Aaj TV News

BR100 5,282 Increased By ▲ 24 (0.46%)
BR30 27,601 Increased By ▲ 46 (0.17%)
KSE100 48,305 Increased By ▲ 53 (0.11%)
KSE30 19,479 Decreased By ▼ -59 (-0.3%)
COVID-19 TOTAL DAILY
CASES 941,170 1,239
DEATHS 21,689 56
Sindh 327,604 Cases
Punjab 343,926 Cases
Balochistan 26,201 Cases
Islamabad 82,099 Cases
KP 135,877 Cases

نئے مالی سال 2021،22 کے وفاقی بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں10سے15فیصد اضافے کی تجویز دی گئی ہے ، کل حجم8400ارب روپے کے لگ بھگ ہوگا، جبکہ تنخواہ دارطبقے پر کوئی نیا ٹیکس نہ لگانے کی تجویز دی گئی ہے ۔ اکنامک زونزکوبھی 5سال کیلئےٹیکس چھوٹ پرغور کیا جارہا ہے ۔

نئےمالی سال 2021،22بجٹ کے اہم نکات سامنے آگئے ۔ ذرائع کے مطابق وفاقی بجٹ11جون کوپیش کیاجائے گا ۔ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں10سے15فیصداضافےکی تجویزہے ۔

تنخواہ دارطبقےپرکوئی نیاٹیکس نہ لگانےکی تجویز بھی دی گئی ہے ۔ بجٹ کاکل حجم8400ارب روپےکےلگ بھگ ہوگا ۔ سالانہ ترقیاتی پروگرام900ارب روپےرکھاجائےگا ۔ پنشن کی مدمیں470ارب روپے اور حکومتی جاری اخراجات500ارب روپےتک رکھےجانےکی تجویز ہے ۔

ذرائع نے بتایا کہ سبسڈیزکی مدمیں 400ارب روپےرکھےجاسکتےہیں ۔دفاعی بجٹ 1300ارب سے زائد رکھےجانےکاامکان ہے ۔ دس سے زائد طرح کےود ہولڈنگ ٹیکس مکمل ختم کرنے کی تجویزہے ۔

حکام کے مطابق حکومت مہنگائی کےتناسب سےتنخواہ دارطبقہ کوریلیف دینا چاہتی ہے ۔ ذرائع نے بتایا کہ اکنامک زونزکوبھی 5سال کیلئےٹیکس چھوٹ پرغورکیا جا رہا ہے ۔