Aaj TV News

BR100 4,910 Increased By ▲ 27 (0.55%)
BR30 25,363 Increased By ▲ 243 (0.97%)
KSE100 46,287 Increased By ▲ 200 (0.43%)
KSE30 19,259 Increased By ▲ 93 (0.49%)

کراچی: رواں سال کورونا نے جہاں ملکی معیشت کو متاثر کیا وہیں شرح مبادلہ میں اتار چڑھاؤ کی وجہ سے غیریقینی صورتحال کا سامنا رہا۔ سال کے دوران انٹربینک میں ڈالر 5 روپے 14 پیسے مہنگا ہوا جبکہ سونے کی فی تولہ قیمت میں 25 ہزار روپے سے زائد اضافہ ہوا۔

تفصیلات کے مطابق جنوری 2019 میں امریکی کرنسی کی قیمت 154 روپے 87 پیسے تھی۔ انٹربینک میں یورو 173 روپے 64 پیسے اور برطانوی پاؤنڈ 204 روپے 73 پیسے سے زیادہ نہ تھا لیکن ملکی و عالمی حالات، کورونا کی وبا اور امریکی کرنسی کی طلب میں اضافے نے قیمت بڑھادی۔

جون میں ڈالر 168 روپے کی بلند ترین سطح پر دیکھا گیا، ساتھ ہی دیگر کرنسیز کی قیمتیں بھی بڑھ گئیں۔ تاہم حکومت کے اقدامات، ڈالر کی بے جا خریداری اور ذخیرہ کرنے پر پابندی جیسے اقدامات نے مارکیٹ میں ڈالر کی فراہمی بڑھادی۔ ساتھ ہی دوست ملکوں اور عالمی اداروں کی جانب سے ڈالر کے انخلاء، ترسیلات، برآمدات میں اضافے اور درامدات میں کمی سے توازن ادائیگی میں بھی بہتری آئی۔

سال 2020 کے اختتام پر 30 دسمبر تک ڈالر کی قیمت 160 روپے 28 پیسے ہوگئی۔ یورو 196 روپے 47 پیسے اور پاؤنڈ 216 روپے 97 پیسے کا ہوگیا۔

ادھر بلین مارکیٹ میں بھی پورے سال بھونچال کی صورتحال رہی، سونے کی قیمت میں اضافے نے سرمایہ کاروں کو تو فائدہ پہنچایا لیکن عام آدمی پریشان ہوگیا۔ 2020 کے آغاز پر 10 گرام سونا 75 ہزار 574 روپے کا تھا جو اب 21 ہزار 862 روپے اضافے سے 97 ہزار 436 روپے کا ہے۔ اسی طرح سونے کی فی تولہ قیمت 25 ہزار 500 روپے اضافےسے ایک لاکھ 13 ہزار 650 روپے ہے۔