Aaj TV News

BR100 4,267 Increased By ▲ 36 (0.86%)
BR30 21,570 Increased By ▲ 180 (0.84%)
KSE100 41,048 Increased By ▲ 240 (0.59%)
KSE30 17,260 Increased By ▲ 100 (0.58%)

فرانسیسی صدر کو انڈہ مارے جانے کی ویڈیو کی حقیقت سامنے آگئی ہے۔

فرانسیسی صدر کو انڈہ حالیہ صورتحال کے باعث نہیں پڑا تھا بلکہ یہ انڈہ مارے جانے کی ویڈیو تین برس پرانی ہے۔ گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے بعد سوشل میڈیا پر بھی لوگ فرانس اور صدر ایمانویل میکرون کیخلاف اپنا غصہ نکال رہے ہیں۔

اس صورتحال میں فیس بک، ٹوئٹر، انسٹاگرام وغیرہ پر ایک ویڈیو وائرل ہورہی ہے جس میں فرانسیسی صدر ایمانویل میکرون کو ایک شخص سر پر انڈہ مار رہا ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی اس ویڈیو کے حوالے سے کہا جارہا تھا کہ یہ گستاخانہ خاکوں کا ردعمل ہے اور خاکوں کی حمایت پر کیمرون پر انڈہ پھینکا گیا، تاہم حقیقت اس کے برعکس نکل آئی ہے۔

دراصل یہ ویڈیو 2017 کی ہے جب ایمانوئیل میکرون صدارتی امیدوار تھے اور اپنی الیکشن مہم کے لیے ایگری کلچر سے متعلق ایک تقریب میں شریک تھے، تقریب میں ان کے مخالفین کی جانب سے ان پر انڈہ پھینکا گیا تھا۔

ان پر انڈہ پھینکے جانے کی ویڈیو تین برس پرانی ہے اور حالیہ واقعات کے ساتھ اس کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

واضح رہے کہ فرانس کی جانب سے حال ہی میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت کے بعد دنیا بھر میں مسلمان شدید غم و غصے کا اظہار کررہے ہیں۔

مختلف ممالک میں اب بھی ان خاکوں کی اشاعت اور فرانسیسی حکومت کی جانب سے اس کی حمایت کیخلاف احتجاج کا سلسلہ جاری ہے۔