Aaj TV News

BR100 4,607 Decreased By ▼ -61 (-1.3%)
BR30 20,274 Decreased By ▼ -618 (-2.96%)
KSE100 44,629 Decreased By ▼ -192 (-0.43%)
KSE30 17,456 Decreased By ▼ -66 (-0.38%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,265,047 663
DEATHS 28,280 11
Sindh 465,819 Cases
Punjab 437,974 Cases
Balochistan 33,128 Cases
Islamabad 106,469 Cases
KP 176,886 Cases

اکثر متعدد پاکستانی ڈراموں کا اختتام ڈرامے میں منفی کردار ادا کرنے والے اداکار یا اداکارہ کی خودکشی پر ہورہا ہے۔ پاکستان کی معروف صحافی ثمن صدیقی نے ڈراموں میں خودکشی کے بڑھتے ہوئے واقعات دکھانے پر پیمرا سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

ثمن صدیقی نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں لکھا، 'ایسے ڈراموں کو نمائش کی اجازت نہیں ہونی چاہیے جن میں خودکشی اور نفرت انگیز انتقام کو دکھایا جاتا ہے۔'

انہوں نے لکھا، 'کیا پیمرا نے گزشتہ ہفتوں سے دکھائے جانے والوں ڈراموں کا جائزہ لیا ہے جن میں اکثر ڈراموں میں خودکشی کرتےہوئے دکھایا گیا ہے؟'

صحافی ثمن صدیقی نے مزید لکھا، 'پیمرا کی اطلاع کے لیے "ہم کہاں کے سچے تھے"، "بے رخی" اور "آزمائش" میں خودکشی کو ایک معمول کی کارکردگی کے طور پر دکھایا گیا ہے۔ جو شرم کی بات ہے۔'

واضح رہے کہ ڈرامہ "ہم کہاں کے سچے تھے" کے نویں قسط میں مشال خودکشی کرلیتی ہے مگر اس کا مقصد مہرین سے برے طریقے سے انتقام لینا تھا۔

ٹوئٹر صارف محسن حسن نے ثمن صدیقی کو ٹیگ کرتے ہوئے لکھا، کہ 'پیمرا سو رہا ہے۔'

ویک نامی ٹوئٹر صارف نے لکھا، 'پیمرا اپنی کافی لو اور اپنا کام کرو۔'