Aaj TV News

BR100 4,846 Increased By ▲ 46 (0.97%)
BR30 24,817 Increased By ▲ 124 (0.5%)
KSE100 45,175 Increased By ▲ 231 (0.51%)
KSE30 18,470 Increased By ▲ 87 (0.47%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 854,240 4109
DEATHS 18,797 120
Sindh 290,756 Cases
Punjab 316,334 Cases
Balochistan 23,186 Cases
Islamabad 77,684 Cases
KP 123,150 Cases

عمر رسیدہ لوگوں، بالخصوص خواتین میں ایڑیوں کا درد بہت زیادہ پایا جاتا ہے۔ اس عارضے کو ’ہیل سپر سنڈروم‘ (Heel spur syndrome) بھی کہا جاتا ہے جس کی کئی وجوہات ہو سکتی ہیں۔ ماہر ڈاکٹر مارٹن سکیور نے اب اس درد سے نجات کا طریقہ لوگوں کو بتا دیا ہے۔

میل آن لائن کے مطابق ڈاکٹر مارٹن کا کہنا ہے کہ عام طور پر یہ درد ایڑی کے اندر یا اس کے پیچھے ہوتا ہے جہاں پنڈلی سے ایڑی تک آنے والا طاقتور پٹھا ایڑی کی ہڈی سے جڑتا ہے۔ کئی بار یہ درد ایڑی کے اطراف میں بھی محسوس ہوتا ہے۔ اگر یہ ایڑی کے اندر ہو تو اسے Plantar Fasciitis کہا جاتا ہے اور ایڑی کا یہی درد سب سے زیادہ پایا جاتا ہے، تاہم اگر درد ایڑی کے پیچھے ہو تو اسے Achilles Tendinitis کا نام دیا جاتا ہے۔

ڈاکٹر مارٹن کا کہنا تھا کہ 'ایڑی کے نیچے والا درد عام طور پر زیادہ دباﺅ کا نتیجہ ہوتا ہے، جس سے پاﺅں کی بافتوں کو نقصان پہنچتا ہے اور ان میں اکڑن پیدا ہو جاتی ہے۔ ایڑی کے پیچھے ہونے والا درد پنڈلی سے ایڑی تک آنے والے پٹھے کو پہنچنے والی کسی چوٹ کا نتیجہ ہو سکتا ہے۔ اس کے علاوہ بھی اس درد کی کئی وجوہات ہو سکتی ہے۔ جن لوگوں کو یہ درد لاحق ہے انہیں ایسے فٹنگ والے جوتے پہننے چاہئیں جو پیروں کو سپورٹ فراہم کریں۔ اس کے علاوہ انہیں جسمانی سرگرمی کے اعتبار سے درست جوتوں کا انتخاب کرنا چاہیے۔ ورزش سے قبل پٹھوں کو سکریچ کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ ایسے لوگوں کو چاہیے کہ جتنا ہو سکے آرام کریں اور بوقت ضرورت ایڑی کو اٹھا کر چلیں، روزانہ دوبار دس سے پندہ منٹ تک برف کی ٹکور کریں۔ عام درد کش ادویات کا استعمال کریں۔اگر ان تدابیر کے بعد بھی درددوسے تین ہفتے تک برقرار رہتا ہے تو ڈاکٹر سے رجوع کریں۔'