Aaj TV News

BR100 4,607 Decreased By ▼ -61 (-1.3%)
BR30 20,274 Decreased By ▼ -618 (-2.96%)
KSE100 44,629 Decreased By ▼ -192 (-0.43%)
KSE30 17,456 Decreased By ▼ -66 (-0.38%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,265,650 603
DEATHS 28,300 20
Sindh 466,154 Cases
Punjab 438,133 Cases
Balochistan 33,133 Cases
Islamabad 106,504 Cases
KP 176,950 Cases

سینٹ کی قائمہ کمیٹی پٹرولیم کو سیکریٹری پٹرولیم ڈاکٹر ارشد محمود نے بتایا ہے کہ مقامی اوردرآمدی گیس کی قیمت ملا کر گیس کی نئی قیمت کا تعین کر لیا گیا ہے گھریلوصارفین کو سبسڈی دیں گے مگرصنعتی صارفین کو اصل قیمت دینا ہوگی ۔

سینٹرعبدالقادرکی زیرصدارت سینٹ قائمہ کمیٹی پٹرولیم کا اجلاس ہوا۔ اجلاس کو گزشتہ دو سال میں گیس کی قلت اور اس کے سدباب کیلئے اقدامات پر بریفنگ دی گئی۔

اجلاس کو سیکریٹری پٹرولیم نے بتایا کہ آر ایل این جی صرف پاور، کھاد اور سی این جی سیکٹر میں استعمال ہوتی ہے آر ایل این جی کی قیمت 13 ڈالر جبکہ مقامی گیس 4 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو ہے۔

انھوں نے کہا کہ سردیوں میں گھریلو صارفین کو آر ایل این جی فراہم کی جاتی ہے مگر اس کی قیمت کی بعد میں وصولی مشکل ہو جاتی ہے برآمدی شعبے کو گیس فراہمی پر 35 ارب روپے کی سبسڈی فراہم کر رہے ہیں۔

سیکریٹری پٹرولیم کا کہنا تھا کہ گزشتہ تین سالوں میں آر ایل این جی کا گردشی قرض 104 ارب روپے ہے، ہم مہنگی آر ایل این جی خرید کر گھریلو صارفین کو فراہم نہیں کر سکتے، ہر سال 30 سے 35 ارب روپے کا گردشی قرض میں جمع کر رہے ہیں اس سال آر ایل این جی فراہم کی تو گردشی قرض میں 90 ارب روپے کا اضافہ ہو گا۔

سیکریٹری پٹرولیم نے بتایا کہ مقامی گیس اور درآمدی ایل این جی کی قیمت ملا کر نئی قیمت کا تعین کر لیا گیا ہے جسکو منظوری کے بعد لاگو کیا جائے گا گھریلو صارفین کو سبسڈی دی جائے گی،

تاہم صنعتی شعبے کو گیس کی اصل قیمت ادا کرنا ہو گی سیکریٹری پٹرولیم کا کہنا تھا کہ خیبرپختونخوا اپنی گیس کا 60 فیصد خود استعمال کرتا ہے موسم سرما میں صوبہ اپنی 90 فیصد پیداوار کا مقامی طور پت استعمال کرتا ہے ۔