Aaj TV News

BR100 5,282 Increased By ▲ 24 (0.46%)
BR30 27,601 Increased By ▲ 46 (0.17%)
KSE100 48,305 Increased By ▲ 53 (0.11%)
KSE30 19,479 Decreased By ▼ -59 (-0.3%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 941,170 1,239
DEATHS 21,689 56
Sindh 327,604 Cases
Punjab 343,926 Cases
Balochistan 26,201 Cases
Islamabad 82,099 Cases
KP 135,877 Cases

محکمہ انسداد دہشت گردی سندھ کی جانب سے انتہائی مطلوب افراد کے کوائف پر مشتمل ریڈ بک کا نوواں ایڈیشن جاری کر دیا گیا ہے، جس میں پہلی مرتبہ ایک خاتون کا نام بھی شامل ہے۔

کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) سندھ کے ڈپٹی انسپکٹر جنرل عمر شاہد نے جرمن خبر رساں ادارے سے گفتگو میں بتایا کہ اس دفعہ ہم نے 146 مطلوبہ دہشتگردوں کو ریڈبک میں شامل کیا ہے، جن میں 93 نئی انٹریز ہیں۔

ڈی آئی جی عمر شاہد نے بتایا کہ ریڈ بک پہلی مرتبہ ایک خاتون کو بھی شامل کیا گیا ہے۔ جن کا نام ڈاکٹر سعدیہ جلیل دختر سید جلیل احمد ہے۔ ڈاکٹر سعدیہ کا نام پہلی مرتبہ سی ٹی ڈی کی ریڈ بک میں شامل ہوا ہے۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی کے مطابق ڈاکٹر سعدیہ کا تعلق القاعدہ سے ہے، ان کے شوہر عمر جلال کاٹھیو القاعدہ کے رکن رہے ہیں اور تاحال روپوش ہیں۔

ڈی آئی جی عمر شاہد نے مزید بتایا کہ ڈاکٹر سعدیہ داعش کی ایک اہم شخصیت عبداللہ یوسف کی خالہ ہیں۔ اس طرح ان کا پورا خاندان انتہا پسندی اور جہادی سرگرمیوں میں سرگرم ہے۔

ڈپٹی انسپکٹر جنرل عمر شاہد کا مزید کہنا تھا کہ مذہبی جماعتوں کے ساتھ ساتھ سندھ ریلولیوشنری آرمی (ایس آر اے) اور بلوچ لبریشن آرمی (بی ایل اے) جیسی قوم پرست تنظیموں کے لوگوں کو بھی پہلی مرتبہ ریڈ بک میں شامل کیا گیا ہے۔

اس طرح ریڈ بک میں توسیع ہوئی ہے اور یہ ایک نئے فارمیٹ میں سامنے آئی ہے۔