Aaj News

مرتضیٰ وہاب نے بلدیاتی الیکشن پر سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ خوش آئند قرار دیدیا

انتخابات کے انعقاد کے لئے 13 ہزار پولیس اہلکاروں کی کمی ہے، مرتضیٰ وہاب
اپ ڈیٹ 18 نومبر 2022 07:17pm
<p>ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب۔ فوٹو — فائل</p>

ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب۔ فوٹو — فائل

ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب کراچی سمیت صوبے میں بلدیاتی انتخابات سے متعلق سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کو خوش آئند قرار دے دیا۔

ایک بیان میں مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات کے لئے عدالت نےخود تاریخ کا تعین نہیں کیا بلکہ اس کا اختیار الیکشن کمیشن کو دیا ہے، البتہ سندھ میں آئینی حکومت ہے اور ہم ہر کام آئین کے طابع رہ کر کرنا چاہتے ہیں۔

پی پی رہنما نے کہا کہ کراچی میں 5 ہزار کے قریب پولنگ اسٹیشن قائم کرنے ہیں جس میں سے الیکشن کمیشن نے 3 ہزار 600 پولنگ اسٹیشنز کو حساس قرار دیا ہے۔

مرتضیٰ وہاب کا مزید کہنا تھا کہ حساس ترین پولنگ اسٹیشنز پر 8 اہلکار تعینات ہوتے ہیں، لہٰذا بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کے لئے 13 ہزار پولیس اہلکاروں کی کمی ہے۔

واضح رہے کہ عدالت نے جماعت اسلامی اور پی ٹی آئی کی درخواستیں منظور کرتے ہوئے کراچی اور حیدرآباد میں فوری الیکشن کرانےکا حکم دیتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت اس حوالے سے الیکشن کمیشن کوسکیورٹی اور سہولیات فراہم کرے۔

سندھ ہائیکورٹ نے ایم کیو ایم کی جانب سے فوری الیکشن رکوانے کی درخواست مسترد کردی جس میں ایم کیو ایم کا موقف تھا کہ بلدیاتی قوانین میں ترامیم تک الیکشن روکا جائے۔

خیال رہے کہ سندھ حکومت نے اہلکاروں کی کمی کے باعث الیکشن کمیشن کو انتخابات کی تاریخ پر نظرثانی کی درخواست کی تھی۔

karachi

Murtaza Wahab

Sindh High Court

Sindh Local Government Election

Comments are closed on this story.