Aaj.tv Logo

کابل میں روسی سفارت خانے کی جانب سے انکشاف کیا گیا ہے کہ افغان صدر اشرف غنی پیسوں سے بھری چار کاروں اور ہیلی کاپٹر کے ساتھ ملک سے فرار ہوئے ہیں

روئٹرز نے روسی خبر رساں ادارے آر آئی اے کے حوالے سے بتایا کہ اشرف غنی کا موجودہ ٹھکانہ نامعلوم ہے۔ تاہم، اتوار کو جب طالبان نے کابل پر قبضہ کیا تو وہ افغانستان چھوڑ کر چلے گئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ وہ خونریزی سے بچنا چاہتے ہیں۔

آر آئی اے نے کابل میں روسی سفارت خانے کے ترجمان نکیتا ایشینکو کے حوالے سے بتایا کہ چار کاریں پیسوں سے بھری ہوئی تھیں، انہوں نے رقم کا دوسرا حصہ ہیلی کاپٹر میں بھرنے کی کوشش کی ، لیکن یہ سب کچھ فٹ نہیں ہوسکا اور کچھ رقم ٹارمک پر پڑی رہ گئی۔

روسی سفارت خانے کے ترجمان ایشینکو نے رائٹرز کو اپنے اس بیان کی تصدیق کی۔ نکیتا نے اپنی معلومات کا ذریعہ "گواہوں" کا حوالہ دیا۔ روئٹرز کا کہنا ہے کہ وہ آزادانہ طور پر ان کے بیان کی سچائی کی تصدیق نہیں کر سکا۔

افغانستان کے لیے صدر ولادیمیر پوٹن کے خصوصی نمائندے ضمیر کابلوف کا کہنا ہے کہ پہلے یہ واضح نہیں تھا کہ بھاگنے والی حکومت کتنی رقم پیچھے چھوڑ جائے گی۔

کابلوف نے ماسکو کے ایخو موسکوی ریڈیو اسٹیشن کو بتایا، 'مجھے امید ہے کہ جو حکومت بھاگ گئی ہے اس نے ریاستی بجٹ سے تمام رقم نہیں لی ہوگی۔'