Aaj News

فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور، اہلیہ کی نگراں وزیراعلیٰ سے اپیل

جو میں نے کہا ہے میں اس پر قائم ہوں، فواد چوہدری

عمران خان کا چیف جسٹس کو خط، دوران حراست فوادچوہدری کےآئینی حقوق کے تحفظ کی اپیل

فواد چوہدری کا مزید دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا گیا

’فواد کو دہشتگرد کی طرح عدالت لانا حکومتی انتقام کا لیول ظاہر کرتا ہے‘

جو میں نے کہا ہے میں اس پر قائم ہوں، فواد چوہدری

محسن نقوی میرے بچوں کو والد سے ملنے دیں، فواد کی اہلیہ کی اپیل

فواد چوہدری کی اہلیہ کی کارکنان سے ایف 8 کچہری جمع ہونے کی اپیل

فواد چوہدری کو لاہور ہائیکورٹ پیش نہ کرنے پر توہین عدالت کی درخواست دائر

فواد چوہدری اور فیملی سے احترام کا رشتہ ہے، پرویزالٰہی نے ایک بار پھر معذرت کرلی

عمران خان کو کچھ ہوا تو ذمہ داری راناثناء پر ہوگی، شبلی فراز

’میں اکیلی ہی کافی ہوں‘ فواد چوہدری کی اہلیہ کا مخالفین کو چیلنج

الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے کا کیس: فواد چوہدری کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد

پولیس کی گاڑیاں روکنے پر پی ٹی آئی رہنما فرخ حبیب کیخلاف مقدمہ درج

فواد چوہدری کی پیشی کے موقع پرایف ایٹ کچہری کے مناظر

ڈالر مہنگا ہونے کے بعد گیس، بجلی سمیت ہر چیز مہنگی ہوگی، حماد اظہر

فواد چوہدری کی گرفتاری کا معاملہ سینیٹ میں پہنچ گیا

کیا لوگوں کو دھمکیاں دینا جمہوریت ہے؟ فرخ حبیب کیخلاف بھی مقدمہ ہونا چاہیے، احمد خان

عمران خان نے آنے والی نسلوں کیلئے مافیاز سے ٹکر لی ہے، مسرت جمشید چیمہ

اہلیہ نے ہتھکڑیاں لگے فواد چوہدری کے ساتھ تصویر شیئرکردی

فواد چوہدری کو توہین الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس بھیجنے کا فیصلہ

عمران خان کی گرفتاری کا خدشہ، کارکنوں نے زمان پارک کے باہر ڈیرے ڈال لیے

فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور، سی ٹی ڈی ہیڈ کوارٹر منتقل

پمز اسپتال کے ڈاکٹرز نے فواد چوہدری کو تندرست قرار دیدیا

فواد کی گرفتاری، ’عمران خان بھی ذہنی طور پر تیار ہیں‘

صدر عارف علوی اور مشتعل کارکنان عمران خان کی رہائش گاہ پہنچ گئے

حکومتی مظالم کیخلاف فوری عدالتوں سے رجوع کریں، پرویز الٰہی کا عمران خان کو مشورہ

نہیں لگتا محسن نقوی الیکشن کرائیں گے، عدلیہ پر بڑی ذمہ داری آنے والی ہے، عمران خان

عمران خان کی سکیورٹی کم کرنے کا امکان، کارکنان کو زمان پارک پہنچنے کی ہدایت

ہمیں سیاسی بدلہ لینا ہوتا تو تمام پی ٹی آئی قیادت جیل میں ہوتی، مریم اورنگزیب

امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتار نہیں کر سکتی، عمران خان

جہلم میں فواد چوہدری کے بھائی کو گرفتار کرلیا گیا

’پرویزالہٰی کو آپ نےخود ذبح کیا ہے ہم نے نہیں‘

’اس وقت جٹ برادری کا وقت اچھا نہیں ہے‘

فواد چوہدری کا طبی معائنہ: رپورٹس نارمل، تشدد کے نشان نہیں پائے گئے

فواد کی اسلام آباد منتقلی، پی ٹی آئی کارکن پولیس کے پیچھے پڑگئے

فواد چوہدری کی گرفتاری جلتی پر پیڑول کا کام کرے گی، شیخ رشید

فواد چوہدری کی گرفتاری پر مونس الٰہی کا تبصرہ

فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ منظور، اسلام آباد لے جانے کی اجازت

پی ٹی آئی کو عمران خان کی گرفتاری کا خدشہ، زمان پارک پر کارکنوں کی بڑی تعداد موجود

محسن نقوی نے بغیر کسی تاخیر کام شروع کردیا، شاہ محمود قریشی

’یہ گرفتاری نہیں اغواء ہے‘، فواد چوہدری کی اہلیہ کا ردعمل

فواد چوہدری کی گرفتاری لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج

’عوام ایوانوں کا رُخ کرکے اپنا حق چھین لے‘

فواد چوہدری کو گرفتاری کے بعد کہاں رکھا گیا، حماد اظہرنے لائیولوکیشن شیئرکردی

الیکشن کمیشن حکام کو دھمکیاں دینے پر فواد چوہدری لاہور سے گرفتار

فواد چوہدری کی گرفتاری پر اسلام آباد پولیس کا مؤقف

فواد چوہدری نے علی الصبح گرفتاری سے قبل کون سی ویڈیو شیئرکی

شائع 28 جنوری 2023 07:45pm

عمران خان کا چیف جسٹس کو خط، دوران حراست فوادچوہدری کےآئینی حقوق کے تحفظ کی اپیل

<p>فوٹو — فائل</p>

فوٹو — فائل

لاہور: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس عمر عطاء بندیال کو کو خط لکھ دیا ہے۔

عمران خان نے اپنے خط کے ذریعے چیف جسٹس سے دوران حراست فواد چوہدری کے آئینی حقوق کے تحفظ کی اپیل کردی ہے۔

خط میں پی ٹی آئی چیئرمین نے اعظم سواتی اور شہباز گل سے غیر انسانی سلوک کا حوالہ دیتے ہوئے لکھا کہ تشدد یا بے توقیری آئین کے آرٹیکل 9، 10اے اور 14 کی خلاف ورزی ہے۔

اپ ڈیٹ 28 جنوری 2023 06:28pm

فواد چوہدری کا مزید دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا گیا

<p>فوٹو — اسکرین گریب</p>

فوٹو — اسکرین گریب

اسلام آباد کی مقامی عدالت نے الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے کے کیس میں پولیس کی جانب سے درخواست پر فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا۔

جوڈیشل میجسٹریٹ وقاص راجا نے فوادچوہدری کے خلاف مقدمہ خارج کرنےکی درخواست مسترد کرتے ہوئے پولیس کی استدعا پر پی ٹی آئی گرفتار رہنما کا جسمانی ریمانڈ سے متعلق محفوظ فیصلہ سنایا اور انہیں پیر کو عدالت پیش کرنے کا حکم دیا۔

اس سے قبل پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد حسین چوہدری کو عدالتی حکم پر سوا گنٹے کی تاخیر کے بعد ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد چہرے پر کپڑا ڈال کر پہنچایا گیا۔

فیصل چوہدری نے عدالت سے فواد چوہدری کی ہتھکڑی کھولنے کی استدعا کی، جس پر فواد چوہدری کے وکیل بابر اعوان نے سوال کیا چابی ادھر ہی ہے یا مانگ کر لائیں گے؟ جس پر عدالت نے فواد چوہدری کی ہتھکڑیاں کھولنے کاحکم دیا۔

جو میں نے کہا ہے میں اس پر قائم ہوں، فواد چوہدری

اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیشی کے دوران پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ آزادی اظہار رائے میرا حق نہیں، اس کا مطلب ملک میں جمہوریت نہیں ہے۔

فواد چوہدری کا عدالت کے روبرو کہنا تھا کہ طاقتور لوگ سمجھتے ہیں ان پر تنقید کرنا ریاست سے غداری ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جو میں نے کہا ہے میں اس پر قائم ہوں، جو باتیں کیں ان کو مانتا ہوں اور کہتا ہوں کہ یہ میرا حق ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ طاقت ور لوگ سمجھتے ہیں ان پر تنقید درحقیقت غداری ہے، تاریخ اس بات کا تعین کرے گی کہ کون درست تھا اور کون غلط۔

انہوں نے کہا کہ میں منہ پر اچھا اچھا کہوں اور باہر جا کر گالیاں دوں یہ کونسی عزت ہے، اگر چیف الیکشن کمشنر تنقید نہیں لے سکتے تو آپ اس طرح کے عہدے نہ لیں۔

اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹس نے پولیس کی اپیل پر فواد چوہدری کو طلب کرتے ہوئے ساڑھے 12 بجے تک پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد میں فواد چوہدری کیس پر سماعت جاری ہے، جسٹس طاہر محمود خان پولیس کی ریمانڈ مسترد کرنے کی نظرثانی درخواست پر سماعت کر رہے ہیں۔

فواد کو مقدمہ سے ڈسچارج کرنے کی درخواست دائر

دورانِ سماعت فواد چوہدری کے وکلاء نے مقدمہ سے ڈسچارج کرنے کی درخواست دائر کردی، عدالت نے فواد چوہدری کی ڈسچارج کی درخواست پر سرکاری وکیل سے دلائل طلب کرلئے۔

سرکاری وکیل نے اپنے دلائل میں کہا کہ ڈسچارج کی درخواست تب آسکتی ہے جب ریکارڈ پر شواہد موجود نہ ہوں، فواد چوہدری کے خلاف کافی مواد ریکارڈ پر موجود ہے، اس لئے ڈسچارج کی درخواست مسترد کی جائے۔

جسٹس طاہر محمود نے فواد چوہدری کے وکیل بابر اعوان کو کہا کہ آپ اپنے دلائل کا آغاز کریں، جس پر وکیل الیکشن کمیشن نے کہا کہ سرکاری وکیل نے کچھ دلائل دیے، جواب الجواب میں کچھ دلائل میں دوں گا۔

فواد چوہدری کے وکیل بابراعوان نے کہا کہ آج کل تو یہ سرزمین بے آئین بنا دی گئی ہے، قانون میں ملزم سزا ہوجانے تک معصوم سمجھا جاتا ہے، پراسیکیوٹر نے کہا فواد کی فوٹو کی تصدیق کروانے کیلئے لاہور لے کر جانا ہے، فواد چوہدری کی کوئی وڈیو لیک تو نہیں جس میں معلوم کروانا ہو کہ ٹانگ مرد کی ہے یا عورت کی۔

وکیل بابراعوان کی جانب سے بیان سے متعلقہ یوایس بی بھی عدالت کو فراہم کی گئی۔

دورانِ سماعت بابر اعوان نے کہا کہ عدالت کو نہیں بتانا چاہتا لوگوں کو یہاں سے کہاں لے جایا جاتا ہے، نہیں بتا سکتا کہ کہاں لے جا کر لوگوں کو ننگا کیا جاتا ہے۔

بابر اعوان نے کہا کہ مجھے بتایا گیا کہ فواد چوہدری کو ساڑھے 12 بجے طلب کیا گیا، ایک بج گیا ہے ابھی تک فواد چوہدری کو پیش نہیں کیا جا سکا۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس عدالت سے بڑی مینجمنٹ موجود ہے، آپ توصرف اس کمرے کوریگولیٹ کرتے ہیں۔

جس پر سرکاری وکیل نے کہا کہ فواد چوہدری کو لایا جا رہا ہے وہ راستے میں ہیں۔

جس پر بابر اعوان نے کہا کہ ایک بار اور میرے دلائل میں خلل ڈالا گیا تو میں بیٹھ جاؤں گا، اپنے گھوڑوں کولگام دیں، آپ کی حاضری لگ گئی ہے، آپ کو بڑا افسر بنا دیا جائے گا جیسا آپ کا ایس ایچ او ہے۔

بابر اعوان کا کہنا تھا کہ فواد چوہدری کو لاہور ہائیکورٹ میں پیش نہیں کیا گیا، ایک وزیر نے کہا فواد کو 6 بجےایک جج کے پاس پیش کریں گے، میں اسے انصاف کہوں یا مینجمنٹ کہوں، یہ کیا ہے؟

انہوں نے کہا کہ اگر دہشتگردی کی دفعہ لگاتے تو میں ایس ایچ او کو ہتھکڑی لگانے کی استدعا کرتا، پولیس نے ایف آئی آر میں 7 پولیس رولز کی خلاف ورزی کی ہے، آئی جی پنجاب، چیف سیکرٹری، سیکرٹری داخلہ کو مقدمہ کی کاپی بھیجی ہے، ایف آئی آر سیکرٹری داخلہ سے آئی، فواد کو اٹھا لیا اب اس کو ریکورکرو۔

فواد چوہدری کا جسمانی ریمانڈ مسترد ہونے کا فیصلہ چیلنج

دوسری جانب پولیس نے بھی فواد چوہدری کا جسمانی ریمانڈ مسترد ہونے کا فیصلہ سیشن کورٹ میں چیلنج کردیا۔

دورانِ سماعت فواد چوہدری کے وکیل بابراعوان نے الیکشن کمیشن کے وکیل کو بات کرنے سے روک دیا، جس پر الیکشن کمیشن کے وکیل اور بابر اعوان میں تلخ کلامی ہوگئی۔

بابر اعوان کا کہنا تھا کہ سیکرٹری الیکشن کمیشن نے لڑائی کرنی ہے تو باہر کریں۔

جس پر جسٹس طاہر محمود خان نے کہا کہ اعتراض تب کریں جب میں الیکشن کمیشن کے وکیل کو اجازت دوں۔

پراسیکیوٹر نے عدالت میں الیکشن کمیشن کے مقدمے کا متن پڑھا، عدالت نے سرکاری وکیل کو اپیل سے متعلقہ حصہ پڑھنے کی ہدایت کی۔

دورانِ سماعت سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ وائس میچ کرنے کیلئے فوٹوگرامیٹری ٹیسٹ کرانا ہے، اس کے بیان کے پیچھے کون ہے یہ دیکھنا ہے۔

سرکاری وکیل نے کہا کہ فواد چوہدری پارٹی کے کس بندے سے رابطے میں تھے یہ دیکھنا ہے۔

دو روزہ ریمانڈ کے حوالے سے سرکاری وکیل نے کہا کہ عملی طور پر فواد چوہدری ایک دن ہمارے پاس رہے ہیں۔

پولیس کی جانب سے دائراپیل میں استدعا کی گئی کہ جوڈیشل مجسٹریٹ کا فیصلہ کالعدم قراردیا جائے اور فواد چوہدری کا مزید جسمانی ریمانڈ دیا جائے۔

سیشن جج طاہر محمود خان نے سماعت کرتے ہوئے کہا کہ دو دن کے جسمانی ریمانڈ میں کیا تفتیش کی؟

جس کے جواب میں اسٹیٹ کونسل نے کہا کہ فوٹو گرامیٹری ٹیسٹ کروانا ہے، عملی طورپر ہمیں ریمانڈ کا ایک دن ملا، فوٹو گرامیٹری ٹیسٹ پنجاب فرانزک لیب میں ہونا ہے۔

عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ ملزم کے وکلاء کونوٹس کی تعمیل ہوجائے پھردلائل دیں، جس کے بعد سیشن جج طاہر محمود خان نے سماعت میں وقفہ کیا۔

درخواست ضمانت پر سماعت

اس سے قبل اسلام آباد ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹس میں پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما فواد حسین چوہدری کی ضمانت درخواست پر سماعت ہوئی۔

ایڈیشنل سیشن جج فیضان حیدر نے درخواستِ ضمانت پر سماعت شروع کی تو فواد چوہدری کے وکیل بابر اعوان نے کہا کہ ہم دلائل دینے کیلئے تیار ہیں۔

جس پر ایڈیشنل جج فیضان حید نے کہا کہ میرے سامنے ریکارڈ ہی نہیں توسماعت کیا کروں؟

عدالت نے سماعت 10 بجے تک ملتوی کردی۔

فواد چوہدری کی گرفتاری

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کو الیکشن کمیشن اور ان کے اہل خانہ کو دھمکیاں دینے کے الزام میں بدھ 25 جنوری کو علی الصبح لاہور میں ان کی رہائش گاہ سے گرفتار کیا گیا تھا۔

بعدازاں، پولیس انہیں ماتحت عدالت سے راہداری ریمانڈ لے کر اسلام آباد لے آئی۔

لاہور ہائیکورٹ نے فواد چوہدری کو پیش کرنے کی ہدایت کی لیکن اس پر عمل نہ ہوا۔ عدالت نے درخواست خارج کردی۔

پی ٹی آئی رہنما کے خلاف تھانہ کہسار اسلام آباد میں الیکشن کمیشن حکام کو دھمکانے کا مقدمہ درج ہے۔

شائع 28 جنوری 2023 03:34pm

’فواد کو دہشتگرد کی طرح عدالت لانا حکومتی انتقام کا لیول ظاہر کرتا ہے‘

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چئیرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری کو ہتھکڑیاں لگا کر، سر اور چہرے کو دہشت گرد کی طرح ڈھانپ کر عدالت میں لے جانا ظاہر کرتا ہے کہ امپورٹڈ حکومت اور ریاست کس نچلی اور انتقامی سطح پر پہنچ چکی ہے۔

توئٹر پر جاری اپنے پیغام میں عمرانا خان نے کہا کہ فواد چوہدری، اعظم سواتی اور شہباز گل کے ساتھ جو سلوک کیا گیا، اس نے لوگوں کے ذہنوں میں کوئی شک نہیں چھوڑا کہ اب ہم بنانا ری پبلک میں ہیں۔

انہوں نے مزید لکھا کہ ملک میں اب جنگل کا قانون رائج ہے، جہاں طاقت ور صحیح ہے، ملک کا آئین و قانون آج کے فرعونوں نے پوری طرح محکوم کر دیا ہے۔

شائع 28 جنوری 2023 02:47pm

جو میں نے کہا ہے میں اس پر قائم ہوں، فواد چوہدری

اسلام آباد ہائیکورٹ میں پیشی کے دوران پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ آزادی اظہار رائے میرا حق نہیں، اس کا مطلب ملک میں جمہوریت نہیں ہے۔

فواد چوہدری کا عدالت کے روبرو کہنا تھا کہ طاقتور لوگ سمجھتے ہیں ان پر تنقید کرنا ریاست سے غداری ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ جو میں نے کہا ہے میں اس پر قائم ہوں، جو باتیں کیں ان کو مانتا ہوں اور کہتا ہوں کہ یہ میرا حق ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ طاقت ور لوگ سمجھتے ہیں ان پر تنقید درحقیقت غداری ہے، تاریخ اس بات کا تعین کرے گی کہ کون درست تھا اور کون غلط۔

انہوں نے کہا کہ میں منہ پر اچھا اچھا کہوں اور باہر جا کر گالیاں دوں یہ کونسی عزت ہے، اگر چیف الیکشن کمشنر تنقید نہیں لے سکتے تو آپ اس طرح کے عہدے نہ لیں۔

شائع 28 جنوری 2023 02:34pm

محسن نقوی میرے بچوں کو والد سے ملنے دیں، فواد کی اہلیہ کی اپیل

پاکستان تحریک انصاف کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کی اہلیہ حبا چوہدری کا کہنا ہے کہ جج صاحب کے حکم کے باوجود فیملی کو نہیں ملنے دیا گیا۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں حبا چوہدری نے کہا کہ بچیاں 5 دن سے باپ کا انتظار کررہی ہیں، بچیوں کو نہ اڈیالہ اور نہ کہیں اور ملنے دیا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ محسن نقوی میرے بچوں کو والد سے ملنے دیں، میرے بچے اپنے والد سے ملنے کیلئے رو رہے ہیں۔

اہلیہ نے بتایا کہ فواد اپنی بچیوں کا پوچھ کر کمرہ عدالت میں رو پڑے۔

ان کا کہنا تھا کہ میری دونوں بیٹیوں کو والد سے ملنے کی اجازت دی جائے، ہائیکورٹ میری اپیل سنے۔

شائع 28 جنوری 2023 11:17am

فواد چوہدری کی اہلیہ کی کارکنان سے ایف 8 کچہری جمع ہونے کی اپیل

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کی اہلیہ حبا چوہدری نے پی ٹی آئی کارکنان سے ایف 8 کچہری پہنچنے کی اپیل کی ہے۔

اسلام آباد میں فواد چوہدری کی درخواست ضمانت پر سماعت میں وقفے کے دوران میڈیا سے گفتگو میں حبا چوہدری نے کہا کہ فواد چوہدری ساڑھے بارہ بجے ایف 8 کچہری میں ہیش کئے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ یہاں فیملی کے تمام لوگ موجود ہیں، کارکنان بھی ایف 8 کچہری پہنچے۔

شائع 28 جنوری 2023 10:29am

فواد چوہدری کو لاہور ہائیکورٹ پیش نہ کرنے پر توہین عدالت کی درخواست دائر

<p>پولیس افسروں نے عدالتی نظام کا مذاق اڑایا، درخواست - تصویر/ اے ایف پی</p>

پولیس افسروں نے عدالتی نظام کا مذاق اڑایا، درخواست - تصویر/ اے ایف پی

عدالتی حکم کے باوجود پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کوعدالت پیش نہ کرنے پرلاہورہائیکورٹ میں توہین عدالت کی درخواست دائر کردی گئی ہے۔

درخواست لاہور اور اسلام آباد کے 16 پولیس افسروں کیخلاف دائر کی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پولیس افسروں نے عدالتی نظام کا مذاق اڑایا ساتھ ہی استدعا کی کہ عدالت ذمہ دار افسروں کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کرے۔

اپ ڈیٹ 27 جنوری 2023 03:23pm

فواد چوہدری اور فیملی سے احترام کا رشتہ ہے، پرویزالٰہی نے ایک بار پھر معذرت کرلی

<p>فوٹو۔۔۔۔۔ فائل</p>

فوٹو۔۔۔۔۔ فائل

سابق وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہیٰ نے پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کے بھائی فیصل فرید ایڈوکیٹ کو ٹیلیفون کرکے فواد چوہدری کی گرفتاری سے متعلق کہی جانے والی باتوں پر معذرت کرلی۔

گرفتاری کے حوالے سے بیان پر فواد چوہدری کے اہلِ خانہ سے معذرت کرتے ہوئے پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ فواد چوہدری اور ان کے خاندان سے نہایت احترام و عقیدت کا رشتہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ نادانستہ بیان سے فواد چودھری اوراہلخانہ کے جذبات مجروح ہوئے، جس پرافسوس ہے۔

سابق وزیراعلٰی پنجاب نے مزید کہا کہ فواد چوہدری کی گرفتاری اور جھوٹے پرچے کا اندراج قابلِ مذمت ہے۔

واضح رہے کہ پرویز الٰہی نے لاہور میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ پی ٹی آئی والوں کو بہت سمجھایا کہ ابھی کام کرنے دو اسمبلی مت توڑو مگر میری ایک نہیں مانی گئی، ہم ایک سال اور کام کرتے تو یہاں ن لیگ کے کپڑے تک نہ ملتے۔

پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ خان صاحب کے قریب موجود لوگوں نے ہی پارٹی کی جڑ کاٹی، چار پانچ قریبی لوگوں میں سے ایک پکڑا گیا ہے، پہلے پکڑا جاتا تو کام ٹھیک رہتا۔

دوسری جانب فواد چوہدری کی گرفتاری کے معاملے پر پرویز الٰہی کی مبینہ آڈیو بھی سوشل میڈیا پرگردش ہے جس میں انہیں کہتے سنا جاسکتا ہے کہ آڈیو فواد چوہدری کو دیرسے گرفتارکیا گیا اگرایک ماہ پہلے ایسا کرلیتے تواسمبلیاں نہ ٹوٹتیں۔

آڈیو میں پی ٹی آئی رہنما کے لئے نامناسب زبان کا استعمال بھی سُنا جاسکتا ہے تاہم تاحال اس بات کی تصدیق نہیں ہوئی کہ یہ آڈیو پرویزالٰہی کی ہی ہےیا نہیں۔

شائع 27 جنوری 2023 01:23pm

عمران خان کو کچھ ہوا تو ذمہ داری راناثناء پر ہوگی، شبلی فراز

<p>فوٹو۔۔۔۔۔۔۔ اسکرین گریب</p>

فوٹو۔۔۔۔۔۔۔ اسکرین گریب

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما شبلی فراز کا کہنا ہے کہ سب کو پتہ ہے کہ عمران خان کو خطرہ کہاں سے ہے، کچھ ہوا تو ذمہ داری راناثناء پر ہوگی۔

لاہور میں نیوز کانفرنس کرتے شبلی فراز نے کہا کہ تمام سابق وزرائے اعظم کو سیکیورٹی فراہم کی جاتی ہے، عمران خان پر کچھ عرصہ قبل قاتلانہ حملہ ہواتھا، عمران خان کی جان کو اب بھی خطرات ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ ہماری سیاست قانون اور آئین کے دائرے میں ہے، عمران خان نے کبھی عوام کو نہیں اکسایا، عمران خان قانون سے باہر کسی کام پر یقین نہیں رکھتے، ان کی سیکیورٹی کو واپس لے لیا گیا ہے، ہم نے عدالتوں میں 2 درخواستیں دائر کی ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ سب کو پتہ ہے کہ عمران خان کو خطرہ کہاں سے ہے، کچھ ہوا تو ذمہ داری راناثناء پر ہوگی، یہ غیر منتخب لوگ خاص ایجنڈے پر آئے ہیں، یہ لوگ وقت پر الیکشن نہیں چاہتے، یہ لوگ اپنے اقتدار کو طوالت دینا چاہتے ہیں۔

شبلی فراز کا کہنا تھا کہ خیبرپختونخوا کی نگراں حکومت میں سیاسی لوگوں کو لگایا گیا ہے، عملی طور پر قانون کو ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا گیا ہے، آئین پرعملدراری ریاست کی ذمہ داری ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکمران آئین شکنی کررہے ہیں، آئین شکنی پر آرٹیکل 6 لگتا ہے، یہ لوگ ملک کو بنانا ری پبلک بنارہے ہیں، ملک انتہائی نازک دور سے گزر رہا ہے، ملکی سالمیت خطرے میں ہے۔

سابق وفاقی وزیراطلاعات کا مزید کہنا تھا کہ حکمران ٹولے نے ملک کی اینٹ سے اینٹ بجادی ہے، قانون حکمران ٹولے کے گھر کی لونڈی بن گیا ہے، پنجاب میں الیکشن کمیشن نے متنازع شخص کو نگراں لگایا۔

شبلی فراز نے کہا کہ ہم سب کی نظریں عدالتوں پر لگی ہوئی ہیں، عدالتیں ان اقدامات کو کالعدم قراد دیں جو آئین سے متصادم ہیں۔، ہم نےنگراں وزیراعلیٰ کے خلاف پٹیشن دائر کی ہے، فرخ حبیب قانون کی عمل داری کے لئے احتجاج کررہے تھے، فواد چوہدری کو بھونڈے انداز میں گرفتار کیا گیا۔

شائع 27 جنوری 2023 12:05pm

’میں اکیلی ہی کافی ہوں‘ فواد چوہدری کی اہلیہ کا مخالفین کو چیلنج

<p>فوٹو۔۔۔۔۔ ٹوئٹر</p>

فوٹو۔۔۔۔۔ ٹوئٹر

فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف آواز اٹھانے والی ان کی اہلیہ حبا فواد پیشی کے موقع پرعدالت پہنچیں تو مخالفین کو چیلنج بھی کردیا۔

فواد چوہدری کے بھائی ایڈووکیٹ فیصل چوہدری کے ہمراہ عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرنے والی حبا فواد نے ایک سوال کے جواب میں پنجابی میں برجستہ کہا کہ ان کے لیے میں اکیلی ہی کافی ہوں۔

حبا فواد نے حمایت کرنےپر میڈیاکا شکریہ بھی ادا کیا۔

الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے کے کیس میں 2 روز قبل لاہورسے گرفتارکیے جانے والے فواد چوہدری کو آج اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں پیش کیا گیا تھا جہاں عدالت نے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کرتے ہوئے فوادچوہدری کو 14روزہ جوڈیشل ریمانڈ پراڈیالہ جیل بھیجنےکاحکم دیا،

پی ٹی آئی رہنما کے خلاف سیکرٹری الیکشن کمیشن کی مدعیت میں مقدمہ درج ہے۔

اپ ڈیٹ 27 جنوری 2023 11:43am

الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے کا کیس: فواد چوہدری کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد

<p>فوٹو۔۔۔۔۔ ٹوئٹر</p>

فوٹو۔۔۔۔۔ ٹوئٹر

اسلام آباد کی مقامی عدالت نے الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے کے کیس میں گرفتار پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کردی۔

اسلام آباد ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں فواد چوہدری کے خلاف الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی، پی ٹی آئی رہنما کو عدالتی اوقات شروع ہونے سے قبل عدالت پہنچایا گیا۔

فواد چوہدری کو 2 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر جوڈیشل مجسٹریٹ وقاص احمد راجہ کی عدالت میں پیش کیا گیا۔

اس موقع پر تحریک انصاف کے رہنماؤں اور کارکنوں کی بڑی تعداد بھی پہنچ گئی۔

پراسیکیوٹر نے عدالت سے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری کی وائس میچنگ ہوگئی ہے، فوٹو گرامیڑک ٹیسٹ لاہور سے کروانا ہے، فواد چوہدری کا مزید جسمانی ریمانڈ درکارہے۔

پراسیکیوٹر نے مزید کہا کہ فواد چوہدری سے ابھی ریکوریز بھی کرنی ہے، فواد چوہدری کیس کی مزید تفتیش کے لئے جسمانی ریمانڈ بہت ضروری ہے۔

پراسیکیوشن کی جانب سے پی ٹی آئی کے رہنما شہباز گِل کیس کا حوالہ دیا گیا۔

تفتیشی افسر نے کہا کہ رات 12 بجے 2 روز کا ریمانڈ ملا تب تک ایک دن ختم ہوگیا تھا، عملی طور پر ہمیں ایک دن کا ریمانڈ ملا ہے اب مزید ریمانڈ دیا جائے۔

الیکشن کمیشن کے وکیل نے کہا کہ فواد چوہدری کا بیان ریکارڈ پرموجود ہے، انہوں نے اپنی تقریر کا اقرار بھی کیا ہے، تقریر پر تو کوئی اعتراض اٹھا نہیں سکتا، ملزم نے بیان مانا ہے۔

وکیل الیکشن کمیشن نے مزید کہا کہ فواد چوہدری سینیر سیاستدان ہیں لیکن قانون سے بڑھ کر نہیں، ان کے گھر کی تلاشی لینا ضروری ہے، فواد چوہدری کے گھر سے لیپ ٹاپ اور موبائل برآمد کرنے ہیں، پی ٹی آئی رہنما کے بیان میں دیگر افراد بھی شامل ہیں۔

بابر اعوان کے وکیل نے کہا کہ میں بھی فواد چوہدری کے بیان میں شامل ہوں۔

دوران سماعت فواد چوہدری کے وکیل بابراعوان اور الیکشن کمیشن کے وکیل کے درمیان تلخ کلامی ہوگئی۔

وکیل بابراعوان نے کہا کہ ایٹمی ریاست کو موم کی گڑیا بنا دیا گیا ہے، ججوں کے گھروں تک جانے کا بیان دیا گیا، ہم نے پرچہ نہیں کروایا۔

وکیل الیکشن کمیشن نے کہاکہ فواد چوہدری کا بیان کسی ایک بندے کا بیان نہیں، ایک گروپ کا بیان ہے، الیکشن کمیشن نہیں بلکہ اعلیٰ عہدیداران کے خلاف مہم چل رہی ہے، ڈسچارج کی استدعا گزشتہ پیشی پر ڈیوٹی میجسٹریٹ نے مسترد کردی تھی، عدالت کے سامنے تمام شہری برابر ہیں۔

وکیل بابر اعوان نے کہا کہ کیس کا مدعی ایک سرکاری ملازم ہے، ٹیکس عوام دیتی ہے، موج سرکاری افسران لگاتے ہیں، پبلک سروینٹ کا مطلب عوام کا نوکر ہے، فواد چوہدری کوئی کلبھوشن یادہشت گرد نہیں ہے، کلبھوشن کے چہرے پر فواد چوہدری کی طرح چادر نہیں ڈالی گئی۔

وکیل بابراعوان نے مزید کہا کہ سیکٹری الیکشن کمیشن سرکار کے نوکروں کا بھی نوکرہے، مجھے اپنے منشی پر فخر ہے، میرے منشی کو سپریم کورٹ میں داخلے کی اجازت ہے، معلوم نہیں منشی سے پراسیکیوشن کو اتنی چِڑ کیوں ہے، الیکشن کمیشن کوئی وفاقی حکومت نہیں اور نہ ہی قومی اسمبلی ہے۔

بابر اعوان نے فواد چوہدری کو مقدمے سے ڈسچارج کرنے کی استدعا کرتے ہوئے الیکشن کمیشن سمیت حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ اسلام آباد پولیس نے نہیں لاہور پولیس نے گرفتارکیا، جو بیان دیا وہ جماعت کا مؤقف ہے۔

عدالت نے دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محٖفوظ کیا جو کچھ دیر بعد سنادیا گیا۔

عدالت نے پولیس کی 7روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا مسترد کرتے ہوئے فواد چوہدری کو 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پراڈیالہ جیل بھیجنے کا حکم دے دیا۔

فیصل چوہدری نے کہا کہ فواد چوہدری کے خلاف جہاں بھی مقدمہ درج ہوگا دفاع کریں گے، ملک میں آئینی احکامات کو بھی نہیں مانا جارہا، ضمنی انتخابات 90 دن کے اندر ہونا چاہئیں۔

فواد چوہدری کی اہلیہ ہبہ چوہدری کا کہنا ہے کہ سپورٹ کرنے پر میڈیا کی بہت مشکور ہوں، فواد چوہدری کی ضمانت کے لئے درخواست دیں گے۔

عدالت میں سیکیورٹی سخت

آج فواد چوہدری کو پیش کرنے کے موقع پر اسلام آباد کچہری میں پولیس کی سخت سیکیورٹی تعینات کی گئی تھی۔

گزشتہ سماعت میں 2 روزہ جسمانی ریمانڈ دیا گیا

واضح رہے کہ فواد چودری کو 25 جنوری کو لاہور سے حراست میں لیا گیا تھا، جس کے بعد انہیں اسلام آباد کی مقامی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔

عدالت نے فواد چوہدری کو 2 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کیا تھا۔

فواد چوہدری کے خلاف الیکشن کمیشن کے ممبران کو دھمکانے پر اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا تھا، ان پر سیکرٹری الیکشن کمیشن کی درخواست پر مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

اپ ڈیٹ 27 جنوری 2023 10:47am

پولیس کی گاڑیاں روکنے پر پی ٹی آئی رہنما فرخ حبیب کیخلاف مقدمہ درج

<p>فرخ حبیب فوٹو۔۔ فائل</p>

فرخ حبیب فوٹو۔۔ فائل

وفاقی پولیس کی مدعیت میں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سابق ایم این اے فرخ حبیب کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔

مقدمہ تھانہ فیروز والا شیخو پورہ میں درج کیا گیا ہے، وفاقی پولیس کے افسر عدیل شوکت کی مدعیت میں ڈکیتی اور ملزم کو چھڑانے کی دفعات کے تحت درج کیا گیا۔

ایف آئی ار کے متن میں لکھا گیا کہ کالا شاہ کاکو کے قریب کچھ لوگوں نے ڈکیتی کرنے کی کوشش کی جبکہ ملزمان نے فواد چوہدری کو بھی چھڑانے کی کوشش کی، ملزمان نے کانسٹیبل عدنان کا وائرلیس سیٹ بھی چھین لیا۔

مقدمے کے اندراج کے بعد فرخ حبیب کا بھی ردعمل سامنے آگیا، انہوں نے ٹویٹ میں لکھا کہ درجنوں بندوقوں والے تربیت یافتہ پولیس والوں سے نہتے فرخ حبیب نے ڈکیتی کرلی اور ان کی وردیاں بھی پھاڑ دی۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ ایف آئی آر کے متن میں ویسے بہت ہی ماٹھی کہانی بنائی گئی ہے، میں نے تو بغیر نمبر پلیٹ گاڑی کو روکا تھا، عدالتی احکامات بتانے کے لئے یہ پولیس کے ساتھ ڈکیتی کہا سے آگئی۔

شائع 27 جنوری 2023 10:34am

فواد چوہدری کی پیشی کے موقع پرایف ایٹ کچہری کے مناظر

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی پیشی کے موقع پراسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ کے باہر بڑی تعداد میں پارٹی کارکن اور رہنما بھی پہنچے۔

فواد چوہدری کو الیکشن کمیشن کو دھمکیاں دینے کے کیس میں 2 روز قبل لاہورسے گرفتار کیا گیا تھا، ان کے خلاف سیکرٹری الیکشن کمیشن کی مدعیت میں مقدمہ درج ہے۔

پیشی کے موقع پر عدالت کے باہر موجود کارکنوں اور رہنماؤں کی جانب سے اندر جانے سے روکے جانے پر شدید نعرے بازی کی گئی۔

پی ٹی آئی کی مرکزی رہنما شیریں مزاری بھی اندر جانے کے لیے کارکنوں کے ہجوم میں پھنسی نظرآئیں۔

پی ٹی آئی حامیوں نے عدالت کے باہر شدید نعرہ باری کرتے ہوئے اپنے تحفظات کااظہار کیا۔

فواد چوہدری کوعدالت میں پیش کیے جانے کے موقع پر اسلام آباد کچہری میں پولیس کی سخت سیکیورٹی تعینات کی گئی۔

شائع 26 جنوری 2023 06:20pm

ڈالر مہنگا ہونے کے بعد گیس، بجلی سمیت ہر چیز مہنگی ہوگی، حماد اظہر

<p>پی ٹی آئی رہنما حماد اظہر۔ فوٹو — فائل</p>

پی ٹی آئی رہنما حماد اظہر۔ فوٹو — فائل

رہنما پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) حماد اظہر کا کہنا ہے کہ ڈالر کی قیمت میں اضافے کے بعد ملک میں گیس، بجلی سمیت ہر چیز مہنگی ہوگی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے پوئے حماد اظہر نے ڈالر کی قیمت میں اضافے کے ردعمل میں کہا کہ جب ہم نے حکومت چھوڑی تو ڈالر 182روپے پر تھا، ہماری حکومت ہوتی تو ڈالر 200 روپے سے اوپر نہ جاتا۔

ان کا کہنا تھا کہ ڈالر آج 25 روپے مہنگا ہوا، اوپن مارکیٹ کا ریٹ ابھی سامنے نہیں آیا، ڈالر کی قیمت میں اضافے کے اثرات سامنے آئیں گے، ملک میں گیس، بجلی سمیت ہر چیز مہنگی ہو جائے گی، البتہ اگر ہم اسٹیٹ بینک کو آزاد رکھتے تو ڈالر 200 بھی کراس نہ کرتا۔

حماد اظہر نے کہا کہ گزشتہ 9 ماہ میں تین اشاریہ چار فیصد ماہانہ ڈالر کی قدر میں اضافہ رہا، اسٹیٹ بینک اب خام مال کی ایل سی نہیں کھول رہا، ہر انڈسٹری کی سپلائی چین بھی متاثر ہو رہی ہے، ڈالر کی قدر میں اضافے کے اثرات تین ماہ بعد سامنے آئیں گے۔

فواد چوہدری کی گرفتاری پر پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ فواد کو عدالت ایسے لایا گیا جیسے کسی دہشت گرد کو لایا جاتا ہے، انسانی حقوق کی سب سے توانا آواز اور ساری عمر صحافتی آزادی کی بات کرنے والے کو گرفتار کیا گیا، کل فواد چوہدری قوم کا ہیرو بن گیا ہے۔

شائع 26 جنوری 2023 03:33pm

فواد چوہدری کی گرفتاری کا معاملہ سینیٹ میں پہنچ گیا

<p>فوٹو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فائل</p>

فوٹو۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فائل

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری کا معاملہ سینیٹ میں پہنچ گیا، اپوزیشن نے حکومت، الیکشن کمیشن اور نگران وزیراعلیٰ پنجاب پرتنقید کی۔

چیئرمین صادق سنجرانی کی زیرصدارت سینیٹ اجلاس ہوا۔

قائد حزب اختلاف سینیٹر شہزاد وسیم نے فواد چوہدری کی گرفتاری پر حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ الیکشن کمیشن کی جانبداری واضح نظرآرہی ہے پنجاب میں نگران وزیراعلیٰ غیر جانبدار ہونا چاہیئے۔

پی ٹی آئی سینیٹر فیصل جاوید نے 3روز پارلیمنٹ کو بند کرنے کی وجہ عمران خان کا خوف قراردیا۔

سینیٹردوست محمد محسود نے چیف الیکشن کمشنر کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہیں چپڑاسی قرار دے دیا۔

حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) کے سینیٹرنے وزراء کی ایوان میں غیرحاضری پرتنقید کی۔

دوران اجلاس سینیٹ ربہرہ مند تنگی اور سیف اللہ ابڑوکے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ بھی ہوا۔

جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد نے فواد چوہدری کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ توہین پارلیمنٹ پرکوئی بات نہیں کرتا۔

تحریک انصاف کے سینیٹرز نے فواد چوہدری کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے جلد از جلد رہائی کا مطالبہ کیا۔

شائع 26 جنوری 2023 01:42pm

کیا لوگوں کو دھمکیاں دینا جمہوریت ہے؟ فرخ حبیب کیخلاف بھی مقدمہ ہونا چاہیے، احمد خان

<p>تصویر/ فائل</p>

تصویر/ فائل

مسلم لیگ ن کے رہنما ملک احمد خان نے کہا ہے کہ کیا لوگوں کو دھمکیاں دینا جمہوریت ہے؟ فرخ حبیب کے خلاف بھی مقدمہ ہونا چاہیے انہوں نے پولیس کو روکنے کی کوشش کی اوردھمکیاں دیں۔

پریس کانفرنس میں رہنما مسلم لیگ ن نے کہا کہ حیران تھا کہ فواد چوہدری دھمکیوں کی طرف کیوں گئے چیف الیکشن کمشنرکا تقررمکمل مشاورت سے کیا گیا تھا پی ٹی آئی نےتقررکے بعد تعریف بھی کی تھی، ڈسکہ الیکشن اور ای وی ایم کے بعد خرابیاں پیدا ہوگئیں اور پی ٹی آئی نے الیکشن کمیشن کے خلاف مہم چلائی اور الیکشن کمیشن کے اہلکاروں اوراہل خانہ کودھمکایا۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نےعدالتوں کو بھی دھمکیاں دی پی ٹی آئی مخالف فیصلوں پراحتجاج شروع کردیتی ہے جبکہ فواد چوہدری کودھمکی نہیں دینا چاہئے تھی فواد چوہدری کے ساتھ ظلم ہوگا تومذمت کرونگا فواد چوہدری کوکپڑا ڈال کرپیش نہیں کیا جانا چاہئے تھا۔

ملک احمد خان کا کہنا ہے کہ فرخ حبیب کیخلاف مقدمہ درج ہوناچاہئے انہوں نے پولیس کو روکنے کی کوشش کی اوردھمکیاں دیں، عمران خان اورقاسم سوری پرآرٹیکل 6 لگانا چاہئے تھا،حکومت نے آرٹیکل 6 نہ لگا کر غلطی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک آدمی 10نشستوں پرکھڑا ہوجاتا ہے، تماشہ لگارکھا ہے 30 لوگوں کی پارٹی تھی، لوگوں کو پکڑ پکڑکرشامل کیا گیا، ان کی حکومت بنانے کیلئے مخالفین کیخلاف مقدمات بنائےگئے آپ کا سائفراورآپ کا امربالمعروف کا بیانیہ جھوٹا ہے، آپ کی سیاست اوراخلاقیات گالی دینا ہے ریاستی ادارے کے ساتھ زیادتی کی گئی توحکومت کردار ادا کرےگی۔

لیگی رہنما نے کہا کہ کئی ٹاک شوز ہوئے، کئی فورمز پر بات ہوئی، عمومی طور پرمانا گیا کہ الیکشن کمیشن کا موقف درست تھا، معاملے پر تحریک انصاف نے مہم چلائی، اس وقت الیکشن کمیشن کو ایکٹ کرنا چاہیے تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن نے صرف نوٹسز جاری کیے جوکہ ناکافی تھے جب آپ مجرمانہ ارادہ رکھتے ہوئے کسی کو دھمکی دیتے ہیں، جب آپ کہتے ہیں کہ میں آپ کے گھر تک جاؤں گا، آپ کے بچوں کو نہیں چھوڑوں گا اس کا کیا مطلب ہے؟

انہوں نے مزید کہا کہ کیا یہ جرم جمہوریت ہے؟ کیا کسی کو دھمکی دینا جمہوریت ہے؟ جو فیصلہ تحریک انصاف اور عمران خان کے حق میں آئے وہ قابل قبول ہے، جو ادارہ بھی ان لوگوں کے خلاف فیصلہ دے اسے وہ ملک دشمن کہتے ہیں۔

شائع 26 جنوری 2023 11:08am

عمران خان نے آنے والی نسلوں کیلئے مافیاز سے ٹکر لی ہے، مسرت جمشید چیمہ

<p>مسرت جمشید چیمہ</p>

مسرت جمشید چیمہ

پاکستان تحریک انصاف کی رہنما مسرت جمشید چیمہ کا کہنا ہے کہ عمران خان نے آنے والی نسلوں کے لئے مافیاز سے ٹکر لی ہے، امپورٹڈ ٹولے نے اگر قوم کے لیڈر کے خلاف کوئی حرکت کی تو یہ ان کا آخری ایڈونچر ہوگا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں ترجمان پنجاب حکومت مسرت جمشید چیمہ نے کہاکہ پی ٹی آئی رہنما کے خلاف ایڈونچر ہوا تو 10منٹ میں سارا لاہور جاگ اٹھا، امپورٹڈ ٹولہ عمران خان کے خلاف ایسے کسی ایڈونچر کی جرات بھی نہ کرے۔

انہوں نے کہا کہ کارکنان اور عوام فیملیز کے ہمراہ اظہار یکجہتی کے لئے زمان پارک پہنچے ہیں، یہ جانتے ہیں عمران خان نے ان کی اور آنے والی نسلوں کے لئے مافیاز سے ٹکر لی ہے۔

مسرت جمشید چیمہ نے مزید کہا کہ عمران خان سچے اور کھرے لیڈر ہیں اور ان کا جینا مرنا پاکستان میں ہے اس لئے عوام جان چھڑکتے ہیں، عمران خان کی مقبولیت دیکھ کر سیاسی مخالفین کے روزانہ پلیٹ لیٹس گرتے ہیں۔

شائع 26 جنوری 2023 09:44am

اہلیہ نے ہتھکڑیاں لگے فواد چوہدری کے ساتھ تصویر شیئرکردی

<p>تصویر: حبا فواد/ٹوئٹر</p>

تصویر: حبا فواد/ٹوئٹر

گرفتار پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی اہلیہ حبا فواد نے خاوند کے ساتھ تصویر شیئر کرتے ہوئے پیغام دیا ہے کہ حوصلے بلند ہیں۔

تصویرمیں دیکھا جاسکتا ہے کہ ممکنہ طور پر ایف ایٹ کچہری میں لی جانے والی اس تصویرمیں کرسی پر بیٹھے فواد چوہدری کے ہاتھوں میں ہتھکڑیاں لگی ہیں جبکہ حبا فواد ان کے قدموں میں بیٹھی ہیں۔

فوادچوہدری کو کل علی الصبح لاہورمیں ان کے گھرسے حراست میں لیا گیا تھا۔

اس سے قبل میڈیا سے گفتگو میں شوہر کی رہائی کا مطالبہ کرنے والی حبا فواد کا کہنا تھا کہ یہ کیا طریقہ کار ہے کہ گھر میں گھس کر کسی کو بھی اٹھالیں۔ کس نے گرفتار کیا اور کیوں کیا، ہم لاعلم ہیں۔

’یہ گرفتاری نہیں اغواء ہے‘، فواد چوہدری کی اہلیہ کا ردعمل

فواد چوہدری کو گزشتہ روزلاہور سے اسلام آباد پہنچانے کے بعدہتھکڑی لگا کر ایف 8 کچہری میں پیش کیا گیا، پی ٹی آئی گرفتار رہنما کا چہرہ سفید کپڑے سے ڈھانپ کر انہیں عدالت لایا گیا۔

فواد چوہدری کو توہین الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس بھیجنے کا فیصلہ

تفتیشی افسر نے فواد چوہدری کے 8 روزہ ریمانڈ کی استدعا کی تاہم مجسٹریٹ نوید خان نے فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظورکیا جس کے بعد انہیں انسداد دہشتگردی (سی ڈی ڈی) ہیڈ کوارٹرمنتقل کردیا گیا۔

اپ ڈیٹ 26 جنوری 2023 09:44am

فواد چوہدری کو توہین الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس بھیجنے کا فیصلہ

<p>پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری</p>

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کو توہین الیکشن کمیشن کا ایک اور نوٹس بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

یہ فیصلہ فواد چوہدری کی گزشتہ روز کی تقریر پر کیا گیا۔

الیکشن کمیشن حکام کا کہنا ہے کہ فوادچوہدری ادارہ جاتی توہین کےمرتکب ہوئےہیں، الیکشن کمیشن کے ملازمین اور ان کے اہلخانہ کے لئلے دھمکی ہے۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو گزشتہ روز حراست میں لیا گیا تھا، ان کے خلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

گرفتاری کے بعد پولیس نے فواد چوہدری کو کینٹ کچہری میں پیش کیا۔

عدالت نے سابق وفاقی وزیر اطلاعات کا راہدری ریمانڈ منظور کرتے ہوئے فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جانے کی اجازت دے دی ۔

جوڈیشل مجسٹریٹ نے فواد چوہدری کا سروسز اسپتال سے میڈیکل کرانے کا حکم بھی دیا۔

لاہور ہائیکورٹ میں پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف درخواست پر سماعت شروع ہوئی تو عدالت نے آئی جی اسلام آباد اور آئی جی پنجاب کو شام 6 بجے طلب کیا۔

آئی جی پنجاب نےعدالت کے روبرو پیش ہوکر جواب جمع کرا یا جس میں کہا گیا کہ مجھے عدالتی فیصلہ واٹس اپ پر موصول ہوا، فواد چوہدری کو لے جانے جانے کے بعد فیصلے کا علم ہوا، رحیم یار خان میں تھا جہاں سگنلز کا بہت پرابلم تھا۔

آئی جی پنجاب نے کہا تھا کہ فواد چوہدری پنجاب پولیس کی حراست میں نہیں، بروقت پتا چلتا تو فواد چوہدری کو پیش کردیتا، عدالت کی توہین کو سوچ بھی نہیں سکتا۔

جس کے بعد عدالت نے فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف بازیابی کی درخواست خارج کردی۔

فواد چوہدری کو ہتھکڑی لگا کر ایف 8 کچہری میں پیش کیا گیا جبکہ پی ٹی آئی گرفتار رہنما کا چہرہ سفید کپڑے سے ڈھانپ کر عدالت لایا گیا۔

فواد چوہدری کی پیشی کے باعث عدالت کے باہر سیکیورٹی کے سخت اقدامات کیے گئے اور پولیس کی بھاری نفری بھی ایف 8 کچہری کے باہرتعینات کی گئی۔

تفتیشی افسر کی جانب سے فواد چوہدری کے 8 روزہ ریمانڈ کی استدعا کی گئی تاہم مجسٹریٹ نوید خان نے فواد چوہدری کا 2 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کیا جس کے بعد انہیں انسداد دہشت گردی (سی ڈی ڈی) ہیڈ کوارٹر منتقل کردیا گیا۔

شائع 26 جنوری 2023 09:22am

عمران خان کی گرفتاری کا خدشہ، کارکنوں نے زمان پارک کے باہر ڈیرے ڈال لیے

چئیرمین پی ٹی آئی عمران خان کی ممکنہ گرفتاری کے خدشے کے تحت کارکنوں نے لاہور میں چیئرمین کی رہائشگاہ کے باہرڈیرے ڈال لیے ۔

سخت سردی کے باوجود پی ٹی آئی کے حامی مردوخواتین اور بچوں نے پارٹی سربراہ سے یکجہتی کیلئے پوری رات زمان پارک کے باہر گزاری۔

کارکن متبادل اوقات میں آرہے ہیں،یعنی صبح کو آنے والے شام کو واپس چلے جاتے ہیں اور شام کو آنے والے اگلی صبح واپس جاتے ہیں ۔

صبح سویرے زمان پارک کے باہر ناشتے کا دور چلا، کیمپ لگائے گئے ہیں جہاں کرسیاں لگائی گئی ہیں جبکہ رات کے اوقات میں سامنے موجود کنٹینرمیں پارٹی ترانے بجائے جاتے ہیں۔

سردی کے باوجود وہاں موجود کارکنوں کا کہنا ہے عمران خان کو گرفتار نہیں کرنے دیں گے ، وہ ملک بچانے نکلے ہیں اور ہم ان کے ساتھ ہیں۔

عمران خان معمول کے مطابق آج بھی کارکنوں سے بذریعہ ویڈیو لنک خطاب کریں گے۔

اپ ڈیٹ 26 جنوری 2023 12:22am

فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور، سی ٹی ڈی ہیڈ کوارٹر منتقل

<p>فوٹو — اسکرین گریب</p>

فوٹو — اسکرین گریب

اسلام آباد کی مقامی عدالت نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرلیا۔

ذرائع کے مطابق فواد چوہدری کو ہتھکڑی لگا کر ایف 8 کچہری میں پیش کیا گیا جب کہ پی ٹی آئی گرفتار رہنما کا چہرہ سفید کپڑے سے ڈھانپ کر عدالت لایا گیا، فواد چوہدری کی پیشی کے باعث عدالت کے باہر سکیورٹی کے سخت اقدامات کئے گئے اور پولیس کی بھاری نفری بھی ایف 8 کچہری کے باہرتعینات کی گئی۔

تفتیشی افسر نے فواد چوہدری کے 8 روزہ ریمانڈ کی استدعا کی تاہم مجسٹریٹ نوید خان نے فواد چوہدری کا دو روزہ جسمانی ریمانڈ منظورکیا جس کے بعد انہیں انسداد دہشتگردی (سی ڈی ڈی) ہیڈ کوارٹر منتقل کردیا گیا۔

وکیل الیکشن کمیشن نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے مقدمے کا متن پڑھ کر سنایا اور کہا کہ الیکشن کمیشن آئینی ادارہ ہے، ادارے کے پاس انتخابات کرانے کا اختیار ہے لیکن فواد چوہدری نے کہا الیکشن کمیشن کی حالت منشی کی ہے، منصوبے کے تحت ادارے کو متنازع بنایا جا رہا ہے، ہمیں پاس فواد چوہدری کے خلاف بہت مواد موجود ہے۔

وکیل ای سی پی نے کہا کہ ایف آئی آر میں بغاوت کی دفعات بھی شامل ہیں، فواد چوہدری نے جو کہا اسے تسلیم بھی کیا، کہا گیا الیکشن کمیشن والوں کے گھروں تک پہنچیں گے، ادارے کے ملازمین کو خطرے مین ڈالا گیا، لہٰذا فواد چوہدری کے بیان پر تفتیش کرنی ہے۔

عدالت میں پیشی کے دوران فواد چوہدری نے اپنے خلاف مقدمے کے اخراج استدعا کرتے ہوئے کہا کہ جوبھی بات کرتا ہوں پارٹی پالیسی ہوتی ہے، میں پارٹی کا ترجمان ہوں، میری باتیں غلط کوٹ کی گئیں، میرے خلاف بغاوت کا الزام لگایا جارہا ہے، مدعی وکیل کا مطلب تنقید کرنا بغاوت ہے، ایسے تو جمہوریت ختم ہوجائے گی۔

پی ٹی آئی گرفتار رہنما نے کہا کہ شکر گزار ہوں بغاوت کی دفعات درج کی گئیں، مجھے نیلسن منڈیلا کی صف مین شامل کردیا گیا، میں دہشت گرد نہیں لیکن مجھےسی ٹی ڈی میں رکھا گیا، سیاست میں مخالفین پر کیسز بنائے جا رہے ہیں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ میں تقریر نہیں، میڈیا سے گفتگو کر رہا تھا، ضروری نہیں جو بات کروں وہ میرا ذاتی خیال ہو، اگر ایسا ہوا تو کوئی تنقید نہیں کر پائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مجھے اسلام آباد پولیس نے نہیں بلکہ صبح 3 بجے لاہور پولیس نے گرفتار کرکے میرا موبائل اپنے قبضے میں لیا، راہداری ریمانڈ تک تو مجھے اسلام آباد پولیس نظر نہیں آئی، تفتیشی افسر نے مجھ سےکوئی تفتیش نہیں کی۔

فواد چوہدری کی اہلیہ حبا چوہدری بھی عدالت پہنچ گئی ہیں جب کہ مراد سعید، حماد اظہر، سینیٹر شہزاد وسیم اور دیگر رہنما بھی عدالت میں موجود ہیں۔

ڈیوٹی مجسٹریٹ جج نوید خان ایف ایٹ کچہری پہنچ گئے، فواد چوہدری کو مجسٹریٹ نوید خان کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

عدالتی انتظامیہ نے کمرہ عدالت چھوٹا ہنے کے باعث تبدیل کردیا، نیا کمرہ عدالت بھی کارکنان سے کچھا کھچ بھر گیا جس کے باعث فواد چوہدری کو اب تک عدالت کے روبرو پیش نہیں کیا جاسکا۔

فیصل چوہدری نے کارکنان کو کمرہ عدالت سے باہر جانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے بڑا ساتھ دیا، آپ یہ ساتھ باہر کھڑے ہو کر بھی دے سکتے ہیں، رش کم نہیں کریں گے تو عدالت کام نہیں کر سکے گی، فیصل چوہدری کی اپیل کے باوجود پی ٹی آئی کارکنان کمرہ عدالت میں بدستور موجود ہیں۔

لاہور ہائیکورٹ نے فواد چوہدری کی بازیابی کی درخواست خارج کردی

لاہور ہائیکورٹ نے فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف بازیابی کی درخواست خارج کردی ہے، ایف آئی آر کی کاپی عدالت میں جمع کرادی گئی جس پر جسٹس طارق سلیم نے ریمارکس دیئے کہ اب یہ ایف آئی آر غیر قانونی نہیں رہی ہے۔

یہ بتائیں فواد چوہدری کہاں ہیں؟ اسلام آباد اور پنجاب کے آئی جی شام 6 بجے طلب

آئی جی پنجاب نےعدالت کے روبرو پیش ہوکر جواب جمع کرا دیا جس میں کہا گیا کہ مجھے عدالتی فیصلہ واٹس اپ پر موصول ہوا، فواد چوہدری کو لے جانے جانے کے بعد فیصلے کا علم ہوا، رحیم یار خان میں تھا جہاں سگنلز کا بہت پرابلم تھا۔

آئی جی پنجاب نے کہا کہ فواد چوہدری پنجاب پولیس کی حراست میں نہیں، بروقت پتا چلتا تو فواد چوہدری کو پیش کردیتا، عدالت کی توہین کو سوچ بھی نہیں سکتا۔

اس سے قبل لاہور ہائیکورٹ میں پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف درخواست پر سماعت دوبارہ شروع ہوئی تو عدالت نے آئی جی اسلام آباد اور آئی جی پنجاب کو شام 6 بجے طلب کرلیا۔

جسٹس طارق سلیم شیخ نے کہا کہ آپ کو نہیں سنوں گا، جس پر ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ فواد چوہدری پنجاب پولیس کے پاس نہیں ہے، پولیس کوبتایاکہ مجھے عدالت کے حکم پر عملدرآمد کرنا ہے۔

عدالت نے کہا کہ آپ چاہتے ہیں کہ آئی جی اسلام آباد اور آئی جی پنجاب کو طلب کر لوں، جس پر ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ آپ کےحکم کی تعمیل کردی،آرڈر آگے پہنچا دیا گیا۔

عدالت نے کہا کہ یہ باتیں چھوڑیں یہ بتائیں فواد چوہدری کہاں ہیں ؟، جس پر سرکاری وکیل نے بتایا کہ وہ پنجاب پولیس کے پاس نہیں ہیں۔

ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے کہا کہ وہ اسلام آباد پولیس کی حراست میں ہیں، جس پر عدالت نے کہا کہ یہ کوئی بات نہیں پہلے بندے کو پیش کریں۔

لاہور ہائیکورٹ نے آئی جی اسلام آباد اور آئی جی پنجاب کو شام 6 بجے طلب کرلیا ۔

اس سے قبل عدالت نے فواد چوہدری کو پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت ملتوی کی تھی۔

سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست احمد پنسوتا ایڈووکیٹ نے داٸر کی ہے۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ فواد چوہدری کی گرفتاری غیر قانونی ہے، فواد چوہدری کو ایف آئی آر تک نہیں دکھائی گئی، گرفتاری کو غیر قانونی اور کالعدم قرار دیا جاٸے۔

دوبارہ سماعت کے آغاز پر وکیل نے کہا کہ ابھی تک فواد چوہدری کو پیش نہیں کیا گیا، ڈی ایس پی نے بتایا ہے کہ فواد چوہدری کو لارہے ہیں۔

اس پرعدالت نے کچھ دیر کے لئے سماعت ملتوی کرتے ہوئے ریمارکس دیے کہ فواد چوہدری جہاں کہیں بھی ہیں، پولیس انہیں آدھے گھنٹے میں پیش کرے۔ یہ آپ کی ذمہ داری ہے۔

عدالت نے سماعت سہ پہر 3 بجے تک ملتوی کردی ہے۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو علی الصبح حراست میں لیا گیا تھا، ان کے خلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

گرفتاری کے بعد پولیس نے فواد چوہدری کو کینٹ کچہری میں پیش کیا۔

عدالت نے سابق وفاقی وزیر اطلاعات کا راہدری ریمانڈ منظور کرتے ہوئے فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جانے کی اجازت دے دی ۔

جوڈیشل مجسٹریٹ نے فواد چوہدری کا سروسز اسپتال سے میڈیکل کرانے کا حکم بھی دیا ہے۔

بعدازاں پولیس حکام فواد چوہدری کو لے کر عدالت سے روانہ ہوگئے۔

شائع 25 جنوری 2023 10:59pm

پمز اسپتال کے ڈاکٹرز نے فواد چوہدری کو تندرست قرار دیدیا

<p>فوٹو — اسکرین گریب</p>

فوٹو — اسکرین گریب

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کو ڈاکٹرز نے تندرست قرار دے دیا۔

فواد چوہدری کا بلڈ پریشر اور شوگر لیول پمز اسپتال کے شعبہ امراض قلب میں چیک کیا گیا۔ ڈاکٹرز نے طبی معائنہ کرنے کے بعد انہیں تندرست قرار دیا۔

پمز اسپتال کے احاطے میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پاکستان کو اکٹھا کرنے کی ضرورت ہے، یہ احمق لوگ عمران خان کو تنہا کرنا چاہتے ہیں۔

پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا کہ پارٹی میں جو بھی بولتا ہے اسے گرفتار کرلیا جاتا ہے، پہلے شہباز گل، اعظم سواتی اور اب مجھےگرفتار کیا گیا۔

شائع 25 جنوری 2023 09:00pm

فواد کی گرفتاری، ’عمران خان بھی ذہنی طور پر تیار ہیں‘

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری پر پی ٹی آئی رہنما صداقت علی عباسی کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری نے اپنا مؤقف پیش کیا تھا۔

آج نیوز کے پروگرام ”فیصلہ آپ کا“ میں گفتگو کرتے ہوئے صداقت علی عباسی کا کہنا تھا کہ فواد کو منہ پر کپڑا ڈال کر عدالت میں پیش کیا گیا، یہ کپڑا جمہوریت کے منہ پر تھا، اس سے فواد کو کوئی فرق نہیں پڑا، فواد چوہدری کو گرفتار کرکے ن لیگ نے بدنامی مول لی ہے۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رہنما عظمیٰ بخاری نے صداقت عباسی کی بات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری نے خود کہا ان کے اوپر بغاوت کے مقدمے میں ہوں گے، انہوں نے 180 پر ایک میٹنگ کے دوران ہم 34 افراد پر بغاوت کا مقدمہ کرایا۔

عظمیٰ بخاری نے کہا کہ نہ تو ہمیں خوشی ہے اور نہ یہ ہم نے کیا ہے، الیکشن کمیشن آف پاکستان ایک آئینی ادارہ ہے، ان کے خلاف پہلے ہی توہینِ الیکشن کمیشن کا کیس چل رہا ہے، انہوں نے فیملی کو دھمکی دی ہے تو یہ توہین کا نہیں کرمنل کیس ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ الیکشن کمیشن کو جوتی کی نوک پر رکھتے ہیں۔ اب فیملی کو دھمکی دی ہے تو انہوں نے ایف آئی آر درج کرا دی، ایف آئی آر درج ہوگی تو بندہ گرفتار ہی ہوگا نا۔

ایک سوال کے جواب میں صداقت عباسی نے کہا کہ نگراں وزیراعلیٰ پنجاب محسن نقوی کے آنے کے بعد ہمارے اوپر ظلم کرنے والے پولیس افسر تعنیات کردیے گئے۔ ن لیگ کو انتظار ہے کہ کوئی انتشار ہو اور انہیں فرار کا راستہ ملے، محسن نقوی اس سارے عمل میں ایک مہرے کا کردار ادا کرتے ہوئے نظر آرہے ہیں۔

محسن نقوی کی تعیناتی پر عمران خان کے اعتراض کے حوالے سے عظمیٰ بخاری کا کہنا تھا کہ عمران خان کو اپنے علاوہ سب پر اعتراض ہے، اب ہم اتنے سارے عمران خان کہاں سے لائیں جو ہر ایک پوسٹ پر لگائے جاسکیں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف کو سزا ہوئی تھی تو کیا ہمیں پتا نہیں تھا کہ فیصلہ کیسے ہوئے، واٹس ایپ گروپ پر جے آئی ٹی کیسے بنی؟ ہم نے سرنڈر کیا اور سزائیں بھگتیں، عمران خان نے ن لیگ کو نقصان پہنچانے کے لیے ہر حربہ استعمال کیے۔ ہمیں بھی اعتراض تھا لیکن ہم نے غنڈہ گردی نہیں کی۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں بھی حسن عسکری کے نام پر اعتراض تھا، مگر ہم سیاسی پروسیس کا حصہ رہے۔

عظمیٰ بخاری نے کہا کہ یہ اداروں کے خلاف لوگوں کو اکسا رہے ہیں، ان کے خلاف بغاوت کے مقدمے نہ ڈالیں تو کیا مرغی چوری کے ڈالیں؟ یہ لوگ ریاست کے خلاف بغاوت پھیلانا چاہ رہے ہیں۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے صحافی اور تجزیہ کار منیب فاروق نے کہا کہ فواد چوہدری کے بیان میں پارٹی پالیسی کا عکس نظر آتا ہے اور وہ اس کا اظہار کر بھی چکے ہیں، عمران خان نے تو اس بھی زیادہ بہت کچھ کہا ہوا ہے، اگر سڈیشن (بغاوت) کی بات ہے تو پھر عمران خان سے شروعات ہونی چاہئیے۔

انہوں نے کہا کہ انصاف کا معیار سب کے ساتھ ایک ہونا چاہئیے، نواز شریف کی 2016 کی حکومت کے ساتھ کیا مسئلہ تھا بینظیر کی حکومتوں کے ساتھ کیا مسئلہ تھا؟ 2018 میں عمران خان کی حکومت کو لانے کیلئے بہت کچھ پیروں تلے روندا گیا۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ عمران خان ذہنی طور پر تیار ہیں کہ انہیں گرفتار کیا جاسکتا ہے۔

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 07:50pm

صدر عارف علوی اور مشتعل کارکنان عمران خان کی رہائش گاہ پہنچ گئے

صدر مملک ڈاکٹر عارف علوی لاہور میں پی ٹی آئی کے چئیرمین عمران خان کی رہائش گاہ زمان پارک پہنچ گئے، صدر لاہور کے تین روزہ دورے پر ہیں۔

عمران خان اور صدرعارف علوی موجودہ سیاسی صورتحال پرتبادلہ خیال کریں گے۔

عارف علوی گورنر ہاؤس میں قیام کریں گے اور کل صبح ورچوئل یونیورسٹی کانووکیشن میں شرکت کریں گے۔

صدر مملکت 27 جنوری کو 10 بجے لمز کا دورہ بھی کریں گے۔

دوسری جانب فواد چوہدری کی گرفتاری پر تحریک انصاف کے مشتعل کارکنوں کی بڑی تعداد پارٹی چئیرمین عمران خان کی زمان پارک رہائش گاہ پر موجود ہے۔

زمان پارک میں وزیراعلیٰ گلگت بلتستان اور پی ٹی آئی کے کئی رہنما بھی موجود ہیں۔

شائع 25 جنوری 2023 07:27pm

حکومتی مظالم کیخلاف فوری عدالتوں سے رجوع کریں، پرویز الٰہی کا عمران خان کو مشورہ

<p>عمران خان کا پرویز الٰہی کے مشوروں سے اتفاق۔ فوٹو — فائل</p>

عمران خان کا پرویز الٰہی کے مشوروں سے اتفاق۔ فوٹو — فائل

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان اور رہنما مسلم لیگ (ق) چوہدری پرویز الٰہی کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا ہے۔

ذرائع کے مطابق ٹیلیفونک گفتگو کے دوران دونوں رہنماؤں نے موجودہ سیاسی صورتحال پر طویل مشاورت کی، اس دوران پرویز الٰہی کا کہنا تھا کہ فاشسٹ اقدامات سے اعلیٰ عدلیہ ہی تحفظ دے سکتی ہے۔

سابق وزیراعلیٰ نے کہا کہ پہلے بھی عدلیہ سے انصاف ملا، لہٰذا حکومتی مظالم کے خلاف فوری عدالتوں سے رجوع کریں، صرف عدالتیں ہی حکومتی اوچھے ہتھکنڈوں سے تحفظ دے سکتی ہیں۔ عمران خان نے پرویز الٰہی کے مشوروں سے اتفاق کیا۔

شائع 25 جنوری 2023 06:36pm

نہیں لگتا محسن نقوی الیکشن کرائیں گے، عدلیہ پر بڑی ذمہ داری آنے والی ہے، عمران خان

<p>چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان۔ فوٹو — اسکرین گریب</p>

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان۔ فوٹو — اسکرین گریب

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان کا کہنا ہے کہ مجھے نہیں لگتا محسن نقوی الیکشن کرائیں گے، لہٰذا عدلیہ پر بڑی ذمہ داری آنے والی ہے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ جانوروں کے معاشرے میں انصاف نہیں ہوگا، ایسے معاشرےکو بنانا ری پبلک کہتے ہیں، اس لئے اپنی پارٹی کا نام تحریک انصاف رکھا تھا، ریاست مدینہ کی بنیاد عدل و انصاف پر رکھی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ اسلامی ریاست کے سامنے 2 سپر پاور ڈھیر ہوگئی تھیں، انصاف کی بنیاد پر مسلمانوں نے دنیا کی امامت کی، طاقتور اور کمزور کے لئے الگ قانون ہو تو قوم تباہ ہو جاتی ہے جب کہ ظلم اور ناانصافی کے سامنے کھڑا ہونا جہاد ہے۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے عدلیہ اور وکلاء برادری سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ جس طرح آئین و قانون کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہیں، جنگل کا قانون نافذ کیا جا رہا ہے، آج لوگوں میں امید ختم ہو رہی ہے، 8 لاکھ پاکستانی ملک چھوڑ کر چلے گئے، میرے جدوجہد عوام کے لئے ہے، عوام کو کھڑا ہونا ہوگا، اگر آپ کھڑے نہ ہوئے تو آگے اندھیرا ہے۔

فواد چوہدری کی گرفتاری پر عمران خان نے کہا کہ فواد کو کیوں گرفتار کیا گیا، چیف الیکشن کمشنر پر تنقید پر کون گرفتار ہوتا ہے، اعظم سواتی کو بھی سابق آرمی چیف کے خلاف ٹویٹ کرنے پر گرفتار کیا گیا، ان کے خلاف 30 مقدمات درج ہوئے، البتہ مجھے جیل جانے سے ڈر ہے اور نہ عوام کو ہونا چاہئے۔

نگراں وزیراعلیٰ کے تقرر پر الیکشن کمیشن سے سوال کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 218 کی شق تین کے تحت آپ کا کام صاف و شفاف انتخابات کرانا ہے، آپ نے باقی نام کیوں قبول نہیں کیئے، ہم نے چُن کر نام دیئے تھے اور ہمیں امید تھی کہ ن لیگ انہیں قبول کرلے گی، کس بناء پر محسن نقوی کو نگراں وزیراعلیٰ لگایا گیا۔

عمران خان نے کہا کہ محسن نقوی کا رجیم چینج میں سابق آرمی چیف کے بعد دوسرا اہم کردار تھا، یہ صاف و شفاف الیکشن کرانے نہیں آئے، چیئرمین نیب آفتاب سلطان نے محسن نقوی کے خلاف تحقیقات کی تھیں اور ان کی ہدایات پر محسن نقوی نے 35 لاکھ روپے ادا کیئے تھے، محسن نے آتے ساتھ ہی اپنے کارنامے دکھا دیئے، مگر لاہور ہائیکورٹ کے جج کو سلام پیچ کرتا ہوں جنہوں نے تین بار فواد چوہدری کی پیشی کا حکم دیا۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ پولیس نے ابھی سے ہراساں کرنا شروع کردیا ہے، فواد چوہدری کو گرفتار کیا گیا، ایک سازش کے تحت محسن نقوی کو تقرر کیا گیا، عدلیہ سے ہم انصاف کی توقع رکھتے ہیں، اسی لئے ہم یہ کیس کورٹ لیکر جا رہے ہیں، عدیہ ہمارے حقوق کی حفاظت کریں، قوم کی بھی آپ سے یہ توقع ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عدلیہ کے پاس جانے کے علاوہ ہمارے پاس سڑکوں پر آنے کا موقع ہے لیکن اس سے ملک کو نقصان ہوگا، اسی لئے عدلیہ سے استدعا سے ہمیں تحفظ فراہم کریں۔

وزیرآباد حملے پر عمران خان نے کہا کہ اس حکومت نے آتے ساتھ ہی جے آئی ٹی کو ہٹا دیا، میں خود اپنے حملے کی ایف آئی آر نہیں کٹوا سکا، ڈی پی او گجرات نے حملہ آور کی ویڈیو بنائی، جے آئی ٹی نے افسران سے موبائل فون مانگا، افسران نے جےآئی ٹی میں پیش ہونے سے انکار کردیا تو افسران کے پیچھے کون تھا جو اتنا طاقتور تھا۔

انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ میں کہا گیا 4 سے 5 نامعلوم افراد وہاں موجود تھے، عینی شاہدین، فرنزک، پولی گراف ٹیسٹ سے یہ ثابت ہوا کہ حملہ آور تین تھے، ملزم نوید انتہا پسند نہیں تھا، تربیت یافتہ تھا، 4 جے آئی ٹی ممبران پر دباؤ ڈالا گیا جس کے بعد عدالت میں رپورٹ کی فائنڈنگ تبدیل کردی گئیں، پراسیکیوٹر جنرل نے تسلیم کیا کہ 3 شوٹرز تھے، تفتیشی افسر سعید انور شاہ کو نگراں سیٹ نے آتے ساتھ ہی معطل کردیا گیا۔

صوبوں میں الیکشن کی تاریخ سے متعلق سابق وزیراعظم نے کہا کہ پنجاب اور خیبر پختونخوا گورنر نے اب تک الیکشن کی تاریخ نہیں دی، آئین کے آرٹیکل 105 میں واضح ہے کہ 90 روز میں انتخابات ہونے ہیں، ہم نے اسمبلی تحلیل اس لئے کیں کیونکہ ہمیں نظر آرہا تھا کہ ملک تباہی کی طرف جا رہا ہے، میں نے عدم سے قبل قومیئ اسمبلی بھی توڑ دی تھی۔

عمران خان نے کہا کہ پاکستان میں کبھی بھی قانون کی بالادستی نہیں رہی، انتخابات کیسے التوا کا شکار ہوسکتے ہیں، ملک میں آئین نام کی کوئی چیز ہے یا نہیں، نہیں لگتا کہ محسن نقوی الیکشن کرائیں گے، اسی لئے عدلیہ پر بہت بڑی ذمہ داری آنے والی ہے۔ پی ٹی آئی چیئرمین کا مزید کہنا تھا کہ میں ان چوروں کی غلامی قبول نہیں کروں گا اور آخری گیند، آخری سانس تک مقابلہ کروں گا، عوام بھی آزاد خوف کا بُت توڑ دے۔

شائع 25 جنوری 2023 05:46pm

عمران خان کی سکیورٹی کم کرنے کا امکان، کارکنان کو زمان پارک پہنچنے کی ہدایت

<p>فوٹو — فائل</p>

فوٹو — فائل

لاہور: چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) عمران خان کی سکیورٹی کم کرنے کا امکان ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ عمران خان کو بطور سابق وزیراعظم سکیورٹی دی جائے گی، 500 سے زائد اہلکار تین شفٹ میں سکیورٹی پر مامور ہوں گے۔

دوسری جانب اسد عمر نے تمام اسٹیک ہولڈرز اور پارٹی کارکنان کو زمان پارک پہنچنے کی ہدایت کردی ہے۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رہنما پی ٹی آئی فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ امپورٹڈ حکومت کی کانپیں ٹانگ رہی ہیں، الیکشن کمیشن نے جانبدار نگراں وزیراعلیٰ لگایا۔

انہوں نے کہا کہ فواد چوہدری کو گھر سے اغوا کرکے بغیر نمبر پلیٹ گاڑی میں گھمایا گیا اور پہلے کینٹ کچہری میں پیش کیا گیا، لاہور ہائی کورٹ نے فواد چوہدری کو پیش کرنے کا حکم دیا لیکن انہیں پنجاب پولیس اسلام آباد لیکر چلے گئی۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ پاکستان میں عدالتوں سے زیادہ طاقتور کون ہوگیا ہے، پورا پاکستان عدالتوں کی جانب دیکھ رہا ہے، فواد چوہدری کو پیش نہ کرکے توہین عدالت کی گئی ہے۔

شائع 25 جنوری 2023 05:18pm

ہمیں سیاسی بدلہ لینا ہوتا تو تمام پی ٹی آئی قیادت جیل میں ہوتی، مریم اورنگزیب

<p>فوٹو — پی آئی ڈی/ فائل</p>

فوٹو — پی آئی ڈی/ فائل

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب کا کہنا ہے کہ ہمیں اگر سیاسی سیاسی بدلہ لینا ہوتا تو تمام پی ٹی آئی قیادت جیل کے اندر ہوتی۔

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مریم اورنگزیب نے رہنما تحریک انصاف فواد چوہدری کی گرفتاری کے ردعمل میں کہا کہ فواد کے خلاف ایف آئی آرالیکشن کمیشن نے درج کرائی ہے، انہوں نے کل رات اور گذشتہ چند دنوں میں الیکشن کمیشن اراکین کو دھمکیاں دیں۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ نواز شریف اور ان کی بیٹی مریم نواز کو گرفتار کیا گیا، شاہ خاقان کو میرے سامنے گرفتار کیا گیا، وہ سیاسی گرفتاریاں ہوتی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ پارٹی چینلزکے ذریعے ہمارے رہمناؤں کے خلاف مہم چلائی گئی، پی ٹی آئی نے حکومت کے دوران سیاسی کارکنوں کے خاندانوں کے خلاف اقدام لیے، پوری اپوزیشن کو جیلوں میں ڈالا گیا، بہنوں بیٹیوں کی بے حرمتی کی گئی۔

مریم اورنگزیب کا کہنا تھا کہ یہ اگر سیاسی گرفتاری ہوتی تو بہت مہینے پہلے پی ٹی آئی کے تمام اراکین گرفتار ہوتے، کسی کو استثنیٰ حاصل نہیں ہے، اگرتین دفعہ کے وزیراعظم عدالتوں میں پیش ہوسکتے ہیں تو عمران خان کیوں نہیں پیش ہوتے، البتہ ہمیں سیاسی بدلہ لینا ہوتا تو تمام پی ٹی آئی قیادت جیل کے اندر ہوتی۔

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 04:46pm

امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتار نہیں کر سکتی، عمران خان

<p>پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان</p>

پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتاری نہیں کر سکتی۔

پاکستان تحریک انصاف نے عمران خان کی ممکنہ گرفتاری کے حوالے سے مشاورت مکمل کرلی، عمران خان نے تحریک انصاف کی مرکزی قیادت کو ہدایت جاری کر دی۔

اس موقع پر چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے سینئر رہنماؤں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کے اپنے کیسز عدالتوں میں چل رہے ہیں، امپورٹڈ حکومت مجھے کبھی گرفتاری نہیں کر سکتی، 22 کروڑ عوام تحریک انصاف کے ساتھ کھڑے ہیں، فواد چوہدری تحریک انصاف کے ہر اول دستے کے کارکن ہیں۔

فواد چوہدری کی گرفتاری، پی ٹی آئی کا ملک گیر احتجاج کا فیصلہ

پی ٹی آئی کے مرکزی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری کے معاملے پر پاکستان تحریک انصاف نے ملک گیر احتجاج کا فیصلہ کرلیا۔

تحریک انصاف کے کارکن مختلف شفٹ میں عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر احتجاج کریں گے۔

پہلے مرحلے میں لاہور کے مختلف ٹاؤن کے ورکرز زمان پارک کے باہر ڈیوٹی دیں گے،ایک دن میں ایک ٹاؤن کے ورکرز صبح شام دو شفٹ میں زمان پارک کے باہر پہنچیں گے ۔

دوسرے مرحلے میں دیگر اضلاع کے کارکن بھی زمان پارک میں ڈیوٹی سر انجام دیں گے،سینئر قیادت نے اس حوالے سے تمام ٹاؤنز اور ضلعی صدور کو ہدایت جاری کر دیں۔

عمران خان نے پی ٹی آئی کی سینئر قیادت کا اجلاس آج طلب کرلیا

دوسری جانب عمران خان نے پی ٹی آئی کی سینئر قیادت کا اجلاس آج زمان پارک میں طلب کرلیا ، اجلاس میں پارٹی کے سینئر وکلاء بھی شریک ہوں گے۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان سینئر رہنماوں سے موجوہ صورتحال پر مشاورت کریں گے۔

ذرائع کے مطابق حکومت کی انتقامی کارروائیوں پر پارٹی اپنا آئندہ کا لائحہ عمل تیار کرے گی جبکہ حکومت کی جانب سے الیکشن میں تاخیر سے متعلق بھی تبادلہ خیال ہوگا۔

اجلاس میں پارٹی کے دیگر رہنماؤں کی ممکنہ گرفتاریوں کے ردعمل کی حکمت عملی پر مشاورت ہوگی۔

عمران خان نے پارٹی رہنماوں کو آج کے اجلاس کے لئے ٹھوس تجاویز پیش کرنے کی ہدایت دے دی۔

ادھر سابق وزیراعظم عمران خان نے فواد چودھری کی اہلیہ کو بھی فون کرکے یکجہتی کا اظہار کیا۔

آج شام 4بجے میڈیا سے گفتگو کروں گا، عمران خان

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ میں آج شام 4بجے میڈیا سے گفتگو کروں گا، فواد چوہدری کی گرفتاری کے بعد کوئی شک نہیں رہا کہ پاکستان ایک بنانا ری پبلک بن چکا ہے،ایساملک جہاں قانون کی حکمرانی نہیں ،ہمیں اپنے بنیادی حقوق کے لئے کھڑاہوناہوگا۔

عمران خان نے اپنےٹویٹ میں مزید کہا کہ پاکستان اس جانب جارہاہے جہاں سے واپسی ممکن نہیں،ہمیں پاکستان کو بچانا ہے۔

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 04:00pm

جہلم میں فواد چوہدری کے بھائی کو گرفتار کرلیا گیا

<p>تصویر: اے پی پی/فائل</p>

تصویر: اے پی پی/فائل

پولیس نے جہلم میں فواد چوہدری کے بھائی فراز چوہدری کو بھی گرفتار کرلیا ہے۔

فواد چوہدری کے بھائی فراز چوہدری کو تھانہ سٹی منتقل کرنے کے بعد تھانے کے دروازے بند کردیئے ہیں جبکہ ملاقات پر پابندی عائد کردی ہے۔

فراز چوہدری نے ویڈیو بیان میں کہا کہ ڈی پی او ڈاکٹر فہد مصطفی نے گرفتار کرکے تشدد کیا ہے۔

کارکنان نے ٹائر جلا کر جی ٹی روڈ بلاک کردی جبکہ پولیس نے مظاہرین پرلاٹھی چارج کیا اور کئی کارکنان کو گرفتار بھی کیا ہے۔

شائع 25 جنوری 2023 03:56pm

’پرویزالہٰی کو آپ نےخود ذبح کیا ہے ہم نے نہیں‘

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما عابد شیر علی کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری کی گرفتاری قانونی طریقے سےعمل میں آئی، انہیں کس نےاختیار دیا تھا کہ آئینی اداروں کو دھمکیاں دیں۔

لیگی رہنما عطاء اللہ تارڑ کے ہمراہ کی گئی پریس کانفرنس میں عابد شیرعلی نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے دیئے گئے چھ ناموں میں سے ایک نام فائنل کیا، پی ٹی آئی خود مختار الیکشن کمیشن پر تنقید کرتی رہی ہے۔

لیگی رہنما نے کہا کہ ہمارے لوگوں کے خلاف جھوٹے مقدمات بنائے گئے، پی ٹی آئی نے ہنستے بستے پاکستان کو تباہ کردیا۔

ان کا کہنا تھا کہ پرویزالہٰی کو آپ نےذبح کیا ہے ہم نے نہیں، کے پی اور پنجاب اسمبلیاں آپ نے تحلیل کیں ہم نے نہیں۔

اس موقع پر عطاء اللہ تارڑ کا کہنا تھا کہ ان کی عادتیں بگڑی ہوئی ہیں ، فواد چوہدری نے نہال ہاشمی جیسا جرم کیا، پرچہ کٹ گیا تو ایسا کیا ہوگیا، کون سی قیامت آگئی۔

عطاء تارڑ کا کہنا تھا کہ نواز شریف کو بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر نکالا گیا تھا۔ انصاف کا معیار دہرا نہیں ہوسکتا۔

انہوں نے کہا کہ پنجاب اور کے پی حکومتیں آپ نے خود ختم کی ہیں، نگراں حکومت کیلئے مشاورت بھی کی گئی لیکن فیصلہ نہ ہوسکا۔

شائع 25 جنوری 2023 03:44pm

’اس وقت جٹ برادری کا وقت اچھا نہیں ہے‘

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما شہباز گل کا کہنا ہے کہ اس وقت جٹ برادری کا وقت اچھا نہیں ہے، ہمارا فوکس لاہور ہائیکورٹ پر ہے۔

سروسز ہسپتال میں فواد چوہدری سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہباز گل نے اطلاعات ہیں فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جایا جائے گا، مگر عدالت سے مطالبہ ہے کہ انہیں لاہور سے ابھی نہ بھیجا جائے۔

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 03:37pm

فواد چوہدری کا طبی معائنہ: رپورٹس نارمل، تشدد کے نشان نہیں پائے گئے

<p>فوٹو۔۔۔۔ فائل</p>

فوٹو۔۔۔۔ فائل

لاہور میں عدالتی حکم کے مطابق پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کا سروسز ہسپتال لاہور میں مکمل طبی معائنہ کیا گیا، جن کی ابتدائی رپورٹ کے مطابق تمام ٹیسٹ نارمل رہے۔ میڈیکو لیگل رپورٹ میں بھی تشدد کے نشان نہیں پائے گئے۔

بارہ بجے کے قریب فواد چوہدری ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ آفس پہنچے۔ جہاں ان کے بلڈ ٹیسٹ، ای سی جی، گردوں، میڈیکو لیگل اور ایکسرے سمیت دیگر ضروری ٹیسٹ لئے گئے۔

ابتدائی رپورٹ کے مطابق فواد چوہدری کو صحت سے متعلق کوئی خطرہ نہیں۔

ڈاکٹرز کے مطابق فواد چوہدری کا بلڈ شوگر 183، بلڈ پریشر 160 معمول سے زیادہ ہے، مگر عمر کے مطابق یہ نارمل تصور کیے جاتے ہیں۔

ماہر نفسیات نے بھی فواد چوہدری کا چیک اپ کیا۔ فواد چوہدری نفسیاتی دباؤ کے شکار پائے گئے اور پہلے سے ہی ذہنی دباؤ کی ادویات بھی استعمال کر رہے ہیں۔

ڈاکٹرز کے مطابق میڈیکولیگل ٹیسٹ میں فواد چوہدری کے جسم پر تشدد کے نشانات نہیں پائے گئے۔

ڈیڑھ گھنٹہ سروسز ہسپتال میں طبی معائنے کے بعد پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کو لیکر پولیس کی ٹیم روانہ ہوگئی۔

شائع 25 جنوری 2023 03:29pm

فواد کی اسلام آباد منتقلی، پی ٹی آئی کارکن پولیس کے پیچھے پڑگئے

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما اور کارکن پولیس کے پیچھے پڑ گئے، جہاں جہاں پولیس وہاں وہاں کارکن پہنچ گئے۔

پی ٹی آئی رہنما فرخ حبیب کا کہنا نہے کہپی ٹی آئی کے کارکن اور رہنما پولیس کا پیچھا نہیں چھوڑ رہے، پولیس فواد چوہدری کو جہاں بھی لے جارہی ہے کارکن اس کے پیچھے ہیں۔

پولیس نے فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جانے کی کوشش کی تو فرخ حبیب نے مزاحمت کی۔

فرخ نے دعویٰ کیا کہ ہمارے اوپر فائر بھی کیا گیا، فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جایا جارہا ہے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ لاہور ہائیکورٹ کے واضح احکامات کو نظر انداز کیا جارہا ہے، ہم نے کالا شاہ کاکو روک کر پولیس کو دہائی دی، ہمارے اوپر فائر بھی کیا گیا۔

شائع 25 جنوری 2023 02:44pm

فواد چوہدری کی گرفتاری جلتی پر پیڑول کا کام کرے گی، شیخ رشید

<p>فوٹو۔۔۔۔۔۔ اے ایف پی</p>

فوٹو۔۔۔۔۔۔ اے ایف پی

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ فواد چوہدری کی گرفتاری جلتی پر پیڑول کا کام کرے گی، چھوٹا بھائی پرائم منسٹر ہے اور بڑے بھائی کےپاکستان آنےپر پاؤں میں مہندی لگی ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں شیخ رشید نے کہا کہ 90دنوں میں2صوبائی اسمبلیوں میں الیکشن ہونے جارہے ہیں اورالیکشن کمیشن سیاست دانوں پرپرچےکٹوارہاہےجو اس کا کام نہیں،الیکشن کمیشن اپنی ساکھ کواتنا نہ گرائے کہ قوم کا الیکشن سے اعتبار اٹھ جائے ۔

سابق وزیرداخلہ نے کہا کہ ایف آئی آرپڑھ کر اندازاہ ہوا یہ کیس عدالت میں 2 نفلوں کی مارہے، قوم کو الیکشن کی طرف جانے دیا جائے ورنہ قوم سڑکوں پر فیصلہ کرے گی۔

شیخ رشید نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ الیکشن کمیشن کا کام پرچے کروانا نہیں بلکہ الیکشن کروانا ہے، حکومت کے ارادے واضح ہو چے ہیں، عوام کو سمجھ جانا چاہیئے کہ یہ الیکشن نہیں، کچھ اور کرنے جا رہے ہیں ۔

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری پر ردعمل دیتے ہوئے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ نے کہا کہ ان کی گرفتاری میں الیکشن کمیشن سیاسی فریق بن گیا ہے، آئی ایم ایف کی شرائط سے پہلے گرفتاریوں کا دور شروع ہوگا، جس کے بعد جام حکومت کا سڑکوں پر کام تمام ہو جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ جو قوم الیکشن کمیشن پر اعتبار نہیں کر رہی، وہ الیکشن کے نتائج پر کیا خاک اعتبارکرے گی، چھوٹا بھائی پرائم منسٹرہےاور بڑے بھائی کےپاکستان آنےپر پاؤں میں مہندی لگی ہے، الیکشن کا مطالبہ کرنےوالے الیکشن پرجانےکےلئے تیار نہیں ہیں، نیب ترامیم سے فائدہ اٹھانے والے عنقریب قوم کے احتساب کی بھینٹ چڑھیں گے۔

سابق وفاقی وزیر داخلہ کا مزید کہنا تھا کہ زرمبادلہ کےذخائر4بلین سےکم اور آئی ایم ایف کی شرائط سرپر ہیں، وزیروں کاجمعہ بازارلگاہے، سیاسی اقتصادی معاشی اور توانائی کا بحران حکومت کے گلے پڑنے والا ہے، ملک جام ہےحکومت کاکام تمام ہے، فواد کی گرفتاری جلتی پر پیڑول کا کام کرے گی، اب ملک الیکشن کے بجائے تشدد کی راہ پر چل پڑا ہے فیصلے سڑکوں پر ہوں گے۔

شائع 25 جنوری 2023 02:25pm

فواد چوہدری کی گرفتاری پر مونس الٰہی کا تبصرہ

<ul>
<li>تصویر/فائل</li>
</ul>
  • تصویر/فائل

فواد چوہدری کی گرفتاری پر پی ٹی آئی کے اہم اتحادی اور مسلم لیگ ق کے رہنما مونس الٰہی کا کہنا ہے کہ انہوں نے غلط بندے سے پنگا لے لیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما کی گرفتاری پر تبصرہ کرنے والے مونس الٰہی نے اپنی ٹویٹ میں بتایا کہ انہوں نے فواد چوہدری کی اہلیہ سے ٹیلیفونیک رابطہ کیا ہے۔

مونس الٰہی نے لکھا، ’خوشی ہوئی کہ فواد چوہدری کی اہلیہ بلند حوصلہ خاتون ہیں‘۔

فواد چوہدری کی گرفتاری پر اپنے ردعمل میں مونس الٰہی کا مزید کہناتھا کہ ، ’انہوں(سیاسی مخالفین) نے غلط بندے کو اٹھا کر جھگڑا مول لیا ہے‘۔

فواد چوہدری کے خلاف اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج ہے، جو سیکرٹری الیکشن کمیشن کی درخواست پر کیا گیا ہے۔

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 01:49pm

فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ منظور، اسلام آباد لے جانے کی اجازت

<p>تصویر بشکریہ: پی ٹی آئی/ٹوئٹر</p>

تصویر بشکریہ: پی ٹی آئی/ٹوئٹر

لاہور کی کینٹ کچہری نے پاکستان تحریک انصاف کے گرفتار رہنما فواد چوہدری کا راہداری ریمانڈ دیتے ہوئے انہیں اسلام آباد لے جانے کی اجازت دے دی۔

پولیس کی جانب سے راہداری ریمانڈ کی استدعا پر اب سے کچھ دیرقبل عدالت نے راہداری ریمانڈ پر فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

جوڈیشل مجسٹریٹ نے فواد چوہدری کا سروسز اسپتال سے میڈیکل کرانے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری کو آج ہی اسلام آباد کی متعلقہ عدالت میں پیش کیا جائے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ پولیس بتائےمجھے کیوں گرفتار کیا گیا؟ انہوں نے ایف آئی آر پڑھوانے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ پولیس کو دیکھ کر لگتا ہے گینگ وار ہونے والی ہے۔

جوڈیشل مجسٹریٹ کی جانب سے راہداری ریمانڈ کی درخواست نمٹانے کے بعد پولیس حکام فواد چوہدری کو لیکرعدالت سے روانہ ہو گئے۔

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کو ہتھکڑیاں لگا کر عدالت میں پیش کیا گیا۔

پی ٹی آئی رہنما کے وکیل نےعدالت میں کہا کہ فواد چوہدری کو حبس بے جا میں رکھنے کے خلاف ہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی گئی ہے وہاں سے فیصلہ آنے کے بعد ہی عدالت کوئی فیصلہ سنائے۔

وکیل نے فواد چوہدری کےدونوں ہاتھوں میں ہتھکڑی لگانے پر بھی تحفظات کا اظہار کیا۔ عدالت سے فواد چوہدری کا میڈیکل کروانے کی بھی درخواست کی گئی۔

فواد چوہدری کے وکیل منیر بھٹی ایڈووکیٹ نے کہا کہ تمام بار ایسوسی ایشن کی متفقہ قرارداد ہے کہ وکیل کو ہتھکڑی نہیں لگائی جائیگی۔ فواد چوہدری کی ہتھکڑی کھلوانے کا فیصلہ کیا جائے۔

فواد چوہدری کا مزید کہنا تھا کہ وہ ایسے مقدمات سے نہیں گھبراتے، نیلسن منڈیلا جیسے عظیم لیڈرکے خلاف بھی ایسے مقدمات درج کیے گئے۔

فواد چودری کو علی الصبح لاہورسے حراست میں لیا گیا تھا، ان کیخلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

پی ٹی آئی نے کچھ دیر قبل اپنے آفیشل ٹوئٹر پیج سے ویڈیو شیئرکرتے ہوئے بتایا تھا کہ فواد چوہدری کو کینٹ کچہری کی طرف روانہ کردیا گیا ہے۔

پی ٹی آئی کارکنوں کے ممکنہ ردعمل اور تصادم سے بچنے کے لیے کینٹ کچہری کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔

پی ٹی آئی کی جانب سے شیئرکی جانے والی ویڈیومیں بتایا گیا ہے کہ ، ’ فواد چوہدری کو درجنوں پولیس, CTD اور نامعلوم گاڑیوں کے حصار میں کینٹ کچہری کی طرف روانہ کر دیا گیا“-

راہداری ریمانڈ لینے کے بعد فوادچوہدری کو کینٹ کچہری سے بذریعہ موٹروے اسلام آباد لے جایا جائے گا۔

بذریعہ روڈ لاہور تا اسلام آباد 5 گھنٹے کا سفرہے، ذرائع کے مطابق پی ٹی آئی رہنما کو تھانہ کوہسار میں پیش کیے جانے کے بعد باضابطہ گرفتاری ڈالی جائے گی، ڈیوٹی مجسٹریٹ کے موجود ہونے کی صورت میں انہیں آج ہی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

فواد چوہدری کو گرفتاری کے بعد کہاں رکھا گیا، حماد اظہرنے لائیولوکیشن شیئرکردی

بصورت دیگرفواد چوہدری کو کل عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو علی الصبح حراست میں لیا گیا تھا، ان کیخلاف سیکرٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو علی الصبح حراست میں لیا گیا تھا، ان کیخلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

الیکشن کمیشن حکام کو دھمکیاں دینے پر فواد چوہدری لاہور سے گرفتار

مقدمے کے متن کے مطابق فواد چوہدری نے اشتعال انگیز تقریر کی اور کہا کہ، ”الیکشن کمیشن کی حیثیت ایک منشی کی ہے، الیکشن کمشنر کلرک کی طرح سائن کردیتا ہے، آپ کا پیچھا سزا دلوانے تک کریں گے، پاکستان کے عوام اس ظلم کو معاف نہیں کریں گے“۔

متن میں مزیددرج ہے کہ ، ”الیکشن کمشنر، دیگر ممبران اور ان کے خاندانوں کو ڈرایا دھماکایا گیا، ریاست کے انتخابی عمل میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی گئی، چیف الیکشن کمشنر کو اس لئے ڈرایا گیا تاکہ وہ اپنے فرائض انجام نہ دے سکیں۔“

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 12:54pm

پی ٹی آئی کو عمران خان کی گرفتاری کا خدشہ، زمان پارک پر کارکنوں کی بڑی تعداد موجود

<p>چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان</p>

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان

فواد چوہدری کی گرفتاری سے قبل خبریں گرم تھیں کہ پولیس پی ٹی آئی سربراہ عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے، رات گئے کارکن زمان پارک پہنچ گئے، حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔وقت گزرنے کے ساتھ ان کارکنوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے۔

خود پی ٹی آئی کی جانب سے خدشہ ظاہر کیا گیا کہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب پولیس عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے۔

اس حوالے سے نصف شب کو لاہور میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ عمران خان زمان پارک میں موجود ہیں، آؤ گرفتارکرکے دکھاؤ۔

انہوں نے کہاکہ عمران خان کوگرفتارکرناپاکستان کےخلاف ایک سازش ہے، پولیس میں ہمت ہے تو خان کو گرفتار کرے،پاکستان کواس وقت معاشی بحران کاسامنا ہے، حکومت پاکستان کو نقصان پہنچا رہی ہے۔

فواد چوہدری نے کہاکہ حکومت ملک میں الیکشن کرائے، ہوش کےناخن لیں،پاکستان کوکسی امتحان میں نہ ڈالیں،حکومت عمران خان اورعوام سے خوفزدہ ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہاکہ عمران خان کو گرفتار کیا گیا تو پورے پاکستان میں لاک ڈاؤن ہوگا۔

ادھر سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پرجاری پیغام میں پاکستان تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ کہ اطلاعات ہیں کہ کٹھ پتلی حکومت آج رات چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کو گرفتار کرنے کی کوشش کرے گی، کارکنوں کو زمان پارک پہنچنے کی ہدایت کردی گئی۔

پی ٹی آئی کےآفیشل ٹوئٹراکاؤنٹ سےکارکنان کے لئےہدایت جاری کی گئی ہیں۔

شائع 25 جنوری 2023 12:47pm

محسن نقوی نے بغیر کسی تاخیر کام شروع کردیا، شاہ محمود قریشی

<p>فوٹو۔۔۔۔۔ فائل</p>

فوٹو۔۔۔۔۔ فائل

فواد چوہدری کی گرفتاری پر پی ٹی آئی کا شدید ردعمل سامنے آگیا، شاہ محمود قریشی نے سوال اٹھایا کہ فواد چوہدری کو کس جرم کے تحت اٹھایا گیا؟شبلی فراز، شفقت محمود اور مسرت جمشید چیمہ نے بھی گرفتاری کی مذمت کردی۔

سابق وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ فواد چوہدری کی بغیر وارنٹ گرفتاری جمہوریت پر زوردار طمانچہ ہے، پاکستان کے ساتھ کھلواڑ بند کیا جائے ورنہ حالات کسی کے قابو میں نہیں رہیں گے۔

شاہ محمود قریشی نے مزید کہا کہ جنگوں کے بھی کوئی اصول ہوتے ہیں لیکن یہاں تمام حدود کو پھلانگنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے،یہ لوگ عمران خان کی مقبولیت کے خوف سے پورے ملک کو داؤ پر لگانا چاہتے ہیں، یہ کیسی سیاست ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ محسن نقوی کے آنے سے انتخابات متنازع ہوگئے، سی سی پی او لاہور انہیں ہی بنایا گیا جنہوں نے 25 مئی کو تشدد کیا،قوم سے جو کھیل کھیلا جارہا ہے وہ پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے۔

پی ٹی آئی رہنماشبلی فراز نے فواد چوہدری کی گرفتاری کو حکومت کی بزدلی قرار دیتے ہوئے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ محسن نقوی کوجس گھناؤنےمقصد کے لئے لایا گیا تھا اس نے وہ کام بغیر کسی دیر کیے شروع کردیا ہے۔

سابق وفاقی وزیر شفقت محمود نے کہا کہ ایسی حرکتیں ہماری آواز بندنہیں کرسکتیں، جمہوریت کے لئے جدوجہد جاری رہے گی۔

ترجمان پنجاب حکومت مسرت جمشید چیمہ نے کہا کہ گرفتاریاں اور تشدد ہمیں ہمارے نظریے سے نہیں ہٹا سکتیں۔

شائع 25 جنوری 2023 12:23pm

’یہ گرفتاری نہیں اغواء ہے‘، فواد چوہدری کی اہلیہ کا ردعمل

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری پر ان کی اہلیہ حبا فواد کا ردعمل بھی سامنے آگیا ہے، خاوند کے اغواء کی ایف آئی آر درج کرنے کی درخواست کردی۔

فواد چودری کو علی الصبح لاہورمیں ان کی رہائشگاہ سے حراست میں لیا گیا تھا، ان کیخلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

اس گرفتاری کے حوالے سے فواد چوہدری کی اہلیہ کا کہنا ہے کہ ، ’یہ گرفتاری نہیں اغواءہے‘۔

نجی چینل سے گفتگو میں حبا فواد نے بتایا کہ 8 سے 10 پولیس والے دروازہ کھول کر ہمارے گھرمیں داخل ہوئے اور کسی قسم کی دستاویز دکھائے بغیرفواد کو لے گئے، ہم اسے گرفتاری نہیں اغواء کہیں گے۔

حبا فواد کاکہنا تھا کہ امپورٹڈ حکومت جو کچھ کررہی ہے یا جس نے بھی فواد کواٹھایا، ہمیں یہ تو بتائیں کہ انہیں کس قانون کے تحت گرفتارکیا گیا۔ کسی نے ہم سے رابطہ نہیں کیا، بس فواد کو 4 ڈالوں میں آنے والے بٹھا کرلے گئے اور ان کا فون بھی لے لیا گیا۔’

انہوں نے اپنے تحفطات ظاہرکرتے ہوئے کہا کہ ، ’ہمیں کچھ علم نہیں کہ فواد کو کہاں لے کرگئے ہیں، پنجاب میں متعلقہ تھانوں سے رابطہ کیا لیکن کوئی معلومات فراہم نہیں کی گئیں۔یہ کیسا ملک ہے اور کیسا قانون ہے کہ ہم اپنے گھرمیں ہی محفوظ نہیں، لوگ گھرمیں گھسیں گے اور ہمیں اٹھا کرلے جائیں گے‘۔

فواد چوہدری کی اہلیہ نے چیف جسٹس اور وزیراعظم سے درخواست کی کہ فواد چوہدری کے اغواء کی ایف آئی آردرج کی جائے۔

شائع 25 جنوری 2023 12:17pm

فواد چوہدری کی گرفتاری لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج

<p>تصویر بشکریہ: پی ٹی آئی/ٹوئٹر</p>

تصویر بشکریہ: پی ٹی آئی/ٹوئٹر

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا گیا ہے۔

سابق وفاقی وزیر فواد چوہدری کی گرفتاری کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست احمد پنسوتا ایڈووکیٹ کی جانب سے داٸر کی گٸی۔

احمد پنسوتا ایڈووکیٹ نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ فواد چوہدری کی گرفتاری غیر قانونی ہے، فواد چوہدری کو ایف آئی آر تک نہیں دکھائی گئی ۔

وکیل درخواست گزار نے مؤقف اپنایا کہ پولیس نے گرفتاری کی وجوہات نہیں بتائیں،فوادچوہدری سپریم کورٹ کےوکیل اورسابق وفاقی وزیرہیں۔

احمد پنسوتا ایڈووکیٹ نے درخواست میں عدالت سے استدعا کہ فوادچوہدری کی گرفتاری کو غیر قانونی اور کالعدم قرار دیا جائے۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو علی الصبح حراست میں لیا گیا تھا، ان کے خلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا تھا۔

گرفتاری کے بعد پولیس نے فواد چوہدری کو کینٹ کچہری میں پیش کیا۔

عدالت نے سابق وفاقی وزیر اطلاعات کا راہدری ریمانڈ منظور کرتے ہوئے فواد چوہدری کو اسلام آباد لے جانے کی اجازت دے دی ۔

جوڈیشل مجسٹریٹ نے فواد چوہدری کا سروسز اسپتال سے میڈیکل کرانے کا حکم بھی دیا ہے۔

بعدازاں پولیس حکام فواد چوہدری کو لے کر عدالت سے روانہ ہو گئے۔

شائع 25 جنوری 2023 11:47am

’عوام ایوانوں کا رُخ کرکے اپنا حق چھین لے‘

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری پر پارٹی کارکنوں کی جانب سے شدید ردعمل ظاہرکیا جارہا ہے۔

فواد چوہدری کو علی الصبح لاہورسے حراست میں لیا گیا تھا، ان کیخلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

اس گرفتاری سے قبل خبریں گرم تھیں کہ پولیس عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے جس کے بعد کارکن رات گئے زمان پارک پہنچ گئے تھے۔ خود پی ٹی آئی کی جانب سے بھی خدشہ ظاہر کیا گیا کہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب پولیس عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے۔

فوادچوہدری کی اچانک گرفتاری کی خبر پی ٹی آئی کے حامیوں پر بجلی بن کر گری جنہوں نے سوشل میڈیا پر کُھل کراپنے جذبات کا اظہارکیا۔ ٹوئٹرپر ہیش ٹیگ ’ فواد چوہدری کو رہا کرو’ ٹاپ ٹرینڈز میں شامل ہے۔

فواد چوہدری کو کینٹ کچہری میں پیش کیے جانے کے موقع پر ان کی ہتھکڑیاں لگی تصویرشیئر کرتے ہوئے مسکراہٹ پرغور کرنے کو کہا گیا۔

غلام مرتضیٰ نامی صارف نے فواد چوہدری کا الیکشمن کمیشن کے خلاف بیان شیئر کرتے ہوئے لکھا ’ کمپنی کو آئینہ دکھایا تو برا مان گئے’۔

ملک وقار نامی صارف نے جہلم جی ٹی روڈ ’بلاک‘ کیے جانے کی اطلاع دی۔

ایک صارف نے شکوہ کرتے ہوئے عوام کو مشورہ دیا کہ اپنا حق خود چھین لیں۔

قرثم نامی صارف نے فواد چوہدری کی گرفتاری کا ذمہ دار شہباز شریف حکومت اور نگراں وزیراعلیٰ پنجاب کو قراردیتے ہوئے اسے شفاف انتخابات روکنے کیلئے پہلا قدم قرار دیا۔

پی ٹی آئی رہنما کے خلاف درج مقدمے کے متن کے مطابق انہوں نے اشتعال انگیز تقریر کی اور کہا کہ، ”الیکشن کمیشن کی حیثیت ایک منشی کی ہے، الیکشن کمشنر کلرک کی طرح سائن کردیتا ہے، آپ کا پیچھا سزا دلوانے تک کریں گے، پاکستان کے عوام اس ظلم کو معاف نہیں کریں گے“۔

متن میں مزیددرج ہے کہ ، ”الیکشن کمشنر، دیگر ممبران اور ان کے خاندانوں کو ڈرایا دھماکایا گیا، ریاست کے انتخابی عمل میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی گئی، چیف الیکشن کمشنر کو اس لئے ڈرایا گیا تاکہ وہ اپنے فرائض انجام نہ دے سکیں۔“

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 11:06am

فواد چوہدری کو گرفتاری کے بعد کہاں رکھا گیا، حماد اظہرنے لائیولوکیشن شیئرکردی

<p>تصویر بشکریہ : پی آئی ڈی</p>

تصویر بشکریہ : پی آئی ڈی

پی ٹی آئی رہنما حماد چوہدری نے فواد چوہدری کی لاہور سے گرفتاری کے بعد بتایا ہے کہ انہیں کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) میں رکھا گیا ہے۔

ٹوئٹر پرتصویرشیئرکرنے والے حماد اظہرنے لکھا کہ ، ’سی ٹی ڈی پولیس ٹریننگ سنٹر پرسیکیورٹی کی بھاری نفری موجود ہے۔ انہوں نے یہاں کوئی دہشت گرد نہیں بلکہ دلیر فواد چوہدری کو پکڑرکھا ہے‘۔

تاہم کچھ ہی دیر بعد حماد اظہر نے اپنی یہ ٹویٹ ڈیلیٹ کردی۔

اب انہوں نے پی ٹی آئی رہنما کی سی ٹی ڈی ضلعی آفس لاہورمیں موجودگی کی اطلاع دیتے ہوئے لوکیشن بھی شیئرکی ہے۔

حماد اظہر کے مطابق انہیں فواد چوہدری سے ملنے کی اجازت نہیں دی جارہی اور نہ ہی کسی افسر کو مجھ سے بات کرنے کی اجازت دی گئی ہے۔

انہوں نے پولیس کی گاڑیوں کی فوٹیج شیئرکرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ان گاڑیوں میں فواد چوہدری کو گرفتارکرکے لے جایاجارہا ہے۔

اس سے قبل عمران خان کی رہائشگاہ زمان پارک کے باہر میڈیا ٹاک میں حماد اظہرکا کہنا تھا کہ فواد چوہدری کو بغیرنمبرپلیٹ ڈالے میں اغوا کیا گیا، انہیں ایسے حراست میں لیا گیا جیسے کہ دہشتگرد ہوں۔

حماد اظہر کا یہ بھی پوچھنا تھا کہ بتایا جائے فواد چوہدری کو کہاں رکھا گیا ہے.

اطلاعات ہیں کہ فواد چوہدری کواسلام آباد پولیس نے لاہور سے گرفتار کیا، ان کا راہداری ریمانڈ لینے کے بعد اسلام آباد منتقل کیا جائے گا۔

فواد چوہدری کو لاہور کے سیشن کورٹ سے راہداری ریمانڈ کے بعد اسلام آباد منتقل کردیا جائے گا۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو علی الصبح حراست میں لیا گیا تھا، ان کیخلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

مقدمے کے متن کے مطابق فواد چوہدری نے اشتعال انگیز تقریر کی اور کہا کہ، ”الیکشن کمیشن کی حیثیت ایک منشی کی ہے، الیکشن کمشنر کلرک کی طرح سائن کردیتا ہے، آپ کا پیچھا سزا دلوانے تک کریں گے، پاکستان کے عوام اس ظلم کو معاف نہیں کریں گے“۔

متن میں مزیددرج ہے کہ ، ”الیکشن کمشنر، دیگر ممبران اور ان کے خاندانوں کو ڈرایا دھماکایا گیا، ریاست کے انتخابی عمل میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی گئی، چیف الیکشن کمشنر کو اس لئے ڈرایا گیا تاکہ وہ اپنے فرائض انجام نہ دے سکیں۔“

اپ ڈیٹ 25 جنوری 2023 10:14am

الیکشن کمیشن حکام کو دھمکیاں دینے پر فواد چوہدری لاہور سے گرفتار

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کو پولیس نے لاہور میں ان کے گھر سے گرفتار کر لیا ہے۔

ان کی گرفتاری کی خبرسب سے پہلے پارٹی رہنما رہنما فرخ حبیب نے دی۔

ذرائع کے مطابق فواد چوہدری کے خلاف اسلام آباد کے تھانہ کہسار میں مقدمہ درج ہے۔

فرخ حبیب نے فواد چوہدری کو گرفتارکر کے لے جانے والی پولیس گاڑی کی ویڈیو ٹوئٹر پر شئیر کرتے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری کو پولیس نے گھر سے گرفتار کیا، میں نے پولیس کی گاڑی کا پیچھا کیا، روکنے کی کوشش بھی کی۔

فرخ حبیب کے مطابق فواد چوہدری کوٹھوکرنیازبیگ سےشہرسےباہرلےکرجایاگیا، اور پولیس انہیں اسلام آبادکی طرف لے کرگئی ہے۔

ایک اور پی ٹی آئی رہنما حماد اظہر اور فواد چوہدری کے بھائی فیصل حسین کا کہنا ہے کہ فواد کو بغیر نمبر پلیٹ والی گاڑی میں آئے اہلکاروں نے گرفتار کیا۔

تھانہ کہسار میں مقدمہ

آج نیوز کے مطابق فواد فواد چوہدری کے خلاف مقدمے کی تفصیلات سامنے آگئی ہیں۔

مقدمے کے متن کے مطابق فواد چوہدری کے خلاف مقدمہ گزشتہ رات تھانہ کوہسار میں درج کیا گیا، یہ مقدمہ سیکرٹری الیکشن کمیشن عمر حمید کی درخواست پر درج کیا گیا۔

مقدمے کے متن میں کہا گیا ہے کہ فواد چوہدری نے اشتعال انگیز تقریر کی، انہوں نے کہا کہ فواد چوہدری نے کہا کہ الیکشن کمیشن کی حیثیت ایک منشی کی ہے، الیکشن کمشنر کلرک کی طرح سائن کردیتا ہے، آپ کا پیچھا سزا دلوانے تک کریں گے، پاکستان کے عوام اس ظلم کو معاف نہیں کریں گے۔

متن میں مزید کہا گیا ہے کہ الیکشن کمشنر، دیگر ممبران اور ان کے خاندانوں کو ڈرایا دھماکایا گیا، ریاست کے انتخابی عمل میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی گئی، چیف الیکشن کمشنر کو اس لئے ڈرایا گیا تاکہ وہ اپنے فرائض انجام نہ دے سکیں۔

فواد چوہدری کو لاہور کے سیشن کورٹ سے راہداری ریمانڈ کے بعد اسلام آباد منتقل کردیا جائے گا۔

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری پر الیکشن کمیشن حکام کو دھمکیاں دینے کا الزام ہے۔

اسلام آباد پولیس حکام کے مطابق فواد چوہدری نے اپنے انٹرویومیں چیف الیکشن کیمشن، ممبران الیکشن کمیشن اور ان کے اہل خانہ کے خلاف دھمکی آمیز الفاظ کا استعمال کیا ، جس کے باعث ان کے ِخلاف مقدمہ درج ہوا اور اس کے بعد گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے۔

عمران خان کی گرفتاری کے خدشات

فواد چوہدری کی گرفتاری سے قبل خبریں گرم تھیں کہ پولیس پی ٹی آئی سربراہ عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے۔

خود پی ٹی آئی کی جانب سے خدشہ ظاہر کیا گیا کہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب پولیس عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے۔

اس حوالے سے نصف شب کو لاہور میں صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ عمران خان زمان پارک میں موجود ہیں، آؤ گرفتارکرکے دکھاؤ۔

انہوں نے کہاکہ عمران خان کوگرفتارکرناپاکستان کےخلاف ایک سازش ہے،پاکستان کواس وقت معاشی بحران کاسامنا ہے، حکومت پاکستان کو نقصان پہنچا رہی ہے۔

فواد نے کہاکہ کومت ملک میں الیکشن کرائے، ہوش کےناخن لیں،پاکستان کوکسی امتحان میں نہ ڈالیں،حکومت عمران خان اورعوام سے خوفزدہ ہے۔

انہوں ںے کہاکہ عمران خان کو گرفتار کیا گیا تو پورے پاکستان میں لاک ڈاؤن ہوگا۔

اطلاعات ہیں کہ حکومت آج عمران خان کو گرفتار کرنے کی کوشش کرے گی، پی ٹی آئی

ادھر سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پرجاری پیغام میں پاکستان تحریک انصاف کا کہنا ہے کہ کہ اطلاعات ہیں کہ کٹھ پتلی حکومت آج رات چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کو گرفتار کرنے کی کوشش کرے گی، کارکنوں کو زمان پارک پہنچنے کی ہدایت کردی گئی۔

پی ٹی آئی کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے کارکنان کے لئے ہدایت جاری کی گئی ہیں۔

عمران خان کو گرفتار کرنے کی اطلاعات ہیں، ترجمان پنجاب حکومت

ترجمان پنجاب حکومت مسرت جمشید چیمہ نے آج نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ملک میں انتشار پھیلانا چاہتی ہے، عوام عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کو گرفتار کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی، عمران خان کو گرفتار کرنے کی اطلاعات ہیں۔

مسرت جمشید چیمہ نے ٹویٹ میں کہا کہ فواد چوہدری ہماری پارٹی کے اہم ترین رہنما ہیں، انہیں یوں غیر قانونی طور پر اغواء کرنا ناقابل قبول ہے، ہم کسی صورت چپ نہیں بیٹھیں گے، ہم سخت ترین احتجاج کریں گے۔

ابھی تک نہیں بتایا گیا فواد چوہدری کو کس جگہ رکھا گیا ہے، حماد اظہر

تحریک انصاف کے رہنما حماد اظہر نے فواد چوہدری کی گرفتاری پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ فواد چوہدری ہمیشہ قانون اور آئین کی بات کرتے ہیں، فواد چوہدری کو ایسے اٹھایا گیا جیسے چور یا دہشت گرد کو اٹھایا جاتا ہے، ابھی تک نہیں بتایا گیا فواد چوہدری کو کس جگہ رکھا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں جمہوریت کا نظام قائم ہے؟ عمران خان کو گرفتار کرنے سے متعلق منصوبہ بندی کی جارہی تھی، چور لٹیرے اپنے کیسز معاف کرارہے ہیں۔

شبلی فراز کا فواد چوہدری کی گرفتاری پر ردعمل

تحریک انصاف کے رہنما شبلی فراز نے فواد چوہدری کی گرفتاری پر اپنے ٹویٹ میں کہا کہ فواد چوہدری کی گرفتاری اس حکومت کی بزدلی کی دلیل ہے۔

انہوں نے کہا کہ فواد چوہدری کی گرفتاری اس بات کا ثبوت ہے کہ محسن نقوی کو جس گھناؤنے مقصد کے لئے لایا گیا تھا اس نے وہ کام بغیر کسی دیر کیے شروع کر دیا ہے۔

شائع 25 جنوری 2023 10:09am

فواد چوہدری کی گرفتاری پر اسلام آباد پولیس کا مؤقف

<p>فواد چوہدری  فوٹو۔۔۔ فائل</p>

فواد چوہدری فوٹو۔۔۔ فائل

پی ٹی آئی کے رہنما فواد چوہدری کی گرفتاری کے بعد اسلام آباد پولیس کا مؤقف سامنے آگیا، جس میں کہا گیا ہے کہ آئینی ادارے اور سیکرٹری الیکشن کمیشن کی درخواست پر فواد چوہدری کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔

اسلام آباد پولیس کا کہنا ہے کہ فواد چوہدری کو پنجاب پولیس نے گرفتار کیا، وہ پنجاب پولیس کی ہی حراست میں ہیں۔

اسلام اباد پولیس نے مزید کہا کہ راہداری ریمانڈ کے بعد فواد چوہدری کی تحویل اسلام آباد پولیس کو دی جائے گی، اسلام آباد پہنچنے پر فواد چوہدری کو جوڈیشل مجسٹریٹ وقاص راجہ کی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ فواد چودری کو علی الصبح حراست میں لیا گیا تھا، ان کے خلاف سیکریٹری الیکشن کمیشن عمرحمید کی مدعیت میں اسلام آباد کے تھانہ کوہسار میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

مقدمے کے متن کے مطابق فواد چوہدری نے اشتعال انگیز تقریر کی اور کہا کہ ”الیکشن کمیشن کی حیثیت ایک منشی کی ہے، الیکشن کمشنر کلرک کی طرح سائن کردیتا ہے، آپ کا پیچھا سزا دلوانے تک کریں گے، پاکستان کے عوام اس ظلم کو معاف نہیں کریں گے“۔

متن میں مزیددرج ہے کہ ، ”الیکشن کمشنر، دیگر ممبران اور ان کے خاندانوں کو ڈرایا دھماکایا گیا، ریاست کے انتخابی عمل میں رکاوٹ ڈالنے کی کوشش کی گئی، چیف الیکشن کمشنر کو اس لئے ڈرایا گیا تاکہ وہ اپنے فرائض انجام نہ دے سکیں۔“

شائع 25 جنوری 2023 09:38am

فواد چوہدری نے علی الصبح گرفتاری سے قبل کون سی ویڈیو شیئرکی

<p>تصویر: اے ایف پی</p>

تصویر: اے ایف پی

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری لاہورمیں علی الصبح اپنی گرفتاری سے قبل سوشل میڈیا پر متحرک تھے۔

انہوں نے صبح 5 بج کر 25 منٹ پر گرفتاری سے قبل کی جانے والی آخری ٹویٹ میں عمران خان کی زمان پارک والی رہائشگاہ کے باہر موجود کارکنوں کی ویڈیو شیئرکی۔

فوادچوہدری کی گرفتاری سے قبل خبریں گرم تھیں کہ پولیس پی ٹی آئی سربراہ عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے جس کے بعد کارکن رات گئے زمان پارک پہنچ گئے تھے۔

چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی گرفتاری کا امکان

خود پی ٹی آئی کی جانب سے بھی خدشہ ظاہر کیا گیا کہ منگل اور بدھ کی درمیانی شب پولیس عمران خان کو گرفتار کرنے والی ہے۔

اپنی گرفتاری سے قبل میڈیا ٹاک میں فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ عمران خان زمان پارک میں موجود ہیں، آؤ گرفتارکرکے دکھاؤ۔

انہوں نے کہاکہ عمران خان کوگرفتارکرنا پاکستان کےخلاف ایک سازش ہے، پولیس میں ہمت ہے تو خان کو گرفتار کرے۔ اگر ایسا کیا گیا تو پورے پاکستان میں لاک ڈاؤن ہوگا۔