Aaj TV News

BR100 4,597 Increased By ▲ 11 (0.24%)
BR30 17,781 Increased By ▲ 212 (1.21%)
KSE100 45,018 Increased By ▲ 192 (0.43%)
KSE30 17,748 Increased By ▲ 82 (0.46%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 1,360,019 6,540
DEATHS 29,077 12
Sindh 520,415 Cases
Punjab 460,335 Cases
Balochistan 33,855 Cases
Islamabad 115,939 Cases
KP 183,865 Cases

اسلام آباد:کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی )سے پابندی ہٹانے کے معاملے پر بعض وفاقی وزرا ءکی رائے سامنے آ گئی، کچھ وزراءنے سرکولیش کے زریعے بھیجی گئی سمری پر دستخط کرانے کے بجائے پہلے معاملے پر کھل کر بحث کرانے کا مطالبہ کیا ہے، وزرا ءکا مؤقف ہے کہ وفاقی کابینہ کا معمول کا اجلاس بلا کر پہلے اہم اور حساس معاملہ پربحث کرائی ہے۔

کالعدم تحریک لیبک سے پابندی ہٹانے سے متعلق وفاقی کابینہ سے سرکولیشن سمری کی منظوری کا عمل جاری ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزارت داخلہ کی ارسال کردہ سمری ابھی تک واپس نہیں آئی ہے، سمری کی منظوری کیلئے کم از کم 14وزرا ءکے دستخط درکار ہوتے ہیں تاہم بعض وفاقی وزراء نے معاملہ کابینہ اجلاس میں لانے کی تجویز دے دی ہے۔

کچھ وفاقی وزرا ءنے رائے دی ہے کہ یہ ایک اہم اور حساس معاملہ ہے، معاملے پر ریگولر کابینہ اجلاس میں بحث کروائی جائے، کابینہ اجلاس میں معاملہ زیر بحث لانے کا حتمی فیصلہ وزیراعظم عمران خان کریں گے۔

کالعدم ٹی ایل پی کے معاملے پر منگل کو کابینہ اجلاس میں بحث ہو سکتی ہے، وزیراعظم نے اگر منظوری دی تو معاملہ معمول کے کابینہ اجلاس میں زیر غور آسکتا ہے۔

وزیر اعظم عمران خان کی منظوری سے ٹی ایل پی پر پابندی ہٹانے کی سمری سرکولیٹ کی گئی تھی، کابینہ ڈویژن نے گزشتہ روز سمری وفاقی وزرا میں سرکولیٹ کی تھی۔