹری ورکرز نے سری لنکن مینیجر پریانتھا کمارا کو توہین مذہب کے الزام میں بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنا کر قتل کیا اور پھر لاش کو نذر آتش کردیا تھا۔

پنجاب پولیس نے اب تک واقعے میں ملوث 131ملزمان کو سی سی ٹی وی فوٹیج اور موبائل ویڈیوز کی مدد سے شناخت کر کے گرفتار کرلیا۔