Aaj TV News

BR100 4,519 Increased By ▲ 22 (0.49%)
BR30 18,277 Decreased By ▼ -62 (-0.34%)
KSE100 44,114 Increased By ▲ 178 (0.41%)
KSE30 17,034 Increased By ▲ 95 (0.56%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,283,886 411
DEATHS 28,704 7
Sindh 475,097 Cases
Punjab 442,876 Cases
Balochistan 33,471 Cases
Islamabad 107,601 Cases
KP 179,888 Cases

سوشل میڈیا کی بڑی عالمی کمپنی فیس بک نے اپنا نام تبدیل کر کے ''میٹا'' رکھنے کا اعلان کردیا۔ اس کا مقصد جہاں کمپنی کی از سر نو برانڈنگ ہے وہیں "میٹاورس" کی ترقی کی جانب عوام کی توجہ کو بھی مبذول کرانا ہے۔ کمپنی کے سی ای او مارک زکر برگ نے 28 اکتوبر جمعرات کو اس کا اعلان کرتے ہوئے کہا "اب ہم میٹاورس فرسٹ بن رہے ہیں، فیس بک فرسٹ نہیں۔''

ڈی ڈبلیو کے مطابق فیس بک کے 37 سالہ بانی زکر برگ گزشتہ برس بیشتر اوقات اس بنیادی نکتے پر بات چیت کرتے رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ انہیں امید ہے کہ لوگ ایک دن فیس بک کو ایک سوشل نیٹ ورک سے زیادہ ''میٹاورس کمپنی'' کے طور پر جانیں گے۔

زکر برگ میٹاورس کی تعریف میں اسے انٹرنیٹ کی 'نیکسٹ جنریشن‘ کے طور پر پیش کرتے ہیں اور کہتے ہیں کہ یہ ایک ایسا ورچوئل ماحول پیش کرے گا جہاں لوگوں کو ڈیجیٹل ورلڈ میں ہونے کے باوجود حقیقت میں ایک دوسرے کے ساتھ موجود رہنے کا احساس ہوگا۔

مارک زکر برگ کاکہنا تھا کہ موجودہ برانڈ ممکنہ طور پر ہر اس چیز کی نمائندگی نہیں کر سکتا جو ہم آج کر رہے ہیں، مستقبل کی تو بات ہی چھوڑ دیں اور اسے تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ اور اسی لئے اب وقت آگیا ہے کہ اس بات کی عکاسی کےلئے کہ ہم کون ہیں اور کیا کرنے کی امید رکھتے ہیں، ہمیں ایک نئے کمپنی برانڈ کو اپنانے کی ضرورت ہے۔

واضح رہے کہ فیس بک نے اپنا کارپوریٹ نام بدلا ہے اور فیس بک، انسٹاگرام اور واٹس ایپ جیسے کمپنی کے انفرادی پلیٹ فارمز میں اس سے فی الوقت کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔

حقیقی اور ورچوئل ورلڈ کے درمیان دوریاں ختم کرنے کی کوشش

"میٹاورس" ایک ایسی تکنیک ہے جس کے تحت انسان ڈیجیٹل ورلڈ میں ورچوئلی داخل ہو سکےگا۔ماہرین کے مطابق لوگوں کو یہ محسوس ہوگا کہ آ پ جس سےبات کر رہے ہیں وہ آپ کے سامنے موجود ہے جبکہ درحقیقت دونوں افراد میلوں دور بیٹھے ہوں گے اور وہ صرف انٹرنیٹ کے ذریعہ ایک دوسرے سے مربوط ہوں گے۔

مارک زکر برگ کا کہنا ہے،''میٹاورس کے اندر، آپ تفریح کر سکیں گے، دوستوں کے ساتھ گیمز کھیلنے، کام کرنے، تخلیق کرنے کے ساتھ ہی اور بہت کچھ کرنے کے قابل ہو جائیں گے۔ بنیادی طور پر آپ وہ سب کچھ کرنے کے قابل ہو جائیں گے جو آپ آج انٹرنیٹ پر کر سکتے ہیں۔''

میٹاورس کومستقبل کا انٹرنیٹ قرار دیا جارہا ہے، جو حقیقی اور ورچوئل کے درمیان کے فاصلوں کو ختم کردے گا۔ اس کے کئی تجربات بھی ہو چکے ہیں۔ متعدد دیگر کمپنیاں بھی میٹاورس کی دنیا میں قدم آگے بڑھا رہی ہیں۔

فیس بک نے اپنی ایک بلاگ پوسٹ میں کہا تھا کہ میٹاورس پر کسی ایک کمپنی کی اجارہ داری نہیں ہوگی اور یہ انٹرنیٹ کی طرح ہر ایک کےلئے دستیاب ہوگا۔

فیس بک کی نئی برانڈنگ کی کوشش

فیس بک نے اپنا نام تبدیل کرنے کا فیصلہ اور 'میٹاورس' کا اعلان ایسے وقت کیا ہے جب کمپنی کئی طرح کے پیچیدہ مسائل سے دو چار ہے۔ حال ہی میں فیس بک کی سروسز کئی مرتبہ متاثر ہوئیں۔ اس کی سروسز کئی گھنٹوں تک بند رہیں جبکہ مختلف ممالک میں اس کے بڑھتے ہوئے اثرات پر کنٹرول کرنے کے مطالبات بھی تیز ہو رہے ہیں۔ اس کے سابق ملازمین نے بعض ایسے الزامات عائد کیے ہیں جن سے فیس بک کی ساکھ کو بری طرح نقصان پہنچا۔

حال ہی میں فیس بک کی ایک سابق ملازمہ فرانسس ہاؤگن نےبعض دستاویزات افشا کرتے ہوئےایک انٹرویو میں کہا کہ فیس بک معاشرتی نقصانات سے بخوبی آگہی رکھنے کے باوجود مالی منفعت کو ترجیح و فوقیت دینے کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ گزشتہ ماہ ایک رپورٹ سے ایسے اشارے ملے تھےکہ میٹاورس کے اعلان کے ذریعے فیس بک اپنی شبیہہ کو درست کرنے کی کوشش کرنے کی کوشش کرے گا۔

یورپ میں ہزاروں ملازمتوں کے مواقع

گزشتہ ہفتے فیس بک نے اعلان کیا تھا کہ وہ یورپی یونین میں "میٹاورس" کے نام سے ایک نئی ورچوئل ریئلٹی ورژن تیار کرنے کےلئے 10 ہزار افراد کی خدمات حاصل کرے گی۔

کچھ روز پہلے ہی فیس بک کا ایک بلاگ میں کہنا تھا،”میٹاورس میں تخلیقی، سماجی اور اقتصادی محاذ پر نئی جہتیں کھلنے کے امکانات ہیں۔ یورپی یونین کے افراد اس کا خیر مقدم کریں گے۔ آج ہم یورپی یونین میں 10 ہزار افراد کو ملازمت دینے کا اعلان کررہے ہیں، جسے اگلے پانچ برس کے دوران مکمل کرلیا جائے گا۔''