Aaj TV News

BR100 4,381 Decreased By ▼ -20 (-0.46%)
BR30 16,863 Decreased By ▼ -630 (-3.6%)
KSE100 43,233 Decreased By ▼ -1 (-0%)
KSE30 16,718 Increased By ▲ 20 (0.12%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,286,825 372
DEATHS 28,767 6
Sindh 476,674 Cases
Punjab 443,453 Cases
Balochistan 33,506 Cases
Islamabad 107,887 Cases
KP 180,316 Cases

اسلام آباد:سپریم کورٹ نے انسداد دہشتگرد ی قانون کے اطلاق سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت کے دوران پراسیکیوٹر جنرل پنجاب پر شدید برہمی کا اظہار کیا اور ریمارکس دیئے کہ مذاق بنایا ہواہے ، قانون پڑھ کر آیا کریں۔

قائم مقام چیف جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3رکنی بینچ نے انسداد دہشتگرد ی قانون کے اطلاق سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت کی، دوران سماعت عدالت عظمیٰ نے پراسیکیوٹر جنرل پنجاب پر شدید برہمی کا اظہار کیا ۔

جسٹس عمر عطا ءبندیال نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بورےوالامیں 2فریقین میں تصادم سے 3 افراد قتل اور5 زخمی ہوئے،کیاتصادم کے واقعے پردہشتگردی کی دفعات کااطلاق نہیں ہوتا؟۔

جسٹس مظاہر اکبر نقوی نے پراسیکیوٹر جنرل پنجاب سے استفسار کیا کہ کیا آپ نے انسداد دہشتگردی کا قانون پڑھا ہے ؟ جس پر پراسیکیوٹر جنرل نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ انسداد دہشتگردی کا قانون تھوڑا سا پڑھا ہے ۔

جسٹس مظاہر علی اکبر نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قانون کا مذاق بنایا ہوا ہے ، قانون پڑھ کر آیا کریں ،جس پر پراسیکیوٹر جنرل پنجاب نے کہا کہ فریقین کی صلح کی درخواست آچکی ہے۔

جسٹس عمر عطاء بندیال نے کہا کہ قانون کبھی ساکن نہیں ہوتا، وقت کے ساتھ ڈویلپ ہوتا ہے ،واقعے کا2سال سے چالان داخل نہیں ہوا۔

عدالت نے آر پی او ملتان ، انسپکٹر تھانہ بورے والا اور 31 ملزمان کو نوٹسز جاری کر دیئے۔