Aaj TV News

BR100 4,848 Decreased By ▼ -4 (-0.09%)
BR30 25,754 Increased By ▲ 83 (0.32%)
KSE100 45,100 Decreased By ▼ -86 (-0.19%)
KSE30 18,479 Decreased By ▼ -6 (-0.03%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 725,602 4584
DEATHS 15,501 58
Sindh 269,126 Cases
Punjab 250,459 Cases
Balochistan 20,321 Cases
Islamabad 66,380 Cases
KP 99,595 Cases

لاہور:وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہمیں آمدن بڑھانی ہے خرچے کم کرنے ہیں، اس کے بغیر قرض ادا نہیں کرسکتے، مشکل سے نکلنے کیلئے روایت سے ہٹ کر سوچنا ہوتا ہے،تنخواہ دار طبقے کیلئے نیا پاکستان ہاؤسنگ منصوبہ لائے ہیں، ترقیاتی منصوبوں کیلئے کوئی درخت نہیں کاٹا جائے گا۔

وزیراعظم عمران خان نے لاہور میں سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ منصوبےکاسنگ بنیادرکھنےکی تقریب کی تقریب سے خطاب کرتےہوئے کہا کہ لاہور میں سینٹرل بزنس ڈسٹرکٹ منصوبے کے سنگ بنیاد پر خوشی ہے، اس سے کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا،قطرکےساتھ ایل این جی کے نئےمعاہدے پردستخط ہوئے ہیں،نئےمعاہدےکےتحت300ملین ڈالرزکی بچت ہوگی ،10سال میں3ارب ڈالر کی بچت ہوگی۔

وزیراعظم نے کہا کہ مشکل وقت سےنکلنےکیلئےروایت سےہٹ کرسوچناہوتاہے،گزشتہ 10تاریک سالوں میں ملک پرقرض چڑھا،کرنٹ اکاؤنٹس خسارےسےقرضوں میں اضافہ ہوا،زرمبادلہ کےذخائر کی کمی سےروپےکی قدرگری،ہمیں اپنی آمدن بڑھانی ہے،خرچےکم کرنےہیں،آمدن بڑھائےبغیر قرضوں کی اقساط ادانہیں کرسکتے۔

عمران خان نے مزید کہا کہ حکومت میں آئے تو قرضوں کے باعث ملک کی معاشی حالت بدترین تھی ،پاکستان کی گزشتہ دہائی تاریک ترین دور تھا، آج کرنٹ اکاؤنٹ خسارا 6ماہ سے سر پلس ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ والٹن ایئرپورٹ کوڈی نوٹیفائی کیاجائےگا،والٹن ایئرپورٹ کی وجہ سےبلندعمارتوں کی تعمیرپرپابندی تھی،والٹن اور راوی منصوبے ملکی ترقی میں اہم کردار ادا کریں گے، والٹن منصوبے سے 6ہزار ارب روپے کی آمدنی متوقع ہے۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ لاہورشہربہت تیزی سےپھیلا ہے،لاہورکاسیوریج کا پانی راوی میں پھینکاجارہا ہے،شہرپھیلتا ہےتوسہولیات فراہم کرنامشکل ہوجاتاہے،ماڈرن شہروں میں بلندعمارتیں تعمیرہوتی ہیں ،ترقیاتی منصوبوں کیلئےکوئی درخت نہیں کاٹا جائےگا،پاکستان میں سب سےبڑا ماہرماحولیات میں ہوں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ منصوبےکےپہلےفیزمیں1300ارب روپےکی تجارتی سرگرمیاں ہوں گی،تنخواہ دارطبقہ کیلئےگھربنانا ایک خواب تھا،تنخواہ دارطبقے کیلئےنیاپاکستان ہاؤسنگ منصوبہ لائےہیں ،بینکس کوچھوٹےقرضےدینےکی ترغیب دےرہےہیں،دبئی کی ترقی میں پیسےسےزیادہ اہم وژن تھا ،بدقسمتی سےبڑےشہروں کوماڈرن بنانےکی پلاننگ نہیں کی گئی۔