Aaj News

ٹک ٹاک پر پیروں کی تصاویر سے لاکھوں روپے کمانے والی خواتین

ٹک ٹاک خواتین کے پیروں کی تصاویر سے بھرا ہوا ہے اور ان میں سے کئی ایسی تصاویر کے ذریعے اچھی رقم بھی کما رہی ہیں
اپ ڈیٹ 08 مئ 2022 10:06pm
فائل فوٹو: ان سپلیش
فائل فوٹو: ان سپلیش

نوجوانوں میں مشہور ہونے والی سوشل میڈیا ایپ ٹک ٹاک نے مزاح سے لے کر کھانوں کی ترکیبوں تک لوگوں کو مختلف مواد کے ساتھ محظوظ کیا ہے اور اب یہ لوگوں کا ذریعہ معاش بھی بنتا جارہا ہے۔

ایسے میں کئی خواتین صارف اپنے منفرد آئیڈیا سے خوب پیسے کمارہی ہیں۔

برطانوی اخبار مرر میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق 20 سالہ کیٹ نامی خاتون صارف ٹک ٹاک پر اپنے پیروں کی تصاویر شیئر کر کے روزانہ کے چھ سو پاؤنڈ کما رہی ہیں۔

کیٹ ماما نے بتایا کہ انہوں نے اپنے پیروں کی تصاویر پر 10 پاؤنڈ سے لے کر چھ سو پاؤنڈ سے زائد تک کی رقم کمائی ہے۔

تاہم ان تصاویر پر صرف پیسے ہی نہیں انہیں لوگوں کی طرف سے مقبولیت اور تلخ کمنٹس کا بھی سامنا کرنا پڑا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ چند صارف ایسے بھی ہوتے تھے جو ان کے پاوں کو بدصورت بھی کہہ دیتے تھے۔

تاہم ٹک ٹاک صارفین اور دیگر افراد کو اس بات پر حیرت ہے کہ انٹرنیٹ یا گوگل پر پیروں کی مفت تصاویر ہونے کے باوجود لوگ انہیں دیکھنے کے لیے پیسے دینے کو کیوں تیار ہیں۔

پیروں کی تصاویر زیادہ تر وہ لوگ خریدتے ہیں جن کا تعلق پیروں کی پراڈکٹس کے کاروبار سے ہوتا ہے۔

ان میں خوبصورتی یا ہیلتھ کیئر پراڈکٹس سے لے کر جیولری، جرابیں اور جوتے شامل ہیں۔

ان پراڈکٹس میں وہ چیزیں بھی شامل ہیں جن کا تعلق چہل قدمی، کوہ پیمای یا تیراکی سے ہوتا ہے۔

پیروں کی تصاویر وہ افراد بھی خرید سکتے ہیں جنہیں اپنی ویب سائٹس، ماڈلنگ ایجنسی یا بلاگ کے لیے ضرورت ہو۔

تاہم ان تصاویر کو فروخت کرنے کے لیے سوشل میڈیا مناسب پلیٹ فارم ہے جس میں ٹک ٹاک اور انسٹاگرام ایپ سر فہرست ہیں۔

علاوہ ازیں ایک اور خاتون صارف ڈیون میک کلاوڈ کا کہنا تھا کہ انہوں نے پیروں کے تصاویر فروخت کرنے کا کاروبار شروع کرنے کے بعد اپنی معمول کی نو سے پانچ بجے تک کی نوکری کو خیرباد کہہ دیا ہے۔

ڈیون میک کلاؤڈ ڈانسر سے پیروں کی ماڈل بن گئی ہیں اور ان کے پیروں کی ویڈیو کلپس پر انہیں جلد ہی 13 لاکھ ویوز مل جاتے ہیں۔

socialmedia

TikTok

Comments are closed on this story.