Aaj News

سعودی عرب نے عازمین حج کی گنجائش 10 لاکھ تک بڑھا دی

اس سال مکہ جانے والے زائرین کی عمر 65 سال سے کم ہونی چاہیے اور انہیں کورونا وائرس کے خلاف مکمل طور پر ویکسین لگوانا چاہیے۔
شائع 09 اپريل 2022 12:39pm
حجاج کرام 8 اگست 2019 کو سعودی عرب کے اپنے مقدس شہر مکہ میں سالانہ حج کے دوران عظیم الشان مسجد میں نماز ادا کر رہے ہیں۔ (فائل فوٹو: رائٹرز)
حجاج کرام 8 اگست 2019 کو سعودی عرب کے اپنے مقدس شہر مکہ میں سالانہ حج کے دوران عظیم الشان مسجد میں نماز ادا کر رہے ہیں۔ (فائل فوٹو: رائٹرز)

سعودی عرب نے 10 لاکھ ملکی اور غیر ملکی مسلمانوں کو اس سال کے حج میں شرکت کی اجازت دے گا۔

عرب میڈیا کے مطابق وزارت حج نے اس سال غیر ملکی اور ملکی 10 لاکھ عازمین کو حج کی اجازت دی جائی گی جبکہ عام طور پر دنیا کے سب سے بڑے مذہبی اجتماع میں سنہ 2019 میں تقریباً 25 لاکھ افراد نے شرکت کی تھی۔

دریں اثنا سنہ 2020 میں کورونا وائرس کی وبا کے آغاز کے بعد سعودی حکام نے حجاج کی صحت کو ترجیح دینے کی کوشش میں صرف 1,000 عازمین حج کو شرکت کی اجازت دی تھی۔

وزارت حج اور عمرہ نے ایس پی اے نیوز ایجنسی کے ذریعہ جاری کردہ ایک بیان میں کہا کہ اس سال مکہ جانے والے زائرین کی عمر 65 سال سے کم ہونی چاہیے اور انہیں کورونا وائرس کے خلاف مکمل طور پر ویکسین لگوانا چاہیے۔

سعودی عرب سے باہر سے آنے والوں کو سفر کے 72 گھنٹوں کے اندر لیے گئے منفی کورونا ٹیسٹ کی رپورٹ جمع کروانا ہوگی۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ حکومت عازمین حج کی حفاظت کو یقینی بنانا چاہتی ہے تاکہ دنیا بھر میں زیادہ سے زیادہ مسلمان حج ادا کر سکیں۔

حج مذہبی رسومات کی ایک سیریز پر مشتمل ہے، جو اسلام کے مقدس ترین شہر مکہ اور مغربی سعودی عرب کے آس پاس کے علاقوں میں پانچ دنوں میں مکمل ہوتے ہیں۔

Saudi Arabia

hajj pilgrims

Hajj policy

Comments are closed on this story.

مقبول ترین