Aaj TV News

BR100 5,282 Increased By ▲ 24 (0.46%)
BR30 27,601 Increased By ▲ 46 (0.17%)
KSE100 48,305 Increased By ▲ 53 (0.11%)
KSE30 19,479 Decreased By ▼ -59 (-0.3%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 939,931 1,194
DEATHS 21,633 57
Sindh 327,021 Cases
Punjab 343,703 Cases
Balochistan 26,152 Cases
Islamabad 82,065 Cases
KP 135,569 Cases

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں ایک خاتون نے دو خواتین پر اس لیے تشدد کر ڈالا کہ انہوں نے منہ پر ماسک پہنا ہواتھا۔

ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک سیاہ فام خاتون دو خواتین کے تعاقب میں ہے اور تھوڑے سے فاصلے پر جا کر ان سے بات کرتی ہے اور ایک دو جملوں کے تبادلے کے بعد ایک خاتون کو اپنے ہاتھ میں پکڑا ہتھوڑا دے مارتی ہے۔

جب وہ بچاؤ کے لیے بھاگتی ہے تو ا س کے ساتھ دوسری عورت پر تابڑ توڑ ہتھوڑے برسا دیتی ہے۔ ہتھوڑوں کے پے در پے وار سے ایک خاتون شدید زخمی ہو گئی جس پر اسے اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

مبینہ ویڈیو سے متعلق بتایا جا رہا ہے کہ یہ واقعہ نیویارک سٹی میں پیش آیا ہے۔ پولیس نے متاثرہ خواتین کا بیان لیا جس میں ان کا کہنا تھا کہ حملہ آور خاتون ان کے لیے اجنبی ہے اور آج سے قبل ان کی کوئی ملاقات یا جان پہچان نہیں ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ابھی تک حملہ آور خاتون گرفتار نہیں ہوئی تاہم یہ نسل پرستی کا معاملہ لگتا ہے یا پھر حملہ آور خاتون کو ماسک سے چڑ تھی جس پر اس نے متاثرہ خواتین کو ماسک اتارنے کا کہا تھا۔

یاد رہے کہ نسل پرستی کے تعصب کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے بلکہ اس سے قبل بھی نسل پرستی کی آڑ میں کئی بے گناہوں کے لاشے اٹھتے رہے ہیں، مگر مغربی دنیا آج بھی اس نسلی تعصب کے آگے بند باندھنے میں ناکام رہی ہے۔ تاہم دیکھنا یہ ہے کہ یہ حملہ آور خاتون کب تک گرفتار ہوتی ہے اور اسے کس قدر سزا دی جاتی ہے۔