Aaj TV News

BR100 4,418 Increased By ▲ 17 (0.39%)
BR30 17,171 Decreased By ▼ -323 (-1.85%)
KSE100 43,306 Increased By ▲ 72 (0.17%)
KSE30 16,779 Increased By ▲ 81 (0.49%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,286,022 391
DEATHS 28,753 8
Sindh 476,233 Cases
Punjab 443,310 Cases
Balochistan 33,491 Cases
Islamabad 107,811 Cases
KP 180,194 Cases

کراچی کے علاقے گلشن اقبال پولیس کے ہاتھوں گرفتار پولیس اہلکار ٹک ٹاکرامبرین کے ساتھ ریپ میں بھی ملوث نکلا۔

زمان ٹاؤن پولیس نے ٹک ٹاکر امبرین ڈول کی مدعیت میں مقدمہ الزام نمبر 959/21 بجرم دفعات 376 اور 506 ٹیلی گراف ایکٹ کے تحت درج کیا تھا، جس میں مدعیہ کا کہنا ہے کہ پولیس اہلکارعثمان اکبر نے متعدد مقامات پر ریپ کا نشانہ بنایا۔

امبرین ڈول کے ویڈیو بیان کے مطابق پولیس اہلکار عثمان اکبر نے پولیس نوکری کا جھانسا دے کر نمبر لیا، نوکری کے لیے ملوانے کا کہہ کرشارع فیصل کی جانب لیکر گیا اور گیسٹ ہاؤس میں زبردستی ریپ کیا جبکہ میری تصاویر اور وڈیو بھی بنالی بلیک میل کرنے لگا۔

امبرین ڈول کا کہنا تھا کہ عثمان اکبر زمان ٹاون تھانے لیکرگیا اور تھانے کے اندر متعدد دفعہ ریپ کیا، تھانے کے چند اہلکاروں کو بھی علم ہے۔ ار

امبرین کا کہنا تھا کہ عثمان سرعام مارتا ہے اور زبردستی ساتھ لیجا کر ریپ کرتا رہا،انہی وجوہات کی بناء پر گھر سے نکلنا چھوڑ دیا تو دھمکیاں دینے لگا، امبرین نے الزام عائد کیا کہ عثمان نے گھر کے باہر فائرنگ بھی کی جس کی وجہ سے خوف کے باعث گھر میں محصور ہو کر رہ گئی۔

امبرین نے مزید بتایا کہ عثمان اکبر اکثر مجھے پولیس موبائل میں لے جاتا تھا موبائل میں بھی ویڈیو بنائی گئی، امبرین نے پولیس کے اعلیٰ افسران سے مطالبہ کیا کہ عثمان اکبر کو سخت سے سخت سزا دی جائے۔