Aaj News

رانا ثناء اللہ نے ناراض کسان رہنماؤں کو مسائل کے حل کی یقین دہانی کرادی

کسان رہنماؤں کے مطالبات کو سنجیدگی سے لیا جائے گا: وفاقی وزیر داخلہ
شائع 29 ستمبر 2022 06:24pm
<p>بجلی کے بلوں کو موخر کیا جائے۔ فوٹو — اسکرین گریب</p>

بجلی کے بلوں کو موخر کیا جائے۔ فوٹو — اسکرین گریب

اسلام آباد: وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کسان اتحاد کے وفد سے ملاقات کی۔

ملاقات میں کسان اتحاد کے وفد نے وزیر داخلہ کو اپنے مطالبات پیش کرتے ہوئے کہا کہ مہنگی بجلی سے زراعت متاثر ہوری ہے لہٰذا بجلی کے بلوں کو موخر اور ان کے ٹیرف پر نظر ثانی کی جائے۔

وفد کے مطالبات پر رانا ثنا اللہ نے مسائل کے حل کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ کسان رہنماؤں کے مطالبات کو سنجیدگی سے لیا جائے گا۔

گزشتہ روز سے اسلام آباد کے خیابان چوک پر کسان اتحاد کا دھرنا جاری ہے۔

واضح رہے کہ کسان 20 ستمبر اسلام آباد کے ایف نائین پارک پہمچے تھے جہاں انہوں نے حکومت سے کھاد کی بلیک مارکیٹنگ کو روکنے کا بھی مطالبہ کیا تھا۔

مظاہرین نے مطالبہ کیا تھا کہ سیلاب زدہ علاقوں میں کھاد بیج اور ڈیزل مفت فراہم کیا جائے، دودھ کی قیمتیں بڑھائی جائیں جب کہ گندم کی قیمت چار ہزار روپے، گنے کی 400 قیمت روپے فی من مقرر اور زراعت کو صنعت کا درجہ دیا جائے۔

کسانوں کی جانب سے کیے گئے مطالبات پر وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کسانوں کو 28 ستمبر کو وزیراعظم سے ملاقات کی یقین دہانی کرواتے ہوئے جائز مطالبات کی منظوری کا عندیہ دیا تھا تاہم ملاقات نہ ہونے کی صورت میں کسانوں نے ایک بار پھر گزشتہ روز اسلام آباد کا رُخ کرلیا تھا۔

اسلام آباد

Rana Sanaullah

Electricity Tariff

Farmer Protest

Comments are closed on this story.