Aaj TV News

BR100 4,925 Increased By ▲ 51 (1.06%)
BR30 25,449 Increased By ▲ 213 (0.84%)
KSE100 45,730 Increased By ▲ 367 (0.81%)
KSE30 19,086 Increased By ▲ 202 (1.07%)

ضعیف العمری میں شادی کیے جانے پر بعض افراد سابق وزیر کو تنقید کا نشانہ بھی بنا رہے ہیں، تاہم بعض افراد کا خیال ہے کہ انہوں نے چوری چھپے افیئر چلانے سے شادی کرنے کو ترجیح دی، جو کہ احسن قدم ہے۔

سید افتخار حسین گیلانی کی شادی کی تصاویر گزشتہ تین دن سے سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہیں، ساتھ ہی میڈیا میں بھی ان کی شادی کی خبریں شائع ہوئیں۔

انگریزی اخبار بزنس ریکارڈر کے مطابق سابق وفاقی وزیر نے خود سے 61 سالہ کم عمر لڑکی سے شادی کی اور ان کی دلہن اور ان کی عمر میں اتنا زیادہ فرق ہونے پر سوشل میڈیا پر انہیں تنقید کا نشانہ بھی بنایا جارہا ہے۔

رپورٹ میں کسی بھی مستند ذرائع کا حوالہ نہ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ افتخار گیلانی کی شادی چند دن قبل ہوئی اور ان کی شادی کی تصاویر ابتدائی طور پر سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ سید افتخار گیلانی 1940 میں پیدا ہوئے، جس حساب سے ان کی عمر 81 برس ہے۔

سید افتخار گیلانی کی شادی کے حوالے سے ٹوئٹر اور فیس بک پر کئی افراد نے کمنٹس کیے اور دعویٰ کیا کہ سابق وفاقی وزیر نے پوتوں اور پوتیوں کی عمر کی لڑکی سے شادی کی۔

افتخار گیلانی کی وائرل ہونے والی تصاویر میں انہیں دلہن کے ساتھ دیکھا جا سکتا ہے۔

شادی کی خبریں اور تصاویر وائرل ہونے کے بعد تاحال افتخار گیلانی یا ان کے اہل خانہ نے کوئی وضاحت جاری نہیں کی۔

خیال رہے کہ افتخار گیلانی نے 2011 میں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کو چھوڑ کر پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) میں شمولیت اختیار کی تھی۔

سید افتخار گیلانی پیپلز پارٹی کے بانی ارکان میں شمار ہوتے ہیں، وہ 1988 میں بینظیر بھٹو کے پہلے دور حکومت میں قانون کے وفاقی وزیر بھی رہ چکے ہیں۔

اس سے قبل افتخار گیلانی کو ذوالفقار علی بھٹو کے انتہائی قریب دیکھا جاتا تھا، تاہم انہوں نے 11 سال قبل اپنی کئی سال کی سیاسی وفاداری تبدیل کرکے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی تھی۔